تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور : 11 دسمبر/ مقبوضہ فلسطین میں مظاہرین نے مسئلہ فلسطین کے بارے ميں سعودی عرب کے بادشاہ اور ولیعہد کی غداری اور خیانت کی بھر پور مذمت کرتے ہوئے سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان اور ولیعہد محمد بن سلمان کی تصویروں کو آگ لگا کر پاؤں تلے رگڑ دیا ہے۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان بعض عرب ممالک  کی ہم آہنگی سے انجام پایا ہے جس کا مقصد عرب - اسرائیل کے تعلقات کو معمول پر لانا اور مسئلہ فلسطین کو سرد خانے میں ڈالنا ہے۔

نیوز نور 11 دسمبر/ فلسطینی وزیرخارجہ نےکہا ہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیلی ریاست کا دارالحکومت تسلیم کئے جانے کے بعد اسرائیل دوسرے ممالک  پر القدس کو صہیونی ریاست کا دارالحکومت تسلیم کرانے کے لیے دباؤ ڈال رہا ہے۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ سعودی عرب کے قریب سمجھے جانے والے پاکستانی اہلسنت عالم دین اور جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ  نے کہا ہے کہ اسلامی اتحادی افواج کا ڈھونگ رچانے والا شاہ سلمان اب بیت المقدس کو بچائیں۔

نیوز نور : 11 دسمبر/ امریکی یونیورسٹیوں کے ایک سو بیس یہودی اساتذہ نے ایک شکایت نامے پر دستخط کرکے بیت المقدس کے بارے میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے فیصلے کی مذمت کی ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
لبنانی فوجی امور کے ماہر:
حزب اللہ لبنانی فوج اورعوام کا اتحاد ایک سنہری مثلث ہے

نیوز نور: لبنانی فوجی امور کے ایک ماہرنے حزب اللہ لبنانی فوج اورلبنانی عوام کے محور کو ایک ایسا سنہرا مثلث قراردیا ہے کہ  جس نے صیہونی دشمن اورتکفیری گروہوں کے خطرات سے  ملک کو محفوظ رکھا ہے۔

اسلامی بیداری صارفین۵۳۶ : // تفصیل

لبنانی فوجی امور کے ماہر:

حزب اللہ لبنانی فوج اورعوام کا اتحاد ایک سنہری مثلث ہے

نیوز نور: لبنانی فوجی امور کے ایک ماہرنے حزب اللہ لبنانی فوج اورلبنانی عوام کے محور کو ایک ایسا سنہرا مثلث قراردیا ہے کہ  جس نے صیہونی دشمن اورتکفیری گروہوں کے خطرات سے  ملک کو محفوظ رکھا ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے ’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی ذرائع ابلاغ کےساتھ انٹرویو میں ’’ولید سکریہ ‘‘نے حزب اللہ لبنانی فوج اورلبنانی عوام کے محور کو ایک ایسا سنہرا مثلث قراردیا ہے کہ جس نے صیہونی دشمن اورتکفیری گروہوں کے خطرات سے  ملک کو محفوظ رکھا ہے۔

انہوں نے سوالیہ انداز میں کہاکہ کیا ہم اسرائیلی فوج سے بہتر  فوج قائم کرسکتے ہیں کیا ہم ایک ایسی فوج کی تشکیل دے سکتے ہیں جو اسرائیلی فورسز پر حملے اورہماری زمینوں کو آزاد کراسکتی ہے بالکل ہی  نہیں صرف اورصرف مقاومتی تحریک سے آج ہم اپنی قوم اورملک کی خودمختاری وارضی سالمیت کا صیہونی دشمن سے دفاع کرپارہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ تحریک مقاومت حزب اللہ ہی لبنانی قوم کی اصلی طاقت ہے۔

انہوں نے کہاکہ تمام  کمزور ممالک کی اسٹریٹجی اپنے سے مضبوط طاقتوں کا مقابلہ کرنا ہے۔

انہوں نے کہاکہ ۲۰۰۶ء کی جارحیت میں تحریک مقاومت حزب اللہ صیہونی جارحین کے خلاف سیسا پیلائی دیوار کی مانند کھڑی رہی جبکہ فوج نے گھویلو محاذ پر قوم کا دفاع کیا عوام نے بھی اپنی طرف سے صیہونی مظالم اورجارحیت کے خلاف سخت مزا حمت دکھائی اس لئےلبنان دشمن کے خلاف جارحیت میں کامیاب رہا۔

انہوں نے کہاکہ تحریک مقاومت حزب اللہ،فوج اورقوم کا ۲۰۰۶ء میں جو کردار سامنے آیا ارسال معرکے میں بھی  اسی طرح کا کردارہمیں نظرآیا ۔

لبنانی ماہر نے کہاکہ حالیہ جنگ اوردوہزار چھ کی جنگ میں حزب اللہ صیہونی دشمن کے خلاف فرنٹ لائن پر کھڑی تھی ۔بلاشبہ فوج اورعوام بھی اس منظر نامے میں چھائے رہے۔

انہوں نے کہاکہ ارسال کی پہاڑیوں میں تحریک مقاومت حزب اللہ نے عسکری آپریشن کا آغاز کیا جبکہ فوج نے دہشتگردی کے خلاف ایک قلعے کا کام کیا ۔

انہوں نے کہاکہ تحریک مقاومت حزب اللہ ،فوج اورلبنانی عوام کے سنہری مثلث نے خود کو عملی طورپر ثابت کردیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ لبنانی عوام کی نظر میں اس سنہرے مثلث کی کارکردگی مؤثر ثابت ہوتی جارہی ہے جسے ثابت ہوتا ہے کہ اس مثلث کی حمایت لبنان کے خلاف صیہونی وتکفیری دشمنوں کی سازشوں سے  محفوظ رکھنے کا بہترین اوپشن ہے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر