تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور22جنوری/ ایک صہیونی تجزیہ نگار نےاسرائیلی انٹیلی جنس ادارہ موساد کو تین ہزار بے گناہ فلسطینیوں کا قاتل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ  ان افراد کو موساد کا نشانہ نہیں بننا چاہیے تھا کیونکہ ان میں سے اکثر بے گناہ تھے۔


نیوزنور22جنوری/ گذشتہ روز اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے قبلہ اول میں گھس کر وہاں پر موجود فلسطینی محکمہ اوقاف کے مقرر کردہ ایک محافظ کو حراست میں لے لیاجس کےنتیجے میں قبلہ اول میں سخت کشیدگی اور فلسطینیوں میں غم وغصہ پایا جا رہا ہے۔

نیوز نور22جنوری/بحرین کے ممتاز شیعہ عالم دین آیت اللہ شیخ عیسیٰ قاسم  کے نمائندے نے آل خلیفہ رژیم  کے وفد کے اسرائیل کے سرکاری دورے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس دورے کا مقصد فلسطینیوں کی قاتل  حکومت کےساتھ تعلقات کو معمول پرلانا ہے ۔

نیوزنور22جنوری/اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقوں میں آباد کیے گئے یہودیوں کی تعداد 2017ء کے آخر میں 4 لاکھ 36 ہزار ہوگئی ہے۔

نیوزنور22جنوری/شام کے صدر نے کہا  ہےکہ ترکی اپنے مخالفین کو کچلنے اور شامی حکومت کے مخالفین کی مدد اور حمایت کرنے میں مصروف ہے۔
  فهرست  
   
     
 
    
سینئر ترک تجزیہ کار:
قطری بحران کا مقصد شام میں کرد ریاست کے قیام کے منصوبے سے عرب عوام کی توجہ ہٹانا ہے

نیوز نور:ترکی کے ایک سینئر سیاسی تجزیہ کار کہنا ہےکہ بعض خلیجی ممالک اورقطر کے درمیان بڑھتی کشیدگی  کو  ختم کرنے میں ترکی اورروس اہم کردار ادا کرسکتے ہیں کہاہےکہ قطری بحران کا مقصد  عرب جمہوریہ شام میں ایک خودمختار کرد ریاست کے قیام کے منصوبے سے عرب دنیا کی توجہ  ہٹانا ہے۔

استکباری دنیا صارفین۶۵۵ : // تفصیل

سینئر ترک تجزیہ کار:

قطری بحران کا مقصد  شام میں کرد ریاست کے قیام کے منصوبے سے عرب عوام کی توجہ ہٹانا ہے

نیوز نور:ترکی کے ایک سینئر سیاسی تجزیہ کار کہنا ہےکہ بعض خلیجی ممالک اورقطر کے درمیان بڑھتی کشیدگی  کو  ختم کرنے میں ترکی اورروس اہم کردار ادا کرسکتے ہیں کہاہےکہ قطری بحران کا مقصد  عرب جمہوریہ شام میں ایک خودمختار کرد ریاست کے قیام کے منصوبے سے عرب دنیا کی توجہ  ہٹانا ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق سینئر ترک تجزیہ کار وسابق قانون ساز’’ڈاکٹر اویا اقگونک‘‘نےکہاکہ بعض خلیجی ممالک اورقطر کے درمیان بڑھتی کشیدگی  کو  ختم کرنے میں ترکی اورروس اہم کردار ادا کرسکتے ہیں کہاکہ قطری بحران کا مقصد  عرب جمہوریہ شام میں ایک خودمختار کرد ریاست کے قیام کے منصوبے سے عرب دنیا کی توجہ  ہٹانا ہے۔

انہوں نے کہاکہ ترکی اورروس جیسی اہم طاقتیں  مشرق وسطیٰ علاقے کو  قطر اورسعودی عرب کے درمیان کشیدہ تعلقات سےپیدا ہونے والی خوفناک صورتحال سے نجات دلاسکتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ مشرق وسطیٰ کی موجوہ صورتحال انتہائی خطرناک ہے جسے مزید خراب ہونے سے روکنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ  بد قسمتی سےبعض طاقتیں مشرق وسطیٰ علاقے میں افراتفری اورتشدد سے  استفادہ کرنے کی کوشش کررہی ہے۔

انہوں نے شام کی موجودہ صورتحال کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ  رقہ شہرکی طرف کردوں کی پیشکش خطے میں ایک آزاد کرد ریاست کے قیام کے امریکی منصوبوں کے مطابق ہے۔

 انہوں نے کہاکہ  امریکہ نے مشرق وسطیٰ علاقے کے حوالے سے  بعض منصوبے تیار کئے ہیں جنہیں وہ علاقے میں اسلامی جمہوریہ ایران کے اثرورسوخ کو ختم کرکے ہی عملی جامہ پہنا سکتا ہے اس لئے روس اورترکی ایسی واحد طاقتیں ہیں  جو قطری بحران  کو حل کرنے میں کردار اداکرسکتے ہیں۔

واضح رہےکہ قطر اورخلیجی فارس کے چند رکن ممالک کے درمیان کشیدگی امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے دورۂ ریاض کے بعد  شروع ہوئی ٹرمپ نے اپنے اس دورے سعودی عرب کی علاقائی پالیسیوں سے مکمل طورپر ہم آہنگی کا اظہار کیا اورایک طرح سے انہوں نے قطر کی علاقائی پالیسیوں کے آگے سوالیہ نشان لگایا جس کے خلاف قطری حکام نے اپنا ردعمل ظاہر کیا جو قطر  اورخلیج فارس کے دوسری  بعض ممالک کے درمیان کشیدگی پیدا ہونے پر منتج ہوا ۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر