تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور:1932 ء میں سعودی عرب کے قیام کے بعد سے آل سعود نے بادشاہت کے متضاد سیاسی ،سماجی اورمذہبی ڈھانچے کے چلینجز سے نمٹنے کیلئے وہابیت کا استعمال کیا ہے اوروہابیت کے نظرئے نے مذہبی طورپر آل سعود خاندان کی طاقت تاج اورحکومت کو جائز ٹھہرایا ہے۔

نیوز نور : بولویا کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ کو وینزوئلا میں مداخلت کا خیال ترک کرنا چاہئے کیونکہ دنیا بھر میں امریکی سامراجیت دم توڑ چکی ہے۔

نیوز نور:ایران کے ایک سینئر قانون ساز نے کہاہےکہ امریکہ کی طرف سے روس اورایران پر  بیک وقت پابندیوں کو عائد کئے جانے کا مقصد دوعلاقائی اتحادیوں کے درمیان تعلقات میں شگاف پیدا کرنا تھا۔

نیوز نور:لبنان کی اسلامی تحریک مقاومت حزب اللہ کی سیکورٹی کونسل کےچیئرمین نے کہاہے کہ شام میں سرگرم تکفیری دہشتگرد گروہ داعش کے خلاف جنگ آخری مرحلے میں داخل ہوچکی ہے۔

نیوز نور : لبنان کے پارلیمانی نمائندے نے کہا ہے کہ  شام فلسطین اور بیت المقدس کی حمایت کا علمبردار ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
امریکی کالم نگار:
امریکہ یمن کی تباہی میں برابر کا شریک ہے

نیوز نور:ایک امریکی کالم نگار نے لکھاہےکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کےامن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

استکباری دنیا صارفین۱۰۰ : // تفصیل

امریکی کالم نگار:

امریکہ یمن کی تباہی میں برابر کا شریک ہے

نیوز نور:ایک امریکی کالم نگار نے لکھاہےکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کےامن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے ’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ’’جان شپ‘‘نےاپنے ایک مختصر مضمون میں لکھاکہ مشرق وسطیٰ جیسے اسٹریٹجک خطے میں تنازعات ایجاد کرنا  امریکہ کی تاریخ رہی ہے اوریمن کہ جس کو تباہ کرنے میں امریکہ اورسعودی عرب نے کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے میں رونما ہونے والا انسانی المیہ نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیاکے امن واستحکام کیلئے خطرہ ہے۔

انہوں نےلکھاکہ سعودی عرب کی  یمن مخالف جنگ میں اب تک دس ہزار سے زائد افراد ہلاک جبکہ دسیوں لاکھ بےگھر ہوئے ہیں۔

انہوں نے لکھاکہ امریکی حکومت یمن کی صورتحال کو مزید بد سے بدتر بنانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لانے کی کوشش کررہی ہے۔

انہوں نے لکھاکہ آج یمن کو جس قحط کا سامنا ہے وہ  خشک سالی یا فصل کی  ناکامی کا نتیجہ نہیں  بلکہ سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے لکھاکہ  امریکہ اوراسکے اتحادیوں نے دوسال کے عرصے سے یمن کے خلاف جو منظم محاصرہ کررکھا ہے  اس وجہ سے لاکھوں یمنیوں کی جانوں کو خطرہ لاحق ہوچکا ہے۔

انہوں نے لکھاکہ سعودی عرب دانستہ طورپر شہری آبادی والے علاقوں ،اسپتالوں اوربازاروں کو نشانہ بنارہی ہے جو اس فقیر ملک میں ہیضے کی وبا پھوٹنے کا موجب بنی ہے۔

انہوں نے کہاکہ یمن جنگ بعض امریکی شخصیات اوراسلحہ ساز کمپنیوں کیلئے ایک منافع بخش جنگ ثابت ہورہی ہے۔

جان شپ نے کہاکہ اگر یمنی بحران کو حل کرنے کے اقدامات نہ کئے گئے اور سعودی عرب اس ملک کی بنیادی تنصیبات کو اسی طرح تباہ کرتا رہا تو دہائیوں تک اس کی تعمیر نو ناممکن ہوگی۔

واضح رہےکہ یمن پر سعودی عرب کے وحشیانہ جرائم کی عالمی سطح پر مذمت کی جا رہی ہے لیکن حکومت  آل سعود  عالمی برادری کے احتجاج کی پرواہ کئے بغیر اپنے حملے جاری رکھے ہوئے ہے۔ سعودی عرب اور اس کے اتحادیوں نے یمن کے عوام کی انقلابی تحریک کو کچلنے اور معزول صدر منصور ہادی کو دوبارہ اقتدار میں لانے کے بہانے یمن پر جارحانہ حملے شروع کئے تھے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر