تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور:1932 ء میں سعودی عرب کے قیام کے بعد سے آل سعود نے بادشاہت کے متضاد سیاسی ،سماجی اورمذہبی ڈھانچے کے چلینجز سے نمٹنے کیلئے وہابیت کا استعمال کیا ہے اوروہابیت کے نظرئے نے مذہبی طورپر آل سعود خاندان کی طاقت تاج اورحکومت کو جائز ٹھہرایا ہے۔

نیوز نور : بولویا کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ کو وینزوئلا میں مداخلت کا خیال ترک کرنا چاہئے کیونکہ دنیا بھر میں امریکی سامراجیت دم توڑ چکی ہے۔

نیوز نور:ایران کے ایک سینئر قانون ساز نے کہاہےکہ امریکہ کی طرف سے روس اورایران پر  بیک وقت پابندیوں کو عائد کئے جانے کا مقصد دوعلاقائی اتحادیوں کے درمیان تعلقات میں شگاف پیدا کرنا تھا۔

نیوز نور:لبنان کی اسلامی تحریک مقاومت حزب اللہ کی سیکورٹی کونسل کےچیئرمین نے کہاہے کہ شام میں سرگرم تکفیری دہشتگرد گروہ داعش کے خلاف جنگ آخری مرحلے میں داخل ہوچکی ہے۔

نیوز نور : لبنان کے پارلیمانی نمائندے نے کہا ہے کہ  شام فلسطین اور بیت المقدس کی حمایت کا علمبردار ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
امریکی ماہر:
مشرقی ایشیائی خطے میں تازہ ترین پیشرفت سے جزیرہ نما کوریا میں موجودہ بحران کا حل ممکن ہے

نیوز نور : واشنگٹن میں مقیم ایک سینئر سیاسی تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ جزیرہ نما کوریا میں موجودہ بحران کا حل ممکن ہے۔

استکباری دنیا صارفین۳۵۹ : // تفصیل

امریکی ماہر:

مشرقی ایشیائی خطے میں تازہ ترین پیشرفت سے جزیرہ نما کوریا میں موجودہ بحران کا حل ممکن ہے

نیوز نور : واشنگٹن میں مقیم ایک سینئر سیاسی تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ جزیرہ نما کوریا میں موجودہ بحران کا حل ممکن ہے۔

عالمی اردو خبر رساں ادارے ’’نیوز نور‘‘ کی رپورٹ کے مطابق  واشنگٹن میں مقیم سینئر سیاسی تجزیہ کار ’’مائیکل بلنگٹن‘‘ نے ایرانی ذرائع ابلاغ کے ساتھ انٹرویو میں مشرقی ایشیائی خطے میں تازہ ترین پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس پیشرفت سے جزیرہ نما کوریا میں پھیلی کشیدگی کا خاتمہ ممکن ہے۔

انہوں نے کہا کہ جنوبی کوریا میں مون جے ان کے انتخابات و ٹرمپ کے شمالی کوریا کے ساتھ اوباما کی محاذ آرائی کو ختم کرنے کے فیصلے اور بیجنگ  میں چین و روس کے کامیاب بیلٹ روڈ فورم کی تشکیل سے جزیرہ نما کوریا میں بحران کا حل ممکن ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین اور جنوبی کوریا کے درمیان تھاڈ میزائل نظام کی تعیناتی پر کشیدگی کے باوجود چینی زیر اہتمام بی آر آئی کیلئے وفد بھیجنے کا فیصلہ انتہائی اہم ہے کیونکہ اسے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات دوبارہ مثبت انداز میں آگے بڑھ رہے ہیں۔

انہوں نے اس سوال کہ جنوبی کوریا کے اہم اتحادی برطانیہ نے پیانگ یانگ پر دباؤ میں اضافہ کرنے کیلئے شمالی کوریا پر فوجی یلغار کی دھمکی دی ہے اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے جنوبی کوریا اور واشنگٹن کے درمیان مستقبل میں تعلقات کیسے رہینگے کے جواب میں کہا کہ ٹرمپ کو برطانیہ کی جعلی خبروں پر کان نہیں دھرنے چاہئے اور نہ ہی انہیں برطانیہ یا وال اسٹریٹ اشرافیہ کا شکار ہونا چاہئے۔

مائیکل بلنگٹن نے مزید کہا کہ شمالی کوریا کے ساتھ کشیدگی کم کرنے کیلئے ٹرمپ کو روس، چین ، جاپان اور جنوبی کوریا کےساتھ مل کر کام کر کے برطانوی اور اوباما کی دائمی جنگ کی پالیسی کو مسترد کرینگے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر