تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 23 اپریل/ بحرین کے ایک ممتاز شیعہ عالم دین نے اس بات کےساتھ کہ آل خلیفہ  رژیم کےسامنے فلسطینی کاز کی کوئی اہمیت نہیں ہے کہا ہے کہ بحرینی عوام  اپنے تمام جائز مطالبات پورے ہونے تک اپنی تحریک جاری رکھیں گے۔

نیوزنور23اپریل/روسی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا ہے کہ مغربی ممالک شام کے شہر دوما میں کیمیائی حملے سے متعلق حقائق میں تحریف کر رہے ہیں۔

نیوزنور23اپریل/ٹوئٹر پرسعودی عرب کے  سرگرم  اور شاہی خاندان کے قریبی کارکن نےسعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں شاہی محل میں کل رات ہونے والی فائرنگ کی اصل حقیقت سامنے لاتے ہوئے کہا ہے کہ فائرنگ کے واقعہ میں آل سعود کے بعض اعلٰی شہزادے ملوث ہیں ڈرون کو گرانے کا واقعہ سعودی حکومت کا ڈرامہ ہے فائرنگ کے واقعہ کے بعد سعودی بادشاہ اور ولیعہد شاہی محل سے فرار ہوگئے تھے۔

نیوزنور23اپریل/اسلامی مقاومتی محورحزب اللہ لبنان کے سربراہ نے کہا ہےکہ اسرائيل کو لبنانیوں کے خلاف جارحیت سے روکنا ہمارا سب سے بڑا ہدف ہے ۔

نیوزنور23اپریل/مجلس وحدت مسلمین پاکستان سندھ کے سیکرٹری جنرل نے کہا  ہے کہ امام حسینؑ نے ۱۴ سو سال قبل ان دہشتگردوں کو شکست دی جو دین اسلام کا لبادہ اوڑھ کر دین کو اپنی پسند نا پسند میں ڈھال رہے تھے۔

  فهرست  
   
     
 
    
تہران میں او آئی سی کا اعلامیہ جاری:
دنیا بھرمیں رواداری، اخوات و بھائی چارہ کی حقیقی اسلامی تعلیمات کو عام کرنے کی ضرورت،اتحال میں تمام مسائل کا حل مضمر

نیوز نور:6دسمبر2014:اسلام مخالف پروپگنڈہ اور دنیا بھر میں اسلام فوبیا پھیلانے کی کوششوں کا پرزور مقابلہ کرنے اور رواداری،اخوات و بھائ چارہ کے حقیقی اسلامی تعلیمات کو عام کرنےپر زور دیتے ہوئے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی)کے وزرائے اطلاعات و نشریات کا دسواں اجلاس گزشتہ روز اختتام پزیر ہوگیا. اس دوران اجلاس کے اختتام پر جاری اعلامیہ میں اسلامی ممالک کے وزرائے اطلاعات و نشریات اور اعلیٰ عہدیداروں نے اسلام مخالف مغربی پروپگنڈوں اور دنیا بھر میں اسلام فوبیا پھیلانے کی کوششوں کا پرزور مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ اسلامی ممالک کی ذمہ داری ہے کہ وہ مشترکہ طور پر دین اسلام کی حقیقی تعلیمات کی،جو اخوات اوربھائ چارے کا درس دیتی ہے،دنیاکے گوشے گوشے تک پہنچائیں.

اسلامی بیداری صارفین۴۰۸۰ : // تفصیل

تہران میں او آئی سی کا اعلامیہ جاری:
دنیا بھرمیں رواداری، اخوات و بھائی چارہ کی حقیقی اسلامی تعلیمات کو عام کرنے کی ضرورت،اتحال میں تمام مسائل کا حل مضمر

نیوز نور:6دسمبر2014:اسلام مخالف پروپگنڈہ اور دنیا بھر میں اسلام فوبیا پھیلانے کی کوششوں کا پرزور مقابلہ کرنے اور رواداری،اخوات و بھائ چارہ کے حقیقی اسلامی تعلیمات کو عام کرنےپر زور دیتے ہوئے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی)کے وزرائے اطلاعات و نشریات کا دسواں اجلاس گزشتہ روز اختتام پزیر ہوگیا. اس دوران اجلاس کے اختتام پر جاری اعلامیہ میں اسلامی ممالک کے وزرائے اطلاعات و نشریات اور اعلیٰ عہدیداروں نے اسلام مخالف مغربی پروپگنڈوں اور دنیا بھر میں اسلام فوبیا پھیلانے کی کوششوں کا پرزور مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ اسلامی ممالک کی ذمہ داری ہے کہ وہ مشترکہ طور پر دین اسلام کی حقیقی تعلیمات کی،جو اخوات اوربھائ چارے کا درس دیتی ہے،دنیاکے گوشے گوشے تک پہنچائیں.

عالمی اردو خبر رساں ادارہ"نیوز نور"نے  ہندوستانی خبر رساں ادارہ"یو این آئی" کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے وزرائے اطلاعات و نشریات کے 10ویں کے اختتام پر جاری اعلامیہ میں اسلامی ممالک کے وزرائے اطلاعات و نشریات اور اعلیٰ عہدیداروں نے اسلام مخالف مغربی پروپگنڈوں اور دنیا بھر میں اسلام فوبیا پھیلانے کی کوششوں کا پرزور مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ اسلامی ممالک کی ذمہ داری ہے کہ وہ مشترکہ طور پر دین اسلام کی حقیقی تعلیمات کی،جو اخوات اوربھائ چارے کا درس دیتی ہے،دنیاکے گوشے گوشے تک پہنچائیں.

کانفرنس نے ایک متفقہ قرارداد میں فلسطینی عوام پر صیہونی حکومت کے مظالم اور انسانیت سوز  جرائم کو بے نقاب کرنے میں اسلامی مملک کے میڈیا کے کردار کی قدردانی کی گئ ہے.جبکہ اسلامی مملک کے میڈیا سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ بیت المقدس کی شناخت میں تبدیلی اور نسلی امتیاز پر مبنی صیہونی پالسیوں کو بے نقاب کریں.

مشترکہ بیان میں اسلامی ممالک میں انتہا پسندی،دہشتگردی،تشدد، اور فرقہ واریت پھیلانے کی کوشش کا مقابلہ کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا گیا.اسلامی ممالک کے اطلاعات و نشریات کےوزیروں نے کہا کہ تنظیم تعاون اسلامی کے رکن ممالک کو چاہئے کہ وہ میڈیا کو ملک میں صلح آمیز زندگی اور امن سلامتی قائم کرنے کیلئے ایک اہم آلہ کے طور پر استعمال کریں.قرارداد میں داعش کے دہشتگروں کے حرکتوں کی بھی مزمت کی گئی اور مسلمانوں اور غیر مسلموں کے درمیان نفرت اور تفرقہ پھیلانےکی کوششوں کو روکنے میں میڈیا کی سرگرمیوں کی مدد کرنے کا عزم ظاہر کیا گیا.

افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے آو آئی سی کے سیکرٹری جنرل امین مدنی نے کانفرنس کو انتہائی کامیاب قرار دیتے ہوئے کہا کہ 57 رکنی تنظیم کے تمام شرکاءاس بات سےمتفق ہے کہ مسلم ممالک کو درپیش چلینجز کا مقابلہ کرنے میں میڈیا کا اہم رول ہے.مسٹر مدنی نے کہا کہ تمام وزراء اسلامی میڈیا میں سرمایہ کاری کیلئے رضامند ہوگئے ہیں.

سیکرٹری جنرل ایاد مدنی نے اپنے خطاب میں کہا کہ اسلامی ملکوں کے میڈیا کو چاہئے کہ وہ انتہا پسندی کا مقابلہ کریں .انہوں نے کہاکہ آج اُمت مسلمہ کو سخت چلینجوں اور مشکلات کا سامنا ہے جس کی وجہ سے امن و استحکام اور اسلامی شناخت کو بھی خطرے سے دوچار کر دیا ہے.
انہوں نے کہا کہ انتہا پانسنداسلام کا مسخ شدہ چہرہ پیش کرتی ہے اور اسلام فوبیا کو ہوا دے رہے ہیں .لہزا عالم اسلام کے ذرائع ابلاغ کو چاہئے کہ وہ انتہا پسندی کے بارے میں تنگ نظرانہ تبصروں اور تجزوں سے گریز کریں .

ادهر اسلامی جمہوریہ ایران کے نائب صدر اسحاق جہانگیر نے کانفرنس کا افتتاح کرتے ہوئے دہشتگری اور انتہا پسندی کو عالم اسلام کے سامنے سب سے بڑا چلینج قرار دیا.

انہوں نے زور دیکر کہا کہ مسلمانوں کی ذمہ داری ہے کہ تشدد اور انتہا پسندی سے پاک ایک دنیا بنانے کیلئے ہر قسم کے مسلکی لسانی اور نسلیم و قومی اختلافات سے اوپر اُٹھ کر کوشش کریں اور انتہا پسندی و تشدد سے پاک دنیا بنانے کی ضرورت ہے تاکہ عالم اسلام کو ہر قسم کی انتہا پسندی اور تشدد سے پاک کیا جائے .

مسٹر اسحاق جہانگیر نے کہا کہ آج مغربی ملکوں کے ذرائع ابلاغ اسلام فوبیا کے پروجیکٹ پر سب سے زیادہ کام کر رہے ہیں اور اسلام کو بدنام کرنے کیلئے مغربی ذرائع ابلاغ نے اپنی ساریبکوششیں اور توانائیاں صرف کر دی ہے.

انہوں نے کہا کہ شیعہ و سنی مسلمانوں اور دیگر مذاہب کے پیروکارؤں کیخلاف دہشتگرد گروہ داعش کے ہولناک جرائم نے پوری انسانیت کے غمزدہ کر دیا ہے.

انہوں نے کہا کہ اسلام کے نام دہشتگری عناصر جو وحشیانہ جرائم انجام دیتے ہیں ان کو مغربی ذرائع ابلاغ خوب اچھالتے ہیں اور اس کی آڑ میں اسلام فوبیا کو ہوا دیکر اسلام کی اصل شبیہ مسخ کر رہے ہیں .

اس دوران سعودی عرب کے وزیر حج اور کارگزار وزیر اطلاعات بند حجاج نے اپنی تقریر میں ملکوں کے مابین پرامن بقائے باہم کو فروغ دینے نیز عالمی سلامتی اور استحکام کو فروغ دینے پر زور دیا.

انہوں نے کہا کہ میڈیا کو نفرت اور نسل پرستی کو بھڑکانےطنیز دوسرے ملکوں اور عوام کیخلاف حملوں کیلئے استعمال کرنے کی قطعی اجازت نہیں دی جانی چاہئے .

دریں اثنا آو آئی سی میں انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کی ڈایکٹر ماہا عقیل نے کہا کہ مذکورہ کانفرنس میں جن باتوں سے اتفاق کیا گیا ہے اور جو معاہدے طے پاگئے وہ محض کاغذات تک محدود نہیں رہیں گے انہیں جلد جلد عملی شکل دینے اور نافذ کرنے کی کوشش کریں گے.

انہوں نے کہا کہ کانفرنس اس لحاظ سے کافی کامیاب رہی کہ اس میں انتہا پسندی کا مقابلہ کرنے کیلئے میڈیا کے زیادہ موثر استعمال کے متعلق کئی اہم قراردادیں منظور کی گئیں.

انہوں نے کہا کہ میڈیا کو مسلم ملکوں میں اسلام اور مسلمانوں کی حفاظت میں اہم رول ادا کرنے کی ذمہ داری لینی ہوگی اور اسلام کی حقیقی تعلیمات کو پیش کرنا ہوگا.

کانفرنس میں آو آئی سی ممبر ملکوں کے درمیان میڈیا کے شعبے میں صلاحیت سازی،مشترکہ پروگراموں اور ماہرین کے تبادلوں کے سلسلے میں ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنے کی اپیل کی گئی .

او آئی سی جنرل  سیکرٹری کے ہمراہ مسترکہہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر ثقافت علی خنتی نے بھی مشرقی وسطیٰ اور افریقہ میں تشدد اور انتہا پسندی کی بڑھتی لہر پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس اُمید ظاہر کی کہ اس اجلاس سے اسلامی ملکوں کے درمیان اتحاد و یگانگت کو مستحکم بنانے میں مدد ملے گی اور انتہا پسندی اور تشدد کا مقابلہ کرنے میں اسلامی ممالک ایک.پلیٹ فارم جمع ہو سکیں گے.

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر