تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:13 دسمبر/ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے بین الاقوامی امور اور قوانین نے تہران میں مغربی ایشیا کی علاقائی سیکورٹی پر منعقدہ قومی سمینار کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ملکی دفاعی اور میزائل پروگرام پر مذاکرات کی ہرگز گنجائش نہیں ہے ۔

 نیوزنور:13 دسمبر/ اقوام متحدہ کے ایک رکن کا کہنا ہے کہ اس وقت یمن میں 8 ملین انسان سنگین قحط کا شکار ہیں

نیوزنور:13 دسمبر/عراقی حزب اللہ نے اعلان کیا ہے کہ فلسطینی علاقوں کوصیہونی قبضے سے آزاد کرانے کیلئے وہ غاصب  اسرائیل کےساتھ جنگ کو مکمل طورپر آمادہ ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ مصر ی دارالفتویٰ نے اپنے ایک بیان میں خبردار کیا ہے  کہ قدس کے نام پر داعش جوانوں کو بھرتی کے لیے گمراہ کرسکتی ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ فلسطین میں انسانی حقوق کے لئے سرگرم ذرائع کا کہنا ہے کہ پچھلے پانچ دنوں کے دوران حراست میں لئے جانے والے بیت المقدس کے باسیوں میں سے ایک تہائی حصہ کم عمر بچوں کا ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
جدید ترین رائے گیری کے نتائج کی بنیاد پر ؛
صرف ۲۴ فیصد امریکی یہ سوچتے ہیں کہ ان کا ملک صحیح راستے پر گامزن ہے

نیوزنور:امریکہ میں جدید ترین رائے گیری  کے نتائج سے پتہ چلا ہے کہ اس ملک کے لوگ اپنے ملک کے حالات اور ٹرامپ کے طرز عمل سے راضی نہیں ہیں ۔

استکباری دنیا صارفین۴۱۳ : // تفصیل

جدید ترین رائے گیری کے نتائج کی بنیاد پر ؛

صرف ۲۴ فیصد امریکی یہ سوچتے ہیں کہ ان کا ملک صحیح راستے پر گامزن ہے

نیوزنور:امریکہ میں جدید ترین رائے گیری  کے نتائج سے پتہ چلا ہے کہ اس ملک کے لوگ اپنے ملک کے حالات اور ٹرامپ کے طرز عمل سے راضی نہیں ہیں ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور نے ایسوشیٹیڈ پریس کے حوالے سے خبر دی ہے کہ امریکہ میں تازہ ترین نظر سنجی سے  پتہ چلا ہے کہ امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرامپ کے کچھ جنجالی  بیانات اور اقدامات کے بعد  کہ جس میں شمالی کوریا کو جنگ کی دھمکی بھی شامل ہے، طوفان سے متائثرہ افراد کو امداد رسانی کے بارے میں شکایت ، اور ٹرامپ کے نسل پرستی کے بارے میں بے تکے بیان کے بعدصرف ۲۴ فیصد امریکی یہ سوچتے ہیں کہ ان کا ملک صحیح سمت میں قدم آگے بڑھا  رہا ہے ۔

امریکہ کے صدر کے بارے میں خوش فہمی میں اس قدر کمی خاص کر جمہوریخواہوں میں زیادہ دکھائی دیتی ہے ، اس لیے کہ ماہ جون کی نظر سنجی میں سو فیصد جمہوری خواہوں نے کہا تھا کہ ملک صحیح سمت میں آگے بڑھ رہا ہے ، لیکن آج صرف ۴۴ فیصد جمہوریخواہ ایسا سوچتے ہیں ۔

اسی طرح تقریبا ستر فیصد امریکی کہتے ہیں کہ ٹرامپ ایک متوازن انسان اور صحیح فیصلہ کرنے والا شخص نہیں ہے اور اکثریت کا یہ کہنا ہے کہ وہ سچا اور طاقتور نہیں ہے ۔ ساٹھ فیصد سے زیادہ لوگ نسلی موضوعات نیز  خارجی سیاست کے  مسائل اور مہاجرت کے موضوعات میں اس کے طرز عمل کو رد کرتے ہیں ۔

مجموعی طور پر ۶۷ فیصد امریکی کہ جن میں ایک تہائی جمہوری خواہ شامل ہیں وائٹ ہاوس میں ٹرامپ کی ذمہ داریاں نبھانے کی تائیید نہیں کرتے ۔ اس کے علاوہ ۶۸ فیصد امریکی حفظان صحت کے مسائل پر نگرانی کے قانون  بارے میں ٹرامپ کے طرز عمل سے  کہ جس قانون کا نام اوباماکر ہے ناراضگی کا اظہار کر چکے ہیں ۔  

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر