تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور21فروری/شامی ذرایع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہاہے کہ شامی فوج کے خلاف مغربی حمایت یافتہ دہشتگرد عناصر نے نئی سازش کا آغاز کیا ہے جس کے تحت کلورین گیس سے بھرے تین ٹرکوں کو ترکی سے شامی علاقے ادلیب میں پہنچا دیا گیا ہے۔

نیوزنور21 فروری/اسرائیلی پارلیمنٹ کینیسٹ کے ایک رکن نے  کہا ہے کہ  اسرائیلی دائیں بازو کےساتھ سعودیہ کا اتحاد شرمناک ہے اورصیہونی وزیر اعظم  کو حزب اللہ اورمقاومت سے خوف ہے۔

نیوزنور21فروری/فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ آج فلسطین میں قبضے اور اس کے عوام پر جو حالات گزر رہے ہیں اس کا ذمے دار برطانیہ ہے۔

نیوزنور21فروری/اقوام متحدہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مندوب نے جوہری معاہدے کو کامیاب مذاکرات کرنے کے لئے مثالی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ دوسروں پر پابندیاں لگانے کے نشے میں دھت ہے۔

نیوزنور21فروری/اقوام متحدہ کے کوآرڈینیٹر برائے امور مشرق وسطٰی نےناجائز صہیونی ریاست کے غاصب حکمرانوں پر زور دیا ہے کہ وہ فلسطین میں معصوم عوام کے گھروں اور اسکولوں کو تباہ کرنے کا سلسلہ بند کریں۔

  فهرست  
   
     
 
    
ترک صحافی:
اسد مخالف فورسز پر لگام لگا کر انقرہ کو آفرین آپریشن کیلئے دمشق حکومت کی حمایت حاصل ہوگی

نیوز نور: ترکی کے ایک سینئر صحافی کے مطابق انقرہ حکومت شمال مشرقی شام میں کردش وائی پی جی ملیشیا کے خلاف ایک وسیع آپریشن شروع کرنے کا من بناچکی ہے اوراسے ممکنہ طورپر دمشق کی حمایت بھی حاصل ہوگی لیکن بدلے میں اسے ادلب یا شام میں کہیں اورحکومت مخالف تکفیری گروہوں کو ترک کرنا پڑےگا۔

استکباری دنیا صارفین۱۶۳ : // تفصیل

ترک صحافی:

اسد مخالف فورسز پر لگام لگا کر انقرہ کو آفرین آپریشن کیلئے دمشق حکومت کی حمایت حاصل ہوگی

نیوز نور: ترکی کے ایک سینئر صحافی کے مطابق انقرہ حکومت شمال مشرقی شام میں کردش وائی پی جی ملیشیا کے خلاف ایک وسیع آپریشن شروع کرنے کا من بناچکی ہے اوراسے ممکنہ طورپر دمشق کی حمایت بھی حاصل ہوگی لیکن بدلے میں اسے ادلب یا شام میں کہیں اورحکومت مخالف تکفیری گروہوں کو ترک کرنا پڑےگا۔

عالمی اردوخبررساں ادارے ’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق مقامی میڈیا کےساتھ انٹرویو میں ترک صحافی ’’بوراک بیراختار‘‘نےکہاکہ انقرہ حکومت شمال مشرقی شام میں کردش وائی پی جی ملیشیا کے خلاف ایک وسیع آپریشن شروع کرنے کا من بناچکی ہے اوراسے ممکنہ طورپر دمشق کی حمایت بھی حاصل ہوگی لیکن بدلے میں اسے ادلب یا شام میں کہیں اورحکومت مخالف تکفیری گروہوں کو ترک کرنا پڑےگا۔

انہوں نےکہاکہ ترکی شام کے شمال مشرق میں اسٹریٹجک آفرین علاقے جو وائی پی جی ملیشیا کے زیر کنٹرول ہے میں ایک وسیع فوجی آپریشن شروع کرنے جارہی ہے۔

انہوں نے کہاکہ ترکی کے کائلیس اورشام کے آزاد صوبے میں مسلسل وسیع پیمانے پر فوجی نقل وحرکت دیکھی جارہی ہے ۔

انہوں نے کہاکہ انقرہ حکومت کو دمشق حکومت کی طرف سے گرین سگنل مل سکتی ہے اگر وہ  شام میں سرگرم حکومت مخالف فورسز پر دباؤ ڈالنے میں کامیاب ہوتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ اس طرح سے شامی فوج کو ادلب جیسے علاقے سےاپنی فورسز دوبارہ منظم کرنے میں مدد ملےگی اوردیرا زور میں سرگرم داعش کے خلاف پیش قدمی کی جاسکتی ہے۔

انہوں  نے کہاکہ میرا عقیدہ ہےکہ روس کہ جس کے انقرہ اوردمشق کےساتھ قریبی تعلقات ہیں کی ثالثی سے ترک اورشامی قیادت کےدرمیان رابطہ قائم کیاجا رہاہے۔

 انہوں نے کہاکہ گذشتہ ماہ سے اس بات کا مشاہد ہ کرچکے ہیں کہ  شامی فوج  اوران کے اتحادی روسی فضائیہ کی مدد سے دیر ازور کی اورپیش قدمی کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ شامی فوج کو اپنی پوزیشن مزید مضبوط بنانے کیلئے دیرا زور میں سیف زونز کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ اگرچہ ادلب صوبے پر ترکی کا مسلسل تسلط نہیں ہے تاہم اس علاقے میں اس کی پوزیشن اتنی مضبوط ہے جو مذکورہ علاقے کی صورتحال پر اثرانداز ہوسکتی ہے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر