تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:13 دسمبر/ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے بین الاقوامی امور اور قوانین نے تہران میں مغربی ایشیا کی علاقائی سیکورٹی پر منعقدہ قومی سمینار کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ملکی دفاعی اور میزائل پروگرام پر مذاکرات کی ہرگز گنجائش نہیں ہے ۔

 نیوزنور:13 دسمبر/ اقوام متحدہ کے ایک رکن کا کہنا ہے کہ اس وقت یمن میں 8 ملین انسان سنگین قحط کا شکار ہیں

نیوزنور:13 دسمبر/عراقی حزب اللہ نے اعلان کیا ہے کہ فلسطینی علاقوں کوصیہونی قبضے سے آزاد کرانے کیلئے وہ غاصب  اسرائیل کےساتھ جنگ کو مکمل طورپر آمادہ ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ مصر ی دارالفتویٰ نے اپنے ایک بیان میں خبردار کیا ہے  کہ قدس کے نام پر داعش جوانوں کو بھرتی کے لیے گمراہ کرسکتی ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ فلسطین میں انسانی حقوق کے لئے سرگرم ذرائع کا کہنا ہے کہ پچھلے پانچ دنوں کے دوران حراست میں لئے جانے والے بیت المقدس کے باسیوں میں سے ایک تہائی حصہ کم عمر بچوں کا ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
امریکی نامور مورخ؛
آیۃ اللہ[امام] خامنہ ای امریکہ کے غیر قابل اعتماد ہونے کے بارے میں درست فرماتے تھے

نیوزنور:امریکہ کے ایک مورخ نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے: ٹرمپ اور سینیٹر ٹوم کاٹن جیسے جنگ طلب افراد وعدہ خلافی کرنے اور اپنے قول سے پیچھے ہٹنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

اسلامی بیداری صارفین۱۳۳۷ : // تفصیل

امریکی نامور مورخ؛

آیۃ اللہ[امام] خامنہ ای امریکہ کے غیر قابل اعتماد ہونے کے بارے میں درست فرماتے تھے

نیوزنور:امریکہ کے ایک مورخ نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے: ٹرمپ اور سینیٹر ٹوم کاٹن جیسے جنگ طلب افراد وعدہ خلافی کرنے اور اپنے قول سے پیچھے ہٹنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق   : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا وعدہ خلافیوں کا ارادہ رکھنے اور امریکہ کے غیر قابل اعتماد ہونے کے بارے میں آیۃ اللہ [امام]خامنہ ای کے بیانات کے متعلق  ایک امریکی مورخ اپنی ایک رپورٹ  میں لکھتا ہے: آیۃ اللہ خامنہ ای اس بارے میں درست فرماتے تھے ۔  در حقیقت اسرائیلیوں کے زیر تسلط   سرزمین میں فلسطینیوں کی بے سر و سامانی اور بے چارگی  کا ذمہ دار امریکہ ہے۔ عراق میں امریکہ کی مداخلت اور اشغال گری اس ملک کے بی ثبات ہونے کی وجہ ہے۔  امریکہ کی خفیہ پالیسیاں  چھوٹی سے چھوٹی حرکت  سے لے کر ڈرون طیاروں کے ذریعے حملے تک سب ، علاقے میں نا امنی پھیلنے کا باعث ہے۔

جوان کولی [Juan Cole]نے اس رپورٹ  کے دوسرے حصے میں لکھا ہے۔ ایران اس شرط کے ساتھ مذاکرات میں حصہ لے گا  کہ اس پر لگی ہوئی پابندیاں ہٹا دی جائیں وہ پابندیاں کہ جس نے اس ملک کے اقتصاد کو نقصان پہنچایا ہے اور اس ملک کے عوام  کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالا ہے۔  اب  جب کہ پابندیاں ختم ہو چکی ہیں تو جیسا کہ آیۃ اللہ [امام]خامنہ ای نے کہا تھا، امریکہ نے ان پابندیوں میں  شدت  پیداکی ہے۔

محرر آگے لکھتا ہے: یورپ کی بہت ساری کمپنیاں  امریکہ کے ڈر سے ایران میں سرمایہ گذاری سے بچتی   ہیں ۔  ایران نے بھی مذاکرات کے سلسلے میں ایک بہت بڑی رکاوٹ کو ختم کیا ہے( دشمنوں کے تہاجم سے بچنے کے لئے ایٹمی پلانٹ کے مسئلے کو ختم کیا ہے جب کہ کوئی بمب نہیں بنایا گیا تھا) ۔ ٹرمپ اور سینیٹر ٹام کاٹن جیسے جنگ طلب افراد چاہتے ہیں   کہ یہ دیکھیں کہ کیا امریکہ مکمل طور پر اس توافق سے منہ موڑ سکتا ہے   تاکہ اپنے وعدوں پر تجدید نظر کر سکے۔ اس معاہدے سے انکار کرنے کا  واحد مقصد اس ملک کے خلاف جنگ کے لئے راستہ فراہم کرنا ہے۔

خوان کول نے آخر میں امریکا کی طرف سے کئے گئے وعدوں کی خلاف ورزی  کے متعلق ایرانی رہبر کے بیانات کے ضمن میں لکھا ہے۔ ان تفاصیل کے بعد آیۃ اللہ خامنہ ای ٹرمپ کے بارے میں جو نظریہ رکھتے ہیں وہ حیرت انگیز نہیں ہے۔ زمانہ بھی ٹرمپ جیسے خطرناک آدمی کی پالیسیوں کا نظارہ گر ہے۔ اور امریکی عوام کی امنیت کو اس طرح کے صدر سے خطرہ ہے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر