تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور22جنوری/ ایک صہیونی تجزیہ نگار نےاسرائیلی انٹیلی جنس ادارہ موساد کو تین ہزار بے گناہ فلسطینیوں کا قاتل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ  ان افراد کو موساد کا نشانہ نہیں بننا چاہیے تھا کیونکہ ان میں سے اکثر بے گناہ تھے۔


نیوزنور22جنوری/ گذشتہ روز اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے قبلہ اول میں گھس کر وہاں پر موجود فلسطینی محکمہ اوقاف کے مقرر کردہ ایک محافظ کو حراست میں لے لیاجس کےنتیجے میں قبلہ اول میں سخت کشیدگی اور فلسطینیوں میں غم وغصہ پایا جا رہا ہے۔

نیوز نور22جنوری/بحرین کے ممتاز شیعہ عالم دین آیت اللہ شیخ عیسیٰ قاسم  کے نمائندے نے آل خلیفہ رژیم  کے وفد کے اسرائیل کے سرکاری دورے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس دورے کا مقصد فلسطینیوں کی قاتل  حکومت کےساتھ تعلقات کو معمول پرلانا ہے ۔

نیوزنور22جنوری/اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقوں میں آباد کیے گئے یہودیوں کی تعداد 2017ء کے آخر میں 4 لاکھ 36 ہزار ہوگئی ہے۔

نیوزنور22جنوری/شام کے صدر نے کہا  ہےکہ ترکی اپنے مخالفین کو کچلنے اور شامی حکومت کے مخالفین کی مدد اور حمایت کرنے میں مصروف ہے۔
  فهرست  
   
     
 
    
لاطینی امریکی امور کےروسی ماہر:
واشنگٹن لاطینی امریکی حکومتوں کو کمزور کرنے میں مصروف ہے

نیوز نور:لاطینی امریکی امور کے ایک روسی ماہر نے کہاہےکہ پنامہ اوردیگر لاطینی امریکی ریاستیں بیجنگ کےساتھ تعلقات مستحکم کرنے کے خواہاں ہیں کیونکہ چین خطے میں بنیادی ڈھانچے پر بھاری سرمایہ کاری کررہاہے جبکہ دوسری اور امریکہ علاقائی حکومتوں کو کمزو رکرنے میں مصروف ہیں۔

استکباری دنیا صارفین۳۵۸ : // تفصیل

لاطینی امریکی امور کےروسی  ماہر:

واشنگٹن لاطینی امریکی حکومتوں کو کمزور کرنے میں مصروف ہے

نیوز نور:لاطینی امریکی امور کے ایک روسی ماہر نے کہاہےکہ پنامہ اوردیگر لاطینی امریکی ریاستیں بیجنگ کےساتھ تعلقات مستحکم کرنے کے خواہاں ہیں کیونکہ چین خطے میں بنیادی ڈھانچے پر بھاری سرمایہ کاری کررہاہے جبکہ دوسری اور امریکہ علاقائی حکومتوں کو کمزو رکرنے میں مصروف ہیں۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق مقاومی میڈیا کےساتھ انٹرویو میں ’’الگزنڈر خارلامینکو‘‘نےکہاکہ پنامہ اوردیگر لاطینی امریکی ریاستیں بیجنگ کےساتھ تعلقات مستحکم کرنے کے خواہاں ہیں کیونکہ چین خطے میں بنیادی ڈھانچے پر بھاری سرمایہ کاری کررہاہے جبکہ دوسری اور امریکہ علاقائی حکومتوں کو کمزو رکرنے میں مصروف ہیں۔

پنامہ حکومت نے کل اپنے ایک جاری کردہ بیان میں کہاکہ اس نے تائیوان کےساتھ  اپنے تمام سفارتی تعلقات توڑنے کا فیصلہ کیا ہے بیان میں کہاگیا کہ پنامہ نے تائیوان کےساتھ تعلقات توڑ دئے ہیں اورچین کےساتھ باقاعدہ سفارتی تعلقات قائم کردئے ہیں۔

پنامہ کے اس فیصلے پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے تائیوان حکومت نے کہاکہ  پنامہ کے چین کےساتھ رسمی تعلقات قائم کیا جانا افسوسناک ہے اورپنامہ کا چین کےساتھ باقاعدہ تعلقات قائم کرنے کا یہ کھیل کبھی پورا نہیں ہوگا۔

روسی تجزیہ نگار نے اس پیشرفت کے حوالے سے کہاکہ  پنامہ کا اسطرح کا فیصلہ ایک تاریخی فیصلہ ہے  کیونکہ تائیوان امریکہ کا ایک دیرنہ اتحادی تصور کیاجاتا ہے اوراس طرح کے اقدام سے پنامہ حکومت چین کےساتھ تعلقات قائم کرکے ملک میں واشنگٹن کے اثرورسوخ میں توازن پیدا کرنے کی کوشش کررہی ہے۔

انہوں نے کہاکہ پنامہ اورامریکہ کے درمیان تعلقات ماضی کے مقابلے  میں موجودہ دور میں کشیدہ بنے ہوئے ہیں امریکہ کا  پنامہ میں بدامنی پھیلانے کا اہم کردار رہاہے ۔

انہوں نے کہاکہ لاطینی امریکہ کے اسٹریٹجک خطے میں اپنا اثرورسوخ بڑھانے میں چین اورامریکہ ایک دوسرے کے مدمقابل ہیں  کیونکہ پنامہ کنال کی سیکورٹی کا امریکہ کے ہاتھوں میں رہنا چین کیلئے ایک مسئلہ رہاہے۔

انہوں نے کہاکہ ان ہی وجوہات کی بنا پر  چین نے پنامہ کےساتھ اسے پہلے سفارتی تعلقات قائم نہیں کئے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر