تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور :معروف پاکستانی اہلسنت عالم دین اورچیئرمین تحریک لبیک یارسول اللہ (ص)نےلاہور میں سالانہ فکر امام حسینؑ کانفرنس سے خطاب کے دوران حضرت امام حسینؑ کی قربانی کو قیامت تک اہل اسلام کیلئے مشعل راہ قرار دہتے ہوئے کہا ہے کہ آپؑ کے سیرت و کردار سے اُمت مسلمہ کے قلوب قیامت تک منور ہوتے رہیں گے۔

نیوز نور : امریکہ میں قائم عالمی اسلامی مرکز کے سربراہ نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے پر ٹرمپ کے حالیہ بیانات پر تنقید کرتے ہوئے اس سمجھوتے کو عالمی امن کی مزید مضبوطی کا باعث قرار دیتے ہوئے کہا کہ میں ایک امریکی شہری کی حیثیت سے اپنے صدر سے بالکل مایوس ہوچکا ہوں

نیوز نور : اسلامی جمہوریہ ایران کے ایک ممتاز شیعہ عالم دین اور حوزہ علمیہ کےاستاد نے نمازکو بحرانوں کی مینجمنٹ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ عاشورا کا ایک اہم پیغام اورعاشورائی طرززندگی کی ایک اہم صفت نمازکو اول وقت پڑھنا ہے۔

نیوز نور : لبنان کے صدر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے لبنان کے اندرونی معاملات میں کوئی مداخلت نہیں اور اس مسئلے کا دعوی کرنے والے اپنے دعوے کے حوالے سے ثبوت بھی پیش نہیں کرسکتے۔

نیوز نور : پاکستان کے نامور اہلسنت عالم دین اور سنی تحریک کے سربراہ نے کہا ہے کہ امام عالمی مقام حضرت امام حسین علیہ السلام نے ظالم و جابر کے سامنے ڈٹ جانے اور مظلوموں کیلئے آواز بلند کرنے کا درس دیا۔

  فهرست  
   
     
 
    
نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے رکن:
نائجیریہ کے شیعوں کے قتل عام کے پیچھے سعودی عرب کا ہاتھ /شیخ زاکزاکی کی جسمانی حالت دن بدن خراب ہو رہی ہے

نیوزنور: نائجیریہ کی اسلامی تحریک کی سرگرمیوں کو روکنے میں سعودی عرب کا کردار بالکل نمایاں ہے اور وہ بھی اصل میں امریکہ اور اسرائیل کے ہاتھوں کی کٹھ پتلیاں ہیں۔اوربوکو حرام کے خلاف کوئی موقف اختیار نہ کرنے کی وجہ یہ ہے کہ حکومت بوکو حرام کو اسلامی تحریک کے خلاف استعمال کرنے کا ارادہ رکھتی ہے ۔

اسلامی بیداری صارفین۳۲۴۳ : // تفصیل

نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے رکن:

نائجیریہ کے شیعوں کے قتل عام کے پیچھے سعودی عرب کا ہاتھ /شیخ زاکزاکی کی جسمانی حالت دن بدن خراب ہو رہی ہے

نیوزنور: نائجیریہ کی اسلامی تحریک کی سرگرمیوں کو روکنے میں سعودی عرب کا کردار بالکل نمایاں ہے اور وہ بھی اصل میں امریکہ اور اسرائیل کے ہاتھوں کی کٹھ پتلیاں ہیں۔اوربوکو حرام کے خلاف کوئی موقف اختیار نہ کرنے کی وجہ یہ ہے کہ حکومت بوکو حرام کو اسلامی تحریک کے خلاف استعمال کرنے کا ارادہ رکھتی ہے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے رکن نے ایران کی ایک نیوز ایجینسی "ایلنا" کے ساتھ ایک گفتگو میں نائجیریہ میں رونما ہونے والی تبدیلیوں اور شیخ زاکزاکی اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما کی تازہ ترین حالت کے بارے میں کہ جن کو اس ملک کی حکومت نے غیر قانونی طور پر قید کر رکھا ہے اور ان کی جسمانی حالت دن بدن بگڑ رہی ہے  بتا یا :

ش۔ عبد اللہ ، نائیجیریہ کے سیاسی اور مذہبی سرگرم کار کن نے اس ملک کے شیعوں کے رہنما شیخ ابراہیم زاکزاکی کی تازہ ترین جسمانی حالت کے بارے میں بتایا کہ چند ہفتے پہلے شیخ زاکزاکی کے معالج نے ان کی جسمانی حالت خاص کر ان کی دوسری آنکھ کے بارے میں خبر دار کیا ۔ اس تاریخ سے لے کر آج تک نہ نائجیریہ کی حکومت کی سطح پر اور نہ بین الاقوامی سطح پر زاکزاکی کی جسمانی صورتحال کے بارے میں کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے ۔ شیخ زاکزاکی کی ایک آنکھ قید کی مدت کے دوران حکومت کی طرف سے طبی خدمات فراہم کرنے پر ممانعت کی وجہ سے نابینا ہو چکی ہے ۔

نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے اس رکن نے اس تحریک کے رہبر کی آزادی کے بارے میں بتایا کہ پہلے عدالت نے حکم دیا تھا کہ شیخ ابراہیم زاکزاکی کو ۴۵ دن کے اندر آزاد کر دیا جائے ، لیکن وہ مدت گذر گئی ہے اور ۴۰ دن مزید بیت چکے ہیں ، جب کہ عدالت نے اعلان کیا تھا کہ اس مدت کے اندر اگر ان کو رہا نہیں کیا گیا تو حکومت کے خلاف کاروائی کی جائے گی ، لیکن نائجیریہ کے اندر  اور بین الاقوامی سطح پرمظاہروں کے  باوجود ، جب کہ ذرائع ابلاغ اور حکومتیں بالکل خاموش ہیں ، اس سلسلے میں کوئی موئثر قدم نہیں اٹھایا گیا ہے ۔ نائجیریہ کے اس سیاسی سرگرم کارکن نے نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے ساتھ حکومت کی بد سلوکی کے بارے میں اعلان کیا کہ اس سے پہلے حکومت کی طرف سے سخت دباو تھا اور اس نے قتل عام بھی کیا اور حکومت کے جرائم کا یہ سلسلہ زاریا میں اپنی انتہا کو پہنچ گیا ۔ لیکن اب حکومت کی یہ کوشش ہے کہ وہ اس تحریک کی تمام سرگرمیوں کو روک دے اور ان پر مکمل پابندی عاید کر دے ۔ ا س سلسلے میں حکومت کسی بھی ثقافتی اور مذہبی سرگرمی کی اجازت نہیں دے رہی ہے اور اس نے بڑے پیمانے پر اس تنظیم کی شخصیتوں کے پیچھے جاسوس لگا رکھے ہیں ۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھی کہ حکومت کوشش کر رہی ہے کہ سیاست کے ساتھ اور ایک منصوبے کے تحت اس تحریک کو نرمی کے ساتھ کچل ڈالے ۔

ایک اور کام جو حکومت کر رہی ہے وہ اس تحریک کے سربراہوں کے درمیان نفوذ اور ان میں تفرقہ پیدا کرنا ہے اور یہ تمام امور اس تحریک کے خلاف ایک بڑی سازش کی غمازی کر رہے ہیں ۔ یہاں تک کہ ایک طرف اس دلیل کے تحت کہ اس ملک کے اکثر فوجیوں کو نائجیریہ کے جنوب سے انتخاب کیا جاتا ہے اور وہ عیسائی ہیں وہ ہر اسلامی تحریک کو ہر ممکن طریقے سے کچلنے کی کوشش کرتے ہیں اور کبھی کچلنے کی ان وارداتوں میں صدر کے حامیوں کو بھی شامل کیا جاتا ہے ۔ مثال کے طور پر اس ملک کے جنوب میں صدر کے ۱۰۰ حامیوں کا قتل اسی قبیل سے ہے ۔

عبد اللہ نے اپنی بات جاری رکھی کہ انتہا پسند مسلمانوں کو تبلیغی سرگرمیوں کی اجازت ہے تا کہ مسلمانوں کو ایک دوسرے کے مقابلے پر کھڑا کر کے اسلامی تحریک کو کچلا جا سکے ، اور اس طرح حکومت نائجیریہ کے سنیوں کو شیعوں کا مقابلہ کرنے کے لیے استعمال کر رہی ہے ۔

نائجیریہ کی اسلامی تحریک کے اس رکن نے سعودی عرب نائجیریہ کی جو حمایت کرتا ہے اس کے بارے میں یاد دلایا کہ شیعوں کے قتل عام میں اور  نائجیریہ کی اسلامی تحریک کی سرگرمیوں کو روکنے میں سعودی عرب کا کردار بالکل نمایاں ہے اور وہ بھی اصل میں امریکہ اور اسرائیل کے ہاتھوں کی کٹھ پتلیاں ہیں ۔ سعودی عرب نے زاریا کے قتل عام سے پہلے بڑے پیمانے پر شیعوں کے خلاف پروپیگنڈا کیا تھا اور شیعوں کی آبادی میں اضافے کے بارے میں متنبہ کیا تھا ۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ وہ اس چیز کو لے کر پریشان ہیں ۔

نئے صدر کے انتخاب کے بعد کہ  جو مسلمان ہے حکومت کے اندر سعودی عرب کے نفوذ میں اضافہ ہوا ہے اور انہوں نے کچھ ظاہری ، اور تشریفاتی امتیازات کے ذریعے اسے اپنے ساتھ ملانے کی کوشش کی ہے ۔ اس صدر کے بھی وہابی سلفی گروہوں کے ساتھ قریبی روابط ہیں اور اس کے کچھ مشاور اور معاون وہ لوگ ہیں کہ جو مکمل طور پر سعودی عرب کے حمایت یافتہ ہیں اور ان میں سے بعض لوگ سعودی عرب کے لمبے لمبے دورے کرتے ہیں اور اس ملک کے سربراہوں اور مفتیوں کے ساتھ ملاقات کرتے ہیں۔

عبد اللہ نے نائجیریہ میں دہشت گردانہ کاروائیوں کے سلسلے  میں اپنی بات جاری رکھتے ہوئے بتایا  نائجیریہ میں دہشت گردوں کے دو گروہ فعال ہیں ، بوکو حرام ، اور دیا فرا ، یہ گروہ یعنی دیافرا زیادہ تر اس ملک کے جنوب میں فعال ہے اور ان کی کوشش یہ ہے کہ شمال والے جنوب والوں کے مقابلے میں ترقی نہ کر سکیں ۔ بوکو حرام نائجیریہ کے شمال اور مشرق میں سرگرم عمل ہے ۔ یہ گروہ اپنے خیال میں ایک اسلامی حکومت کے قیام کےدر پے ہے ، اور وہ موجودہ تعلیمات کو اسلامی تعلیمات کے خلاف سمجھتا ہے ۔ بوکو حرام اسی طرح ایک مقصد کے پیچھے ہے اور وہ نائجیریہ کی اسلامی تحریک کو تباہ کرنا ہے ۔ اس دہشت گرد گروہ کی کوشش ہے کہ اس تحریک کو بد نام کر کے اور شیعوں اور سنیوں کے اختلافات سے فائدہ اٹھاتے ہوئے لوگوں کو اسلامی تحریک کے سلسلے میں بد گمانی میں مبتلا کرے ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ حالانکہ یہ سازش بھی اسلامی تحریک کے ارکان کی اچھی کارکردگی اور واقعی اسلام کی راہ میں حرکت ، نہ کہ سعودی اسلام کی راہ میں حرکت کی وجہ سے شکست کھا چکی ہے اور باعث بنی ہے کہ نائجیریہ کے لوگ اور اس ملک کے اہل سنت اس  اسلامی تحریک کے خلاف  اس پروپیگنڈے کو قبول نہ کریں ۔

اس سیاسی سرگرم رکن نے تصریح کی کہ چند روز پہلے نائجیریہ کی حکومت نے ایک بیان صادر کر کے ان دو گروہوں کے علاوہ نائجیریہ کی اسلامی تحریک کو بھی دہشت گرد بتایا ، جب کہ اس گروہ نے ملک کی سالمیت کے خلاف کوئی قدم نہیں اٹھایا ہے بلکہ وہ ہمیشہ ملک اور اس کے عوام کی امنیت کا مدافع رہا ہے ۔

انہوں نے آخر میں چیبوک کی بیٹیوں کے انجام کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ بوکوحرام نے ان بیٹیوں کو بعض علاقوں پر حملہ کر کے جنگی قیدیوں یا کنیزوں کے عنوان سے اغوا کر رکھا ہے ۔چیبوک کی بیٹیوں کا مسئلہ عجیب طریقے سے طاق نسیاں کے سپرد ہو رہا ہے اور حکومت اس وقت بوکو حرام کے خلاف کوئی سخت قدم نہیں اٹھا رہی ہے ۔

شاید سعودی عرب جو حکومت اور بوکو حرام دونوں کی حمایت کر رہا ہے وہ باعث بنی ہے کہ حکومت بوکو حرام کو نظر انداز کر رہی ہے ۔

حکومت ان ۲۰۰ لڑکیوں کے انجام کے بارے میں کچھ نہیں کہہ رہی ہے اور یہ ایسی حالت میں ہے کہ بوکو حرام کے اعلان کے مطابق اس گروہ کے بعض افراد نے ان میں سے بعض لڑکیوں کے ساتھ شادی کر لی ہے ۔

بوکوحرام نے جو کچھ ویڈیو منتشر کیے ہیں ان میں ان لڑکیوں کو اپنے گھر والوں اور حکومت سے ان کی رہائی کے لیے بات چیت کرنے  کی اپیل کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھی کہ بوکو حرام کے خلاف کوئی موقف اختیار نہ کرنے کی وجہ کچھ اور ہے اور وہ اس بات پر مبنی رپورٹیں ہیں کہ حکومت بوکو حرام کو اسلامی تحریک کے خلاف استعمال کرنے کا ارادہ رکھتی ہے ۔

یہ استعمال دو طریقے سے ممکن ہے ، یا یہ پروپیگنڈا کر کے کہ بوکو حرام اور اسلامی تحریک دو ہمفکر اور ایک دوسرے کا ساتھ دینے والے دو گروہ ہیں وہ اسلامی تحریک کا قلع قمع کرنے کا اقدام کرے گی یا یہ کہ دہشت گردانہ کاروائیوں میں وہ بوکو حرام کو اسلامی تحریک کے خلاف استعمال کرنے کو اپنے دستور کار کا حصہ بنائے گی ۔         


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر