تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور : 11 دسمبر/ مقبوضہ فلسطین میں مظاہرین نے مسئلہ فلسطین کے بارے ميں سعودی عرب کے بادشاہ اور ولیعہد کی غداری اور خیانت کی بھر پور مذمت کرتے ہوئے سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان اور ولیعہد محمد بن سلمان کی تصویروں کو آگ لگا کر پاؤں تلے رگڑ دیا ہے۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان بعض عرب ممالک  کی ہم آہنگی سے انجام پایا ہے جس کا مقصد عرب - اسرائیل کے تعلقات کو معمول پر لانا اور مسئلہ فلسطین کو سرد خانے میں ڈالنا ہے۔

نیوز نور 11 دسمبر/ فلسطینی وزیرخارجہ نےکہا ہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیلی ریاست کا دارالحکومت تسلیم کئے جانے کے بعد اسرائیل دوسرے ممالک  پر القدس کو صہیونی ریاست کا دارالحکومت تسلیم کرانے کے لیے دباؤ ڈال رہا ہے۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ سعودی عرب کے قریب سمجھے جانے والے پاکستانی اہلسنت عالم دین اور جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ  نے کہا ہے کہ اسلامی اتحادی افواج کا ڈھونگ رچانے والا شاہ سلمان اب بیت المقدس کو بچائیں۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ امریکی یونیورسٹیوں کے ایک سو بیس یہودی اساتذہ نے ایک شکایت نامے پر دستخط کرکے بیت المقدس کے بارے میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے فیصلے کی مذمت کی ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
امریکی کالم نگار:
امریکہ یمن کی تباہی میں برابر کا شریک ہے

نیوز نور:ایک امریکی کالم نگار نے لکھاہےکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کےامن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

استکباری دنیا صارفین۱۳۰ : // تفصیل

امریکی کالم نگار:

امریکہ یمن کی تباہی میں برابر کا شریک ہے

نیوز نور:ایک امریکی کالم نگار نے لکھاہےکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کےامن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے ’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ’’جان شپ‘‘نےاپنے ایک مختصر مضمون میں لکھاکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیاکے امن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

انہوں نےلکھاکہ سعودی عرب کی  یمن مخالف جنگ میں اب تک دس ہزار سے زائد افراد ہلاک جبکہ دسیوں لاکھ بےگھر ہوئے ہیں۔

انہوں نے لکھاکہ امریکی حکومت یمن کی صورتحال کو مزید بد سے بدتر بنانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لانے کی کوشش کررہی ہے۔

انہوں نے لکھاکہ آج یمن کو جس قحط کا سامنا ہے وہ  خشک سالی یا فصل کی  ناکامی کا نتیجہ نہیں  بلکہ سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے لکھاکہ  امریکہ اوراسکے اتحادیوں نے دوسال کے عرصے سے یمن کے خلاف جو منظم محاصرہ کررکھا ہے  اس وجہ سے لاکھوں یمنیوں کی جانوں کو خطرہ لاحق ہوچکا ہے۔

انہوں نے لکھاکہ سعودی عرب دانستہ طورپر شہری آبادی والے علاقوں ،اسپتالوں اوربازاروں کو نشانہ بنارہی ہے جو اس فقیر ملک میں ہیضے کی وبا پھوٹنے کا موجب بنی ہے۔

انہوں نے کہاکہ یمن جنگ بعض امریکی شخصیات اوراسلحہ ساز کمپنیوں کیلئے ایک منافع بخش جنگ ثابت ہورہی ہے۔

جان شپ نے کہاکہ اگر یمنی بحران کو حل کرنے کے اقدامات نہ کئے گئے اور سعودی عرب اس ملک کی بنیادی تنصیبات کو اسی طرح تباہ کرتا رہا تو دہائیوں تک اس کی تعمیر نو ناممکن ہوگی۔

واضح رہےکہ یمن پر سعودی عرب کے وحشیانہ جرائم کی عالمی سطح پر مذمت کی جا رہی ہے لیکن حکومت  آل سعود  عالمی برادری کے احتجاج کی پرواہ کئے بغیر اپنے حملے جاری رکھے ہوئے ہے۔ سعودی عرب اور اس کے اتحادیوں نے یمن کے عوام کی انقلابی تحریک کو کچلنے اور معزول صدر منصور ہادی کو دوبارہ اقتدار میں لانے کے بہانے یمن پر جارحانہ حملے شروع کئے تھے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر