تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:ایرانی صدر کے معاون نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی عالمی سطح پر غیر مہذبانہ رفتار امریکہ کے لئے شرم آور ہے جو دنیا میں سپر پاور ہونے کا مدعی ہے سعودی عرب ام الفساد اور دہشت گردی کے فروغ کا اصلی مرکز ہے جسے امریکی سرپرستی حاصل ہے۔

نیوزنور:روس کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکی سربراہی والا اتحاد دہشت گرد گروہ جبھۃ النصرہ کو بچانے کی کوشش کر رہا ہے۔

نیوزنور:بحرین کی تنظیم برائے انسانی حقوق کے صدر نے کہا ہے کہ آل خلیفہ کے ظلم وستم اور اوچھے ہتھکنڈوں کے باوجود بحرین میں انسانی حقوق کا کام بند نہیں کریں گے۔

نیوزنور:ایک امریکی روزنامے نے لکھا ہے کہ وائٹ ہاوس ایران پر حملہ کرنے کا بہانہ تلاش رہا ہے حالانکہ ٹرمپ کو ایرانی تاریخ سے عبرت حاصل کرنا چاہئے۔

نیوزنور:فلپائن کے صدرنے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے امریکا کے دورے کی دعوت مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ کبھی بھی امریکا نہیں جائیں گے۔

  فهرست  
   
     
 
    
بین الاقوامی امور کی ہندوستانی ماہر:
صیہونی حکومت تمام علاقائی تنازعات کی اصلی جڑ ہے

نیوز نور : ہندوستان کی ایک بین الاقوامی ماہر نے کہا ہےکہ مشرق وسطیٰ علاقے کی تشویشناک صورتحال ، قطر کو آل سعود کی طرف سے تنہا کرنے کی کوششوں اور جون 7 تہران بم دھماکوں میں غاصب صیہونی رژیم ملوث ہے۔

استکباری دنیا صارفین۳۷۳ : // تفصیل

بین الاقوامی امور کی ہندوستانی ماہر:

صیہونی حکومت تمام علاقائی تنازعات کی اصلی جڑ ہے

نیوز نور : ہندوستان کی ایک بین الاقوامی ماہر نے کہا ہےکہ مشرق وسطیٰ علاقے کی تشویشناک صورتحال ، قطر کو آل سعود کی طرف سے تنہا کرنے کی کوششوں اور جون 7 تہران بم دھماکوں میں غاصب صیہونی رژیم ملوث ہے۔

عالمی اردو خبر رساں ادارے ’’نیوزنور‘‘ کی رپورٹ کے مطابق  ایرانی ذرائع ابلاغ کے ساتھ انٹرویو میں ’’چنکیا سکسینا‘‘ نے کہا کہ مشرق وسطیٰ علاقے کی تشویشناک صورتحال ، قطر کو آل سعود کی طرف سے تنہا کرنے کی کوششوں اور جون 7 تہران بم دھماکوں میں غاصب صیہونی رژیم ملوث ہے۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کی قیادت میں بعض خلیجی ریاستوں کی طر ف سے قطر کو تنہا کرنے کی کوششیں ٹرمپ کے خلیجی دورے کا شاخسانہ ہے۔

انہوں نے تہران بم دھماکوں کا ذمہ دار صیہونی رژیم کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ اب جبکہ داعش کو عراق میں شکست کا سامنا ہے  اوریہ گروہ دنیا میں ہونے والے اکثر دہشتگردانہ حملوں کی ذمہ داری قبول کررہا ہے۔  

خلیج فارس میں ممکنہ فوجی تصادم کو انتہائی خطرناک و تباہ کن قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے علاوہ رجب طیب اردوغان کی حکومت نے قطر کی حمایت اور اس ملک میں فوجی بھیس قائم کرنے کا کھل کر اعلان کیا ہے۔

موصوفہ ماہر نے کہا کہ جغرافیائی پوزیشن کے لحاظ سے قطر کا محاصرہ اگر چہ ایک آسان فعل ہے تاہم دوحہ کے مخالفین کیلئے یہ ایک بڑی آفت ثابت ہوسکتی ہے کیونکہ اسلامی جمہوریہ ایران اور ترکی جو نیٹو کا اہم رکن ملک ہے قطر میں حمایت میں آگے آئے ہیں۔

تجزیہ کار نے کہا کہ سعودی عرب  کوملک کی خستہ حال معیشت اور سماجی تناؤ کے پیش نظر قطر کے ساتھ موجود سفارتی تنازعے کو فوجی تصادم میں تبدیل کرنے سے گریز کرنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ قطر پر آل سعود کی کسی بھی طرح کی فوجی جارحیت کے پیٹروڈالرز علاقائی رجعتی حکومتوں کے استحکام اور پورے مشرق وسطیٰ علاقے کی سیکورٹی درہم برہم ہوسکتی ہے۔  


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر