تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور22جنوری/ ایک صہیونی تجزیہ نگار نےاسرائیلی انٹیلی جنس ادارہ موساد کو تین ہزار بے گناہ فلسطینیوں کا قاتل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ  ان افراد کو موساد کا نشانہ نہیں بننا چاہیے تھا کیونکہ ان میں سے اکثر بے گناہ تھے۔


نیوزنور22جنوری/ گذشتہ روز اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے قبلہ اول میں گھس کر وہاں پر موجود فلسطینی محکمہ اوقاف کے مقرر کردہ ایک محافظ کو حراست میں لے لیاجس کےنتیجے میں قبلہ اول میں سخت کشیدگی اور فلسطینیوں میں غم وغصہ پایا جا رہا ہے۔

نیوز نور22جنوری/بحرین کے ممتاز شیعہ عالم دین آیت اللہ شیخ عیسیٰ قاسم  کے نمائندے نے آل خلیفہ رژیم  کے وفد کے اسرائیل کے سرکاری دورے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس دورے کا مقصد فلسطینیوں کی قاتل  حکومت کےساتھ تعلقات کو معمول پرلانا ہے ۔

نیوزنور22جنوری/اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقوں میں آباد کیے گئے یہودیوں کی تعداد 2017ء کے آخر میں 4 لاکھ 36 ہزار ہوگئی ہے۔

نیوزنور22جنوری/شام کے صدر نے کہا  ہےکہ ترکی اپنے مخالفین کو کچلنے اور شامی حکومت کے مخالفین کی مدد اور حمایت کرنے میں مصروف ہے۔
  فهرست  
   
     
 
    
بین الاقوامی امور کے ایرانی ماہر:
علاقائی ممالک کے ساتھ تعاون کو فروغ دیکر ایران امریکی جارحانہ کاروائیوں کا مقابلہ کرسکتا ہے

نیوز نور:بین الاقوامی امور کے ایک ایرانی ماہر نےکہاہےکہ  علاقے میں دوست ممالک کےساتھ تعاون کو فروغ  دیکر اورتعلقات کو مستحکم کرکے ایران امریکہ کی جارحانہ کاروائیوں اوردشمنیوں کو روک سکتا ہے۔

اسلامی مسلکی رواداری صارفین۸۹۶ : // تفصیل

بین الاقوامی امور کے ایرانی ماہر:

علاقائی ممالک کے ساتھ تعاون کو فروغ دیکر ایران امریکی جارحانہ کاروائیوں کا مقابلہ کرسکتا ہے

نیوز نور:بین الاقوامی امور کے ایک ایرانی ماہر نےکہاہےکہ  علاقے میں دوست ممالک کےساتھ تعاون کو فروغ  دیکر اورتعلقات کو مستحکم کرکے ایران امریکہ کی جارحانہ کاروائیوں اوردشمنیوں کو روک سکتا ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی ذرائع ابلاغ کےساتھ انٹرویو میں’’علی خرم‘‘نے کہاکہ علاقے میں دوست ممالک کےساتھ تعاون کو فروغ  دیکر اورتعلقات کو مستحکم کرکے ایران امریکہ کی جارحانہ کاروائیوں اوردشمنیوں کو روک سکتا ہے۔

انہوں نے  8 جون کو امریکی سینٹ میں ایران کے خلاف نئی پابندیوں کے عبوری بل کی منظوری کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ پابندیاں جامع مشترکہ ایکشن پلان کی خلاف ورزی نہیں  ہے سابق صدر بارک اوبامہ کےدور صدرات میں امریکی سینٹ نے اسی طرح کی بل کی منظوری دی تھی تاہم اوبامہ نے اس کا ویٹو کردیاتھا۔

 انہوں نے کہاکہ صیہونی نواز امریکی ٹرمپ ایران کے خلاف حالیہ نئے سینٹ بل  کا ویٹو کریں گے ایسا نا ممکن ہے۔

انہوں نے کہاکہ  ایران پر جوہری پابندیوں کے خاتمے کے باوجود  امریکہ نے دہشتگردی کی حمایت کرنے اورانسانی حقوق کی پامالیوں کے جھوٹے اور بے بنیاد الزامات اورمیزائل پروگرام کے بہانے ایران پرنئی پابندیاں عائد کی ہے۔

انہوں نے کہاکہ نئی پابندیوں کے ذریعے جامع مشترکہ ایکشن پلان  کی خلاف ورزی  ایک سیاسی مسئلہ ہے  جس کی کوئی قانونی بنیاد نہیں ہے۔

انہوں نے کہاکہ اسلامی جمہوریہ ایران کو چھہ عالمی طاقتوں کے ساتھ  رابطہ کرکے انہیں نئی پابندیوں کے معاملے پر  امریکی صدر کے خلاف احتجاج پر قائل کرنا چاہئے۔

 انہوں نے کہاکہ اسلامی جمہوریہ ایران نے جامع مشترکہ ایکشن پلان کی مکمل پاسداری کی ہے اور اسے  یورپی ممالک کےساتھ اپنے دوستانہ تعلقات کے ذریعے امریکہ کو اپنا رویہ تبدیل کرنے پر مجبور کرنا چاہئے۔

انہوں نے امریکہ اورایران کی طرف سے قطر کی حمایت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ اگر علاقائی ممالک اسلامی جمہوریہ ایران کےساتھ تعاون کرتی ہیں پھر اسلامی جمہوریہ ایران امریکی دشمنیوں کو قابو کرسکتا ہے۔

 واضح رہےکہ امریکی سینٹ نے 8 جون کو ایران کے خلاف نئی پابندیوں   کے عبوری بل کو منظور ی دے دی جس کی حتمی توثیق کی صورت میں ایران کے خلاف مزید پابندیاں عائد کی جائیں گی جبکہ  ایران نے اس فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے اسے واشنگٹن حکومت کی تنگ نظری اورغلط پالیسیوں کا ثبوت قراردیا ہے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر