تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور21فروری/شامی ذرایع ابلاغ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہاہے کہ شامی فوج کے خلاف مغربی حمایت یافتہ دہشتگرد عناصر نے نئی سازش کا آغاز کیا ہے جس کے تحت کلورین گیس سے بھرے تین ٹرکوں کو ترکی سے شامی علاقے ادلیب میں پہنچا دیا گیا ہے۔

نیوزنور21 فروری/اسرائیلی پارلیمنٹ کینیسٹ کے ایک رکن نے  کہا ہے کہ  اسرائیلی دائیں بازو کےساتھ سعودیہ کا اتحاد شرمناک ہے اورصیہونی وزیر اعظم  کو حزب اللہ اورمقاومت سے خوف ہے۔

نیوزنور21فروری/فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ آج فلسطین میں قبضے اور اس کے عوام پر جو حالات گزر رہے ہیں اس کا ذمے دار برطانیہ ہے۔

نیوزنور21فروری/اقوام متحدہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مندوب نے جوہری معاہدے کو کامیاب مذاکرات کرنے کے لئے مثالی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ دوسروں پر پابندیاں لگانے کے نشے میں دھت ہے۔

نیوزنور21فروری/اقوام متحدہ کے کوآرڈینیٹر برائے امور مشرق وسطٰی نےناجائز صہیونی ریاست کے غاصب حکمرانوں پر زور دیا ہے کہ وہ فلسطین میں معصوم عوام کے گھروں اور اسکولوں کو تباہ کرنے کا سلسلہ بند کریں۔

  فهرست  
   
     
 
    
ٹائمز آف اسرائیل کی تحلیل:
حزب اللہ کے خوف سے اسرائیل عرسال معرکے میں کودنے سے باز رہا

نیوز نور:ٹائمز آف اسرائیل نے اپنے ایک تحلیل میں لکھاہےکہ نیتن یاہو رژیم نے عرسال  معرکے میں حزب اللہ کے خلاف تکفیری دہشتگرد گروہ جبہت النصرہ کی بھرپور حمایت کرنے کا منصوبہ  تیار کیاتاہم مقاومتی تحریک کے انتباہ کے بعدرژیم کو اپنا منصوبہ ترک کرنا پڑا ۔

استکباری دنیا صارفین۵۵۵ : // تفصیل

ٹائمز آف اسرائیل کی تحلیل:

حزب اللہ کے خوف سے اسرائیل عرسال معرکے میں کودنے سے باز رہا

نیوز نور:ٹائمز آف اسرائیل نے اپنے ایک تحلیل میں لکھاہےکہ نیتن یاہو رژیم نے عرسال  معرکے میں حزب اللہ کے خلاف تکفیری دہشتگرد گروہ جبہت النصرہ کی بھرپور حمایت کرنے کا منصوبہ  تیار کیاتاہم مقاومتی تحریک کے انتباہ کے بعدرژیم کو اپنا منصوبہ ترک کرنا پڑا ۔

عالمی اردوخبررساں ادارے ’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ٹائمز آف اسرائیل نے لکھا: نیتن یاہو رژیم نے عرسال  معرکے میں حزب اللہ کے خلاف تکفیری دہشتگرد گروہ جبہت النصرہ کی بھرپور حمایت کرنے کا منصوبہ کیاتاہم مقاومتی تحریک کے انتباہ کے بعدرژیم کو اپنا منصوبہ ترک کرنا پڑا ۔

تل ابیب کی طرف سے جبہت النصرہ کو حمایت کے منصوبے کا مقصد حزب اللہ کو زیادہ سے زیادہ چوٹ پہنچانا اورا س سے 2006ء کی 33 روزہ جنگ کی شکست کا انتقام لینا تھا تاہم حزب اللہ کی طرف سے سخت وارننگ کہ جسے بیروت میں تعینات  جرمن سفارتکار کے ذریعے پہنچایا گیا تل ابیب  کو لبنان آپریشن  ترک کرنا پڑا۔

بیروت میں حزب اللہ اورجرمن سفارتکار کے درمیان ہونے والی ملاقات میں تحریک مقاومت نے واضح الفاظ میں کہاکہ عرسال اورشام کی کلامون پہاڑیوں کی مکمل آزادی حزب اللہ کا اسٹریٹجی ایجنڈا ہے اوراس آپریشن میں اسرائیل کی کسی بھی طرح کی مداخلت کو دہشتگردوں کی براہ راست حمایت تصورکیاجائےگا۔

حزب اللہ نے اس ملاقات میں صیہونی حکومت کو جرمن سفیر کے ذریعے یہ پیغام دیا کہ عرسال آپریشن میں اسرائیل کی مداخلت حزب اللہ کے خلاف جنگ کا اعلان ہوگا۔

 حزب اللہ عہدیدار نے  اس ملاقات میں تاکید کی کہ ہم دہشتگرد گروہوں کے خلاف برسرپیکار ہیں اوراگر غاصب صیہونی رژیم کسی بھی جارحانہ رویہ کا ارتکاب کرتی ہے تو اسے پھر تحریک مقاومت کے حیرت انگیز ردعمل کا سامنا کرنا پڑےگا۔

حزب اللہ نے جرمن سفارتکار کےساتھ اس ملاقات میں کہاکہ 2006ء کی 33 روزہ جنگ کے نتائج سے غاصب صیہونی رژیم پوری طرح آگاہ ہے اورآج  اسرائیل کا ذرہ ذرہ مقاومت کے میزائلوں کی زد میں ہے۔

حزب اللہ کے انتباہ کے بعد اسرائیل کی سیکورٹی کابینہ نے اتفاق سے یہ فیصلہ کیاکہ عرسال میں حزب اللہ کے خلاف جبہت النصرہ کی حمایت کا پروگرام منسوخ کیاجانا چاہئے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر