تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:13 دسمبر/ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے بین الاقوامی امور اور قوانین نے تہران میں مغربی ایشیا کی علاقائی سیکورٹی پر منعقدہ قومی سمینار کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ملکی دفاعی اور میزائل پروگرام پر مذاکرات کی ہرگز گنجائش نہیں ہے ۔

 نیوزنور:13 دسمبر/ اقوام متحدہ کے ایک رکن کا کہنا ہے کہ اس وقت یمن میں 8 ملین انسان سنگین قحط کا شکار ہیں

نیوزنور:13 دسمبر/عراقی حزب اللہ نے اعلان کیا ہے کہ فلسطینی علاقوں کوصیہونی قبضے سے آزاد کرانے کیلئے وہ غاصب  اسرائیل کےساتھ جنگ کو مکمل طورپر آمادہ ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ مصر ی دارالفتویٰ نے اپنے ایک بیان میں خبردار کیا ہے  کہ قدس کے نام پر داعش جوانوں کو بھرتی کے لیے گمراہ کرسکتی ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ فلسطین میں انسانی حقوق کے لئے سرگرم ذرائع کا کہنا ہے کہ پچھلے پانچ دنوں کے دوران حراست میں لئے جانے والے بیت المقدس کے باسیوں میں سے ایک تہائی حصہ کم عمر بچوں کا ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
ایرانی کالم نگار:
ٹرمپ کا فیصلہ بیت المقدس کی قانونی اور تاریخی حیثیت کو تبدیل کرنے کی ایک گھناؤنی سازش ہے

نیوزنور:07 دسمبر/ایک ایرانی کالم نگار کے مطابق ٹرمپ کی طرف سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے کا اعلان  مقبوضہ علاقوں میں مزید تشدد اور خونریزی کو دعوت دینا  ہے۔

استکباری دنیا صارفین۴۰۲ : // تفصیل

ایرانی کالم نگار:

ٹرمپ کا فیصلہ بیت المقدس کی قانونی اور تاریخی حیثیت کو تبدیل کرنے کی ایک گھناؤنی سازش ہے

نیوزنور:07 دسمبر/ایک ایرانی کالم نگار کے مطابق ٹرمپ کی طرف سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے کا اعلان  مقبوضہ علاقوں میں مزید تشدد اور خونریزی کو دعوت دینا  ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی کالم نگار ’’ایم ساقی ‘‘نے اپنے ایک مضمون میں لکھاہے : ٹرمپ کی طرف سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے کا اعلان  مقبوضہ علاقوں میں مزید تشدد اور خونریزی کو دعوت دینا ہے۔

اسطرح کا فیصلہ  مقبوضہ فلسطینی علاقوں اورممکنہ طورپر پورے علاقے میں مزید تشدد اورخونریزی کو دعوت دینا ہے ٹرمپ کا یہ فیصلہ  پوپ فرانسس ،واشنگٹن کی اتحادیوں ،اقوام متحدہ اورپوری بین الاقوامی برادری  جو  اس تاریخی شہر پر اسرائیل کی ملکیت کو تسلیم نہیں کرتی کے باوجود لیاگیا ۔

اسطرح کے فیصلے سے ممکنہ طورپر مقبوضہ علاقوں میں سات دہائیوں سے جاری تنازعات مزید پیچیدہ بنیں گے۔

اس اعلان کے ذریعے امریکہ نے کھلے عام مشرقی یروشلم کہ جس پر غاصب اسرائیل نے 1967ء کی عرب اسرائیل جنگ میں قبضہ کیاتھا کی حمایت کی ہے اوریہ اقدام اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل  کی قرارداد کہ جس میں غاصب اسرائیل کو تمام مقبوضہ علاقوں سے  اپنی فوجیں واپس بلانے کا مطالبہ کیاگیا ہے کی کھلی خلاف ورزی ہے۔

فلسطینی عوام وحکومت مشرقی القدس کو اپنے مستقبل ریاست کا دارالخلافہ تصور کرتے ہیں جبکہ غاصب اسرئیل  یروشلم کو ایک متحدہ شہر قراردیتا ہے۔

ان تلخ حقائق کی روشنی میں ایک غیر جانبدار و صاف باطن رکھنے والے افراد ہی فلسطینی تنازعے کے دوریاستی حل کی اُمید کرسکتے ہیں جہاں اسرائیلی اورفلسطینی  ایک دوسرے کے ساتھ  امن سے رہ سکیں۔

یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے سے قبل  صیہونی حکومت نے  شہر کے مشرقی حصے سے فلسطینیوں کو بے رحمی سے بے گھر کرنا شروع کردیاتھا جس کا واحد مقصد اس تاریخی اسلامی وعربی شہر کو یہودی رنگ میں رنگنا تھا ۔

ٹرمپ اوراسکے اتحادی تکفیری دہشتگرد گروہ داعش کہ جس نے شام وعراق میں دنیا بھر کے انتہاپسندوں کو اپنی طرف متوجہ کرکے خود ساختہ خلافت تشکیل دی کی طرح پالیسی اپنارہے ہیں۔

داعش ،ٹرمپ اورنیتن یاہو کا اتحاد انتہاپسندی کے دوسِرے ہیں  جس کے اختتامی نتائج تشدد اورانتہاپسندی ہے ۔

امریکہ کو اپنے غیر دانشمندانہ اورجارحانہ فیصلوں کی ماضی میں بھاری قیمت چکانی پڑی ہے امریکہ غاصب صیہونی رژیم جو سات دہائیوں سے فلسطینی عوام کو کچلتی آرہی ہے نوجوانوں خاص کر عرب دنیا میں انتہاپسندی کو  ہوا دی ہے۔

واشنگٹن حکومت تاریخ سے سبق نہ لیکر ایک بار پھر تشدد  اورافراتفری کو دعوت دے رہی ہے۔



آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر