تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:یمن کی وزارت صحت نے اعلان کیا ہے کہ  سعودی جارحیت کے سبب ہیضے میں مبتلا افراد کی تعداد آٹھ لاکھ سے زیادہ ہو گئی ہے جس میں اب تک دو ہزار افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔

نیوزنور:اسلامی جمہوریہ ایران کی تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکریٹری نے کہا ہے کہ ایران میزائلی صلاحیتوں کے بارے میں کوئی مذاکرات نہیں کرے گا۔

نیوزنور:بحرین میں انسانی حقوق اور جمہوریت کے لئے صلح نامی ایک ادارے کے سربراہ نے کہا ہے کہ گذشتہ سات برسوں میں آل خلیفہ حکومت نے پندرہ ہزار بحرینی شہریوں کو گرفتار کر کے جیل میں قید کیا ہے۔

نیوزنور:فرانس کے صدر نے کہا ہے کہ ایٹمی سمجھوتے کو بچانے کے لئے یورپ اپنی تمام تر کوششیں بروئےکار لائے گا۔

نیوزنور: مسجد اقصیٰ کے خطیب نے فلسطینی قوم کے خلاف صہیونی ریاست کے مظالم کی شدید مذمت کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ القدس شہر کو صہیونی دشمن کی جانب سے منظم جارحیت کاسامنا ہےاس لئے یکجہتی، اتحاد اور اتفاق فلسطینی قوم کے پاس اپنے سلب شدہ حقوق کے حصول کے لیے ایک موثر ہتھیار ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
معروف امریکی تجزیہ کار:
جامع مشترکہ ایکشن پلا ن سے علحیدگی امریکہ کو دنیا میں تنہا کردےگی

نیوزنور: امریکہ کی ایک معروف سیاسی تجزیہ نگار نے کہاہےکہ ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی یکطرفہ علحیدگی دنیا وی ممالک سے امریکہ کے تعلقات کیلئے ایک بڑا دھچکا ثابت ہوگا۔

استکباری دنیا صارفین۴۳۲ : // تفصیل

معروف امریکی تجزیہ کار:

جامع مشترکہ ایکشن پلا ن سے علحیدگی  امریکہ کو دنیا میں تنہا کردےگی

نیوزنور: امریکہ کی ایک معروف سیاسی تجزیہ نگار نے کہاہےکہ ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی یکطرفہ علحیدگی دنیا وی ممالک سے امریکہ کے تعلقات کیلئے ایک بڑا دھچکا ثابت ہوگا۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی ذرائع ابلاغ کےساتھ انٹرویو میں ’’باربرا سلاوین‘‘نےکہاکہ ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی یکطرفہ علحیدگی دنیا وی ممالک سے امریکہ کے تعلقات کیلئے ایک بڑا دھچکا ثابت ہوگا۔

انہوں نے کہاکہ میرا عقیدہ ہےکہ اگر امریکہ یکطرفہ طورپر جوہری معاہدے سے دستبردار ہوجاتا ہے تو اسے واشنگٹن اوراسکے اتحادیوں کے درمیان تعلقات بگڑ سکتے ہیں اور پھرافغانستان ،شمالی کوریااوردیگر عالمی مسائل پر کسی اتفاق رائے تک پہنچنا اگرچہ ناممکن نہیں تاہم انتہائی دشوار ہوگا۔

اس سوال کے جواب میں کہ کیا امریکی کانگریس ٹرمپ کے ایران پر دوبارہ پابندیاں عائد کرنےکی تجویز کی حمایت کرےگا انہوں نے کہاکہ  ایسا دکھائی دے رہا ہےکہ ایسے وقت میں جب امریکہ کو سنگین گھریلو مسائل کا سامنا ہے  کانگریس  اس مسئلے کی ذمہ داری  لینے کو تیار نہیں ۔

انہوں نےجامع مشترکہ ایکشن پلان سے ممکنہ امریکی انخلا اور اس  پر یورپی ممالک کے ممکنہ ردعمل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ  یورپی حکومتیں بارہا اعلان کرچکی  ہیں کہ ایران جب تک جوہری معاہدے کی پابندی کرےگا تب تک وہ اس کی حمایت جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہاکہ تاہم  یورپی تاجر ایران میں مزید سرمایہ کاری سے ہچکچائیں گے اوربعض کمپنیاں جو پہلے ہی ایران میں دوبارہ اپنا کاروبار شرو ع کرچکی ہیں اپنی سرمایہ کاری میں کمی کرسکتےہیں۔

جامع مشترکہ ایکشن پلان کی منسوخی کے دیگر مسائل خاص کر مشرق وسطیٰ پر اسکے اثرات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے  انہوں نے کہاکہ بلاشبہ  جامع مشترکہ ایکشن پلان کے خاتمہ  کےشام اوریمن میں جاری جنگ اورقطر اورسعودی عرب کےدرمیان جاری کشیدگی پرموثر اثرات مرتب نہیں ہونگے۔

انہوں نے کہاکہ علاقائی سفارتکاری میں بھی اسلامی جمہوریہ ایران کو شامل کئےجانے اورواشنگٹن اورتہران کے درمیان رابطے کی ایک چینل قائم کرنے کی ضرورت ہے۔

شمالی کوریا کے بحران پر تبصرہ کرتے ہوئے سلاوین نے کہاکہ شمالی کوریا کا بحران امریکہ کیلئے  ایک منفرد چلینج  ہے  لیکن ایران جوہری معاہدہ سفارتکاری اور پرامن حل کا ایک ماڈل رہا ہے اوراگر یہ معاہدہ منسوخ ہوتا ہے پھر شمالی کوریا کے جوہری مسئلےکو حل کرنا ناممکن ہوگا کیونکہ کوئی پھر امریکہ  پراعتماد نہیں کرےگا۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر