تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور22فروری/اسلامی تحریک مقاومت حماس کے ترجمان نےکہا ہے کہ سلامتی کونسل کے اجلاس میں نیکی ہیلی کے خطاب سے فلسطینی قوم کے تئیں ان کی دشمنی جھلک رہی تھی۔

نیوزنور22فروری/ایک صیہونی عہدے دار نے کہا ہے کہ امریکہ میں ڈونالڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد فلسطین میں اسرائیلی ریاست کے مظالم اور توسیع پسندانہ اقدامات کے ساتھ ساتھ بیرون ملک سے یہودیوں کی آمد میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔

نیوزنور22فروری/اقوام متحدہ میں تعینات روسی مندوب اقوام متحدہ میں ایران مخالف امریکی قرارداد کی کڑی الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے جھوٹ کا پلندہ قراردیا ہے ۔

نیوزنور22فروری/تحریک اُمت لبنان کے سیکرٹری جنرل نے کہا ہے کہ عراق کے تمام طبقات کے درمیان وحدت نے اس ملک کی تقسیم کی سازش کو ناکام بنا دیا ہے اور اس وقت جو کچھ بھی عالم اسلام اور عرب دنیا میں ہورہا ہے اسکا اصلی ہدف فلسطین کے مسئلے کو فراموش کروایا جانا ہے۔

نیوزنور22فروری/جماعت اسلامی پاکستان کے مزکزی امیر نے کہا ہے کہ معاشرے میں دین کی دوری کی وجہ سے ماں باپ، اساتذہ اور بڑوں کی عزت نہیں کی جاتی ہے معاشرے میں عدم برداشت کے رویہ کے خاتمے کیلئے علماء کرام، محراب و منبر سے اسلام کی صحیح تعلیمات کو عام کریں کیونکہ اسلام انسانیت کا درس دیتا ہے اور انسانی حرمت کے تقاضے بھی بڑے واضع ہیں اور دین کو صحیح معنوں میں اپنی زندگیوں کا نصب العین بنائے بغیر معاشرتی برائیوں کو کنٹرول نہیں کیا جا سکتا۔

  فهرست  
   
     
 
    
مشرق وسطیٰ امور کے لبنانی ماہر :
الطنف میں حالیہ امریکی اقدامات کا مقصد علاقے میں ایرانی اثر و رسوخ کو ختم کرنا ہے

نیوز نور : مشرق وسطیٰ امور کے ایک لبنانی ماہر و سینئر صحافی نے امریکہ کی طرف سے طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائلوں کی بھاری کھیپ جنوبی شام میں اردن اور عراقی سرحد پر واقع الطنف شہر منتقل کئے جانے کے اقدام کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کا ایران اور شام کے ساتھ تصادم کے امکانات تشویشناک حد تک بڑھ گئے ہیں۔ 

استکباری دنیا صارفین۷۶۷ : // تفصیل

مشرق وسطیٰ امور کے لبنانی ماہر :  

الطنف میں حالیہ امریکی اقدامات کا مقصد علاقے میں ایرانی اثر و رسوخ کو ختم کرنا ہے

نیوز نور : مشرق وسطیٰ امور کے ایک لبنانی ماہر و سینئر صحافی نے امریکہ کی طرف سے طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائلوں کی بھاری کھیپ جنوبی شام میں اردن اور عراقی سرحد پر واقع الطنف شہر منتقل کئے جانے کے اقدام کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کا ایران اور شام کے ساتھ تصادم کے امکانات تشویشناک حد تک بڑھ گئے ہیں۔  

عالمی اردو خبر رساں ادارے ’’نیوز نور‘‘ کی رپورٹ کے مطابق روسیا الیوم کے ساتھ انٹرویو میں ’’علی رزق‘‘صحافی نے امریکہ کی طرف سے طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائلوں کی بھاری کھیپ جنوبی شام میں اردن اور عراقی سرحد پر واقع الطنف شہر منتقل کئے جانے کے اقدام کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کا ایران اور شام کے ساتھ تصادم کے امکانات تشویشناک حد تک بڑھ گئے ہیں۔  

انہوں نے کہا کہ امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک کے حالیہ اقدامات کا مقصد خطے میں اسلامی جمہوریہ ایران کے اثر و رسوخ کو ختم کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ابھی امریکہ کی پہلی ترجیح شیعہ کریسنٹ میں ایران سے لبنان تک زمینی راستے کی تخلیق کو روکنا ہے۔

موصوف تجزیہ کار نے وضاحت کی کہ آج ہم خطے میں امریکہ کی جس پالیسی کا مشاہدہ کررہے ہیں اسے اسی تناظر میں دیکھا جانا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کی قیادت میں بعض ممالک کے ایک گروپ نے علاقے میں اپنے اثر و رسوخ کا دائرہ گذشتہ چند سالوں کے دوران وسیع کیا ہے۔

لبنانی تجزیہ کا رنے کہا کہ اسٹریٹیجک الطنف شہر میں امریکی میزائل بیٹریوں کی تعیناتی قابل فہم ہے کیونکہ دمشق، بغداد شاہراہ مذکورہ راستے سے گزرتی ہے جو بعد میں ایران کو اپنے ساتھ جوڑتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر شامی فوج اس علاقے کو اپنے کنٹرول میں لینے میں کامیاب ہوتی ہے تو اس صورت میں دمشق کے پاس شامی فوج کے زیر کنٹرول علاقوں اور ایران میں اس کے اتحادیوں کے درمیان ایک براہ راست کاریڈور ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ایسا ہونے کی صورت میں اسلامی جمہوریہ ایران دمشق کو براہ راست ہتھیار اور امداد پہنچا سکتا ہے اس لئے امریکہ اور ا سکے اتحادیوں کی حالیہ حرکات کا مقصد اس منظر نامے کو ہر حال میں روکنا ہے۔  


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر