تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 19جنوری/ہیومن رائٹس واچ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر نے انسانی حقوق کے حوالے سے امریکی صدر کے کرادار کو تباہ کن قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک ڈکٹیٹر ہیں اور سعودی عرب جیسی غیر جمہوری حکومت کی حمایت کرتے ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/لبنانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہم اسرائیلی حملوں کا جواب دینے کے لیے تیار ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے جوہری معاہدے کو خطرے میں ڈالنے سے عالمی امن کے لئے مشکل پیدا ہوگی۔

نیوزنور19جنوری/ایک عرب روز نامے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ کے دلدل میں بری طرح گرفتار ہوگيا ہے اور سعودی عرب کے لئے یمن پر مسلط کردہ جنگ سے نکلنے کا واحد راستہ انصار اللہ سے مذاکرات ہیں۔

نیوزنور19جنوری/اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے خطیب نے مسئلہ فلسطین اور یمن کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیائے اسلام کو فلسطین اور یمن کے مظلوم عوام کی حمایت کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرنا چاہیے اور حق بات کہنے سے گھبرانا نہیں چاہیے۔

  فهرست  
   
     
 
    
روسی تجزیہ نگاروں کی تاکید ؛
امریکہ کا مقصد ایران کے خلاف سعودی اسرائیلی گٹھ بندھن تیار کرنا ہے

نیوزنور: روسی تجزیہ نگاروں نے ٹرامپ کے قدس کو صہیونی حکومت کے پایتخت کے طور پر سرکاری طور پر تسلیم کرنے کے فیصلے کے بارے میں تجزیہ کرنے کے ضمن میں یہ بتایا کہ اس حکومت کا اصلی مقصد ایران کے خلاف سعودی اسرائیلی گٹھ بندھن کی تشکیل ہے ۔

استکباری دنیا صارفین۲۸۹۵ : // تفصیل

روسی تجزیہ نگاروں کی تاکید ؛

امریکہ کا مقصد ایران کے خلاف سعودی اسرائیلی گٹھ بندھن تیار کرنا ہے

نیوزنور: روسی تجزیہ نگاروں نے ٹرامپ کے قدس کو صہیونی حکومت کے پایتخت کے طور پر سرکاری طور پر تسلیم کرنے کے فیصلے کے بارے میں تجزیہ کرنے کے ضمن میں یہ بتایا کہ اس حکومت کا اصلی مقصد ایران کے خلاف سعودی اسرائیلی گٹھ بندھن کی تشکیل ہے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق ایک تجارتی روزنامے "ارب کا" نے روسی تجزیہ نگاروں کی قدس کو صہیونی حکومت کے پایتخت کے طور پر سرکاری طور پر تسلیم کرنے  کے سلسلے میں رائے کے بارے میں لکھا ہے:

مسلمان ملکوں کے رہنماوں نے اسرائیل کے بیت المقدس کو پایہء تخت بنانے کے فیصلے  کے جواب میں فیصلہ کیا ہے کہ اس شہر کے مشرقی حصے کو فلسطین کا پایہء تخت بنایا جائے ۔ یہ فیصلہ اسلامی تعاون کونسل کے سربراہوں کے ہنگامی اجلاس میں کیا گیا کہ جس میں ۵۷ ملک شامل تھے اور فلسطین کی خود مختار حکومت کے سربراہ محمود عباس نے مسلمانوں سے درخواست کی کہ اسرائیل کو سرکاری طور پر تسلیم نہ کیا جائے ۔

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے بھی تجویز پیش کی کہ بیت المقدس کو مقبوضہ فلسطین کا پایہء تخت قرار دیا جائے ۔

اس کی نظر میں امریکہ کا یہ فیصلہ کہ وہ اپنے سفارتخانے کو بیت المقدس منتقل کرے گا اسرائیل کو اس کا ایک تحفہ ہے جو وہ اسے فلسطینیوں کو قتل کرنے کے بدلے میں دے رہا ہے ۔

ماکسیسم سوچو کوف جو المانیٹر نشریے کا دبیر ہے اور روس کے روابط بین الملل کا کارشناس ہے اس نے اردوغان کے اس اظہار نظر کے بارے میں بتایا ؛ اردوغان نے دوسرے مسلمانوں کے مقابلے میں  امریکہ کے فیصلے پر زیادہ شدید رد عمل دکھا یا ہے ۔

اس کی نظر میں اسلامی تعاون کونسل کے پاس امریکہ اور اسرائیل پر اثر انداز ہونے کے بہت محدودوسایل ہیں وہ ٹرامپ کے فیصلے کا قطعی جواب نہیں دے سکتی ۔

لیکن حالیہ اجلاس میں علاقے کے ملکوں کی موجودگی کے بارے میں یہ کہنا پڑے گا : مصر نے اسلامی تعاون کونسل کی تنظیم کے اجلاس میں وزیر خارجہ کی سطح پر شرکت کی ہے لیکن سعودی عرب نے اسلامی امور کے وزیر کو اس اجلاس میں روانہ کیا تھا ، اور کہا جاتا ہے کہ ریاض تقریبا اس اجلاس کے معاملات کی حمایت نہیں کرتا ۔

اس مضمون  میں آگے آیا ہے : روسی ماہرین کا یہ ماننا ہے کہ واشنگٹن اور مشرق وسطی کے دوملکوں کے درمیان کوئی خاص سمجھوتہ نہیں  ہوا تھا لیکن فلسطین کی جنگ کے حل کروانے کے لیے اس طرح کے سمجھوتے ہو سکتے ہیں ۔

ان کی نظر میں ٹرامپ کا روڈمیپ یہ ہے کہ دو قسم کے مذاکرات کیے جائیں ؛ ایک فلسطین اور اسرائیل کے درمیان مذاکرات اور دوسرے مصر ، اردن اور سعودی عرب کی شرکت کے ساتھ علاقائی مذاکرات  ، جن کا اصلی مقصد اسرائیل اور سعودی عرب کا ایران کے خلاف گٹھ بندھن تشکیل دینا ہے ۔ 

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر