تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور:13 دسمبر/ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے بین الاقوامی امور اور قوانین نے تہران میں مغربی ایشیا کی علاقائی سیکورٹی پر منعقدہ قومی سمینار کے موقع پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ملکی دفاعی اور میزائل پروگرام پر مذاکرات کی ہرگز گنجائش نہیں ہے ۔

 نیوزنور:13 دسمبر/ اقوام متحدہ کے ایک رکن کا کہنا ہے کہ اس وقت یمن میں 8 ملین انسان سنگین قحط کا شکار ہیں

نیوزنور:13 دسمبر/عراقی حزب اللہ نے اعلان کیا ہے کہ فلسطینی علاقوں کوصیہونی قبضے سے آزاد کرانے کیلئے وہ غاصب  اسرائیل کےساتھ جنگ کو مکمل طورپر آمادہ ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ مصر ی دارالفتویٰ نے اپنے ایک بیان میں خبردار کیا ہے  کہ قدس کے نام پر داعش جوانوں کو بھرتی کے لیے گمراہ کرسکتی ہے۔

نیوز نور:13 دسمبر/ فلسطین میں انسانی حقوق کے لئے سرگرم ذرائع کا کہنا ہے کہ پچھلے پانچ دنوں کے دوران حراست میں لئے جانے والے بیت المقدس کے باسیوں میں سے ایک تہائی حصہ کم عمر بچوں کا ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
مصر ی شیعہ سرکردہ شخصیت:
شیعہ مراجع صحابہ اور ازواج پیامبر کو برا بھلاکہنے کا حکم نہیں دیتے

نیوزنور:مصر ی شیعہ سرکردہ شخصیت  سید طاہر الھاشمی نے الازھر کے  ترجمان   کی گفتگو کے رد عمل میں کہا  کہ 22 شیعہ مراجع نے دور حاضر میں  متعدد فتاوی کے ذریعہ اہلسنت  کی مقدس شخصیات  کی توہین کو حرام قرار دیا ہے لیکن فتنہ پرور افراد علی کے شیعوں کے مثبت نکات کو بیان کرنا گوارا نہیں کرتے !

مسلکی رواداری صارفین۲۶۴۹ : // تفصیل

مصر ی شیعہ سرکردہ شخصیت:

شیعہ مراجع صحابہ اور ازواج پیامبر کو برا بھلاکہنے کا حکم نہیں دیتے

نیوزنور:مصر ی شیعہ سرکردہ شخصیت  سید طاہر الھاشمی نے الازھر کے  ترجمان   کی گفتگو کے رد عمل میں کہا  کہ 22 شیعہ مراجع نے دور حاضر میں  متعدد فتاوی کے ذریعہ اہلسنت  کی مقدس شخصیات  کی توہین کو حرام قرار دیا ہے لیکن فتنہ پرور افراد علی کے شیعوں کے مثبت نکات کو بیان کرنا گوارا نہیں کرتے !

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق  مصری شیعہ سرکردہ شخصیت اور مجمع جھانی اھلیبیت (علیھم السلام )کے رکن سید طاہر الھاشمی  نے  عاشور کے دن   بعض صحابہ اور بعض ازواج پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم)کو برا بھلا کہنے کے سلسلے میں  الازھر یونیورسٹی کے ترجمان عباس شوما ن کے بیانات پر تنقید کی۔  نیز سید طاہر الہاشمی  جو کہ مصر کے شیعوں  کی چیدہ شخصیت شمار ہوتی ہے ،نے مصر کی الازھر یونیورسٹی کے اسپیکر کے شیعوں کے خلاف بیانات اور ان پر اصحاب پیغمبر کو برا بھلا کہنے کے الزام کے جواب میں رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ: 22 شیعہ مراجع نے دور حاضر میں  متعدد فتاوی کے ذریعہ اہلسنت کی مقدس شخصیات  کی توہین کو حرام قرار دیا ہے لیکن فتنہ پرور افراد علی کے شیعوں کے مثبت نکات کو بیان کرنا گوارا نہیں کرتے !

سید طاہر الہاشمی نے اس بات کی بھی تاکید کی کہ شیعوں میں سے کوئی بھی شخص صحابہ اور ازواج پیغمبر کو برا بھلا کہنے کا حکم نہیں دیتا  اور نہ ہی شیعہ حضرات ایسے فتووں کو مانتے ہیں ۔

انہوں نے الازہر یونیورسٹی اور اس کے علماء  کہ جن کو پوری دنیا میں مسلمانوں  کے  درمیان اتحاد و اجتماع کا  مرکز  ہونا چاہیے ، سے نا امیدی کا اظہار کرتے ہوئے کہا  کہ الازہر یونیورسٹی  سے ان مسایل کواجاگر کرنے کی توقع نہیں تھی کہ  جو مدتوں پہلے موضوع بحث سے خارج ہو چکے ہیں ۔

اس مصری دانشمند  نے  پیروان اھلیبیت کےخلاف الازہر کے  انتقاد میں کہا  کہ  شیعہ مراجع کے وحدت طلبانہ اقدامات  کے مقابلے میں بعض اہل سنت کے علماء و مبلغین کا اصرار ہے کہ لوگوں کے لیے علی علیہ السلام کے شیعوں کے کسی بھی مثبت نکتےکو بیان  نہ کیا جائے ۔  ان کا مقصد شیعوں کو نظر انداز  کر  کےمسلمانوں کو بھڑکانا ہے  نیز یہ افراد شیعوں کو غیر مسلمان معرفی کرنے کے ساتھ ساتھ  امت کے درمیان فتنی انگیزی کے ذریعہ پیروان اہلیبیت  کی نسل کشی کا راستہ فراہم کرتے ہیں ۔

ان بیانات کے ذریعہ وہ  شیعوں کے ساتھ نہیں بلکہ خود  اہلبیت کے ساتھ معرکہ آرائی کرتے ہیں !

سید طاہر الہاشمی نے اپنی بات کو  بڑھاتے ہوئے  عدالت اور عصمت صحابہ کے ضمن میں تاریخی و علمی بحث کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا  کہ   عباس شومان  کی گفتگو   اس شخص کی بات کی طرح ہے کہ جو  اس بات کا مدعی ہو  کہ ہمارے سردار معاویہ نے ہمارے سردار حجر بن عدی کو قتل کیا کیونکہ وہ ہمارے سردار و سرور حضرت علی علیہ السلام کو  دوست رکھتا تھا ۔

انہوں نے  مزید کہا کہ یہ  باتیں   قدرو قیمت کے کسی بھی معیار پر پوری نہیں اترتیں  ۔  اس جھوٹ کو قرآن کی طرف منسوب کرتے ہوئے کہاکہ فتح مکہ  سے پہلے اور بعد کے مسلمانوں کے درمیان اور  جنگ میں پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے ساتھ رہنے والے اور ساتھ چھوڑ کر بھاگ جانے والوں  کے درمیان اور  گھروں میں چھپ کر بیٹھ جانے والوں اور راہ خدا میں جھاد کرنے والوں کے درمیان کوئی فرق نہیں  ہے اس لیے کہ یہ سب اصحاب پیغمبر اکرم(صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) تھے ۔

سید طاہر الہاشمی نے یہ سوال کرتےہوئے کہا کہ اس سلسلے میں   آپ کا ماننا کیا ہے ؟ کیا ان باتوں سے آپ پیروان اہلیبیت (علیہم السلام) سے جنگ کر رہے ہیں یا خود اہلیبیت (علیہم السلام) کے ساتھ ؟

مجمع عمومی مجمع جھانی اہلبیت  کے مصری  رکن  نے سورہ منافقین کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ منافقین کون ہیں ؟ کیا پیغمبر (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے بعض اصحاب منافق نہیں تھے ؟

مصر کی اس بر جستہ شخصیت نے اس بات کی تاکید کرتے ہوئے کہ قرآن کریم نےہر دور اور ہر مقام کے منافقین کی طرف اشارہ کیا ہے کہا کہ یہ بات بالکل بھی قابل قبول نہیں ہے کہ منافقت دور پیغمبر کے علاوہ ہر دور میں موجود ہے چونکہ یہ بات  قرآن کے منافی ہے ۔

انہوں نے پیغمبراکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے دور میں  مدینے کے  ان منافقوں  کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ  کیا عبد اللہ بن ابی بن سلول پیغمبر  کا  صحابی  نہیں تھا ؟ کیا منافق نہیں تھا ؟ کیا  پیغمبر کے اصحاب میں ایسے لوگ نہیں پائے جاتے کہ جنھوں نے پیغمبراکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی مخالفت کی  اور اسامہ  کے لشکر میں شامل نہیں  ہوئے ؟ کیا بعض صحابیوں نے پیغمبراکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی مخالفت نہیں کی اور جنگ سے نہیں بھاگے ؟

آخر میں الہاشمی نے  زمان پیغمبراکرم(صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) میں نفاق او منافق  کے عدم وجود کے دعویداروں سےمطالبہ کیا کہ ایسی دلیل لائیں جو  اس بات پر دلالت کرتی ہو کہ پیغمبر اکرم(صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے تمام صحابی معصوم تھے ۔

الازہر کے ترجمان نے کیا کہا ؟

قابل ذکر ہے کہ الازر یونیورسٹی کے اسپیکرعباس شومان نے کچھ دن پہلے کہا تھا کہ ہم اس بات کو قبول نہیں کرتے کہ  شیعہ امام حسین علیہ السلام کی عزاداری کے مراسم میں حضرات عایشہ ، ابوبکر، عمر، عثمان اور معاویہ کہ جو کاتب وحی تھا  کی بد گوئی کریں ۔ ہمیں اصحاب کے حال کو خداوند متعال پر چھوڑ دینا چاہیے  اس لیے کہ ان بحثوں میں الجھنا  نہ صرف یہ کہ ہمارے لیے مفید نہیں ہے بلکہ ہمارے نامہ اعمال میں گناہوں کے اضافہ کا باعث ہے۔

انہوں نےپوری دنیا میں  مکتب اہلبیت کے پیروکاروں کی توہین کرتے ہوئے کہا  کہ :نادانوں کی  عدم رضایت کے باوجود خداوند تمام اصحاب سے راضی ہے ۔ خدایا ہم سفیہوں کے اس عمل سے اظہار برائت کرتے ہیں !


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر