تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور22جنوری/ ایک صہیونی تجزیہ نگار نےاسرائیلی انٹیلی جنس ادارہ موساد کو تین ہزار بے گناہ فلسطینیوں کا قاتل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ  ان افراد کو موساد کا نشانہ نہیں بننا چاہیے تھا کیونکہ ان میں سے اکثر بے گناہ تھے۔


نیوزنور22جنوری/ گذشتہ روز اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے قبلہ اول میں گھس کر وہاں پر موجود فلسطینی محکمہ اوقاف کے مقرر کردہ ایک محافظ کو حراست میں لے لیاجس کےنتیجے میں قبلہ اول میں سخت کشیدگی اور فلسطینیوں میں غم وغصہ پایا جا رہا ہے۔

نیوز نور22جنوری/بحرین کے ممتاز شیعہ عالم دین آیت اللہ شیخ عیسیٰ قاسم  کے نمائندے نے آل خلیفہ رژیم  کے وفد کے اسرائیل کے سرکاری دورے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس دورے کا مقصد فلسطینیوں کی قاتل  حکومت کےساتھ تعلقات کو معمول پرلانا ہے ۔

نیوزنور22جنوری/اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقوں میں آباد کیے گئے یہودیوں کی تعداد 2017ء کے آخر میں 4 لاکھ 36 ہزار ہوگئی ہے۔

نیوزنور22جنوری/شام کے صدر نے کہا  ہےکہ ترکی اپنے مخالفین کو کچلنے اور شامی حکومت کے مخالفین کی مدد اور حمایت کرنے میں مصروف ہے۔
  فهرست  
   
     
 
    
سعودی عرب کے بادشاہ کے بیٹے نے پچھلے مہینے وعدہ کیا تھا کہ وہ جنگ کو ایران کے اندر منتقل کرے گا /
سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے تہران پر دہشت گردانہ حملوں سے ایک دن پہلے کیا کہا تھا ؟

نیوزنور:سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے تہران پر دہشت گردانہ حملوں سے ایک دن پہلے ، دھمکی دی تھی کہ ایران کو اس چیز کی بنا پر کہ جسے وہ علاقے کے امور میں ایران کی مداخلت کہتا ہے سزا ملنی چاہیے ۔

استکباری دنیا صارفین۱۱۷۱ : // تفصیل

سعودی عرب کے بادشاہ کے بیٹے نے پچھلے مہینے وعدہ کیا تھا کہ وہ جنگ کو ایران کے اندر منتقل کرے گا /

سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے تہران پر دہشت گردانہ حملوں سے ایک دن پہلے کیا کہا تھا ؟

نیوزنور:سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے تہران پر دہشت گردانہ حملوں سے ایک دن پہلے ، دھمکی دی تھی کہ ایران کو اس چیز کی بنا پر کہ جسے وہ علاقے کے امور میں ایران کی مداخلت کہتا ہے سزا ملنی چاہیے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے 7جون منگلوار کے دن تہران پر دہشت گردانہ حملے سے ایک دن پہلے پیرس میں نامہ نگاروں کے مجمعے میں ایران کو دھمکی دی تھی ۔

العربیہ چینل کے اعلان کے مطابق اس نے داعش اور دوسرے دہشت گرد گروہوں  کی حمایت جو ریاض کرتا ہے اس کے ثبوتوں کو نظر انداز کرتے ہوئے (جیسا کہ امریکہ کے وزیر خارجہ کے سال ۲۰۰۹ کے اس اعتراف کو بھولنے کی ایکٹینگ کرتے ہوئے کہ سعودی عرب دہشت گردوں کا حامی ہے ) یہ دعوی کیا کہ ایران دنیا میں دہشت گردوں کا پہلے نمبر کا حامی ہے اور اپنے ہمسایہ ملک کے امور میں بھی مداخلت کرتا ہے اور علاقے میں شدت پسند گروہوں کی حمایت کرتا ہے ۔ اسی طرح یہ ملک القاعدہ کے سربراہوں اور دوسرے دہشت گرد گروہوں کے سرغنوں کا میزبان ہے اور ایران نے جو پالیسی اپنا رکھی ہے وہ بھی ہماری نظر میں بالکل قابل قبول نہیں ہے ۔

حالانکہ سب سے زیادہ دہشت گرد جو شام اور عراق میں ہیں وہ سعودی عرب کے باشندے ہیں ، الجبیر نے مزید کہا : ۳۷ سال کے دوران اس نے ۱۲ سفارتخانوں پر حملہ کیا ہے اور بمب اور دھماکہ خیز مواد بنانے میں اس کا دنیا میں پہلا نمبر ہے کہ جس کی وجہ سے آج تک ہزاروں افراد قتل ہو چکے ہیں ۔ ایران نے ۹۰ فیصد دھماکہ خیز مواد بنایا ہے اور اسے دہشت گردوں میں تقسیم کیا ہے ۔

اس نے ایران پر الزامات کی بوچھاڑ کرتے ہوئے کہا : تہران علاقے کے حوادث اور ان کے نتائج کا ذمہ دار ہے ۔ ایران وہ ملک ہے جو سیاستمداروں کو قتل کرنے کے منصوبے بناتا ہے اور بین الاقوامی حقوق کو نظر انداز کرتا ہے اور ان کے مفادات کو پایمال کرتا ہے ۔ ایران کو بین الاقوامی حقوق کا احترام کرنا چاہیے تا کہ وہ ایک معمول کی حکومت کہلائے ۔ اس ملک کو علاقے کے امور میں مداخلت اور دہشت گرد گروہوں اور شدت پسندوں کی حمایت کرنے کے جرم میں سزا ملنی چاہیے ۔

بن سلمان کی دھمکی ،

محمد بن سلمان سعودی عرب کے ولی عہد کے جانشین نے بھی گذشتہ ۱۲ اردیبہشت کو ایک پریس کانفرنس میں دعوی کیا تھا کہ اس کا ملک ایران کے نشانے پر ہے ، اور تہران مکہ تک پہنچنے کا ارادہ رکھتا ہے ۔ لہذا سعودی عرب انتظار نہیں کرے گا کہ جنگ اس کے ملک کے اندر ہو بلکہ اس کو ایران میں منتقل کرے گا ۔

بن سلمان نے کہا : ہم جانتے ہیں کہ ہم ایران کی حکومت کا اصلی نشانہ ہیں ۔ مسلمانوں کے قبلے تک پہنچنا اس حکومت کا اصلی مقصد ہے ہم منتظر نہیں رہیں گے کہ جنگ سعودی عرب میں ہو بلکہ کوشش کریں گے کہ جنگ خود ان کے پاس ایران میں ہو سعودی عرب میں نہیں ۔

آج صبح چار دہشت گرد مراجعہ کرنے والوں کے بھیس میں پارلیمنٹ کے اندر جانے والی راہرو میں داخل ہوئے اور پارلیمنٹ کی حفاظتی پولیس کی طرف انہوں نے گولیاں چلائیں اور ان میں سے ایک کو شہید اور آٹھ کو زخمی کر دیا جن میں حفاظت اور مراجعہ کرنے والے دونوں شامل تھے ۔

کچھ اور دہشت گرد حرم امام خمینی رہ میں داخل ہوئے اور انہوں نے گولیاں چلا کر چند افراد کو زخمی کر دیا دو دہشت گردوں نے حرم کے احاطے میں خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر