تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 19جنوری/ہیومن رائٹس واچ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر نے انسانی حقوق کے حوالے سے امریکی صدر کے کرادار کو تباہ کن قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک ڈکٹیٹر ہیں اور سعودی عرب جیسی غیر جمہوری حکومت کی حمایت کرتے ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/لبنانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہم اسرائیلی حملوں کا جواب دینے کے لیے تیار ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے جوہری معاہدے کو خطرے میں ڈالنے سے عالمی امن کے لئے مشکل پیدا ہوگی۔

نیوزنور19جنوری/ایک عرب روز نامے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ کے دلدل میں بری طرح گرفتار ہوگيا ہے اور سعودی عرب کے لئے یمن پر مسلط کردہ جنگ سے نکلنے کا واحد راستہ انصار اللہ سے مذاکرات ہیں۔

نیوزنور19جنوری/اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے خطیب نے مسئلہ فلسطین اور یمن کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیائے اسلام کو فلسطین اور یمن کے مظلوم عوام کی حمایت کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرنا چاہیے اور حق بات کہنے سے گھبرانا نہیں چاہیے۔

  فهرست  
   
     
 
    
رپورٹ /
نیتن یاہو کے فساد کا راز کھل جانے سے صہیونی حکومت کی موت کا نقارہ بجا

نیوزنور:صہیونی حکومت کے مالی فساد کے معاملوں نے اس منحوس حکومت کی موت کا نقارہ بجا دیا ہے ۔

استکباری دنیا صارفین۱۵۴۷ : // تفصیل

رپورٹ /

نیتن یاہو کے فساد کا راز کھل جانے سے  صہیونی حکومت کی موت کا نقارہ بجا

نیوزنور:صہیونی حکومت کے مالی فساد کے معاملوں نے اس منحوس حکومت کی موت کا نقارہ بجا دیا ہے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق ، قدس کی غاصب حکومت  کے وزیر اعظم نیتنیاہو کی مالی بد عنوانیوں کے معاملات میں تفتیش چل رہی ہے ۔ اس پر الزام ہے کہ اس نے ایک تولید کرنے والے سے غیر قانونی طور پر ہدایا وصول کیے ہیں ۔ نیتن یاہو کو اس حکومت کی عدالت میں دو کیسوں ؛ ۱۰۰۰ اور ۲۰۰۰ کا سامنا ہے ۔ اس کو اب تک کئی بار اس ملک کی پولیس نے مالی فساد کے الزام میں گرفتار کر کے اس سے تفتیش کی ہے ۔

 صہیونی حکومت کے سربراہوں کے اخلاقی اور مالی فساد کا دائرہ بہت وسیع ہے ۔ اور اس ملک میں رقوم میں ہیر پھیر ، اور رشوت لینے کا مسئلہ بہت پرانا ہے ۔ اسی سلسلے میں ، اس حکومت کے سابقہ صدر موشہ کاتساو کی ، کئی یہودی لڑکیوں کو جنسی اذیت پہنچانے اور عدالت میں خلل ڈالنے کے جرم میں ۷ سال کی سزا کی طرف اشارہ کیا جا سکتا ہے ۔

قدس کی غاصب صہیونی حکومت کا بارہواں وزیر اعظم  ایہود اولمرٹ بھی  اس حکومت میں ایک جانا پہچانا چہرہ ہے جس کو سال ۲۰۱۴ میں  مالی فساد کے معاملے میں ۲۷ ماہ قید کی سزا دی گئی تھی ۔

دوسری طرف حالیہ چند دنوں میں صہیونی حکومت کے ۶ عہدیداروں پر جرمنی سے پن ڈبی خریدنے کا الزام لگا تھا نیتن یاہو کی وزارت عظمی کے دفتر کا ایک کارکن اور صہیونی حکومت کے فوجی افسر گرفتار کیے جانے والوں کے درمیان دکھائی دیتے ہیں ۔

نیتن یاہو سے ممکنہ باز خواست  کی صورت میں صہیونی حکومت کا بکھرنا ،

ایک طرف دنیا کے ملکوں کا صہیونے کے پایتخت کو تل ابیب سے قدس منتقل کرنے کے فیصلے کے حق میں ووٹ نہ دینا اور دوسری طرف نیتن یاہو کی متعدد مالی بد عنوانیوں کا برملا ہونا ، اس غاصب حکومت کے تزلزل کے راستے کو پہلے سے زیادہ ہموار کر چکا ہے ۔ نیتن یاہو کی مالی بد عنوانیوں سے پردہ اٹھنے کے بعد خادشوت ٹی وی چینل نے اعلان کیا کہ تقریبا ۶۰ فیصد اسرائیلیوں کا عقیدہ ہے کہ اگر اس حکومت کے وزیر اعظم کو سزا ملتی ہے تو اسے اپنے عہدے سے استعفی دینا چاہیے ۔

نیتن یاہو کو  اپنے مالی بد عنوانیوں کے معاملے میں دو کیسوں ، ۱۰۰۰ اور ۲۰۰۰ کا سامنا ہے ، ۱۰۰۰ والا جو کیس ہے وہ وہ مشروبات الکحلی اور سیگریٹ وغیرہ جیسے  غیر قانونی تحفوں کی وجہ سے ہے جو موجودہ شواہد کی بنا پر ان چیزوں کے  اسرائیلی تولید کرنے والے آرون میلچان نےنیتن یاہو اور اس کی بیوی کو دیے تھے ۔ ۲۰۰۰ والا کیس بھی ان الزامات کی بنا پر ہے کہ جن کی بنیاد پر اسرائیل کے وزیر اعظم نے روز نامہ بدیعوت آحارونوت کو جو روز نامہ اسرائیل ھیوم کا ایک اہم رقیب ہے پیش کش کی تھی کہ اس کی مناسب طریقے سے اپنے مقالات میں  زیادہ تعریف و تمجید کرے ۔

یہ ساتویں بار ہے کہ اسرائیل کے وزیر اعظم پر پولیس کی طرف سے الزام عاید کیا گیا ہے اس افشائ راز کے بعد تل ابیب میں بڑی تعداد میں صہیونیوں نے  وزیر اعظم پراعتراض کیا ، اور صہیونی حکومت کے سابقہ وزیر جنگ موشہ یعلون نے نیتن یاہو کے خلاف حکم صادر کیے جانے کی موافقت کا اعلان کیا ۔ قدس کی غاصب حکومت کی پولیس کی تحقیقات اس سلسلے میں ختم ہو چکی ہیں اور طے پایا ہے کہ اس کے نتائج جتنی جلدی ہو سکے اس ملک کی عدالت کے سامنے پیش کیے جائیں ۔

اسی سلسلے میں نیوزنور نے خبر دی ہے کہ بین الاقوامی مسائل کے ماہر حسن ھانی زادہ نے جوان نامہ نگاروں کے مرکز کے سیاسی گروہ کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو کے دوران یہ بیان کرتے ہوئے کہ نیتن یاہو کے مالی فساد کی تائیید صہیونی حکومت کو کافی مشکلات سے دوچار کرے گی ۔، کہا : ایسا دکھائی دیتا ہے کہ نیتن یاہو اور اس کی بیوی کے مالی فساد سے پردہ اٹھنا بالکل درست تھا اور یہ مسئلہ آیندہ ہفتوں میں اس کے اور اس کی قابینہ کے وزراء کے   باز خواست پر ختم ہو گا ۔

بین الاقوامی مسائل کے اس ماہر نے اپنی بات آگے بڑھائی: چونکہ وہ فلسطین کے خلاف بے رحمانہ فیصلے کرنے اور مخاصمت پر مبنی سیاست اپنے میں ایک موئثر شخص ہے ، اس کی بر طرفی سے لیکوڈ پارٹی سے وابستہ کچھ پارٹیاں مشکل سے دوچار ہوں گی نتیجے میں اس کی قابینہ پاش پاش ہو جائے گی ۔

ھانی زادہ نے تصریح کی : اگر ایسا ہوتا ہے تو اس حکومت کی دوسری پارٹیاں جیسے حزب کار ، آنے والے انتخابات میں زیادہ سیٹیں حاصل کرے گی ، اور یہ تبدیلی صہیونی حکومت کو اندرونی مشکلات سے دوچار کرے گی ۔

اس نے آخر میں اس حکومت کی ان فساد کے کیس سامنے آنے کے بعد آزادی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بیان کیا : اس حکومت کے کچھ افراد منجملہ اس حکومت کا  سابقہ صدر موشہ کاتساو کچھ عرصہ جیل میں رہنے کے بعد آزاد ہو گئے تھے اسی لیے یہ احتمال بھی پایا جاتا ہے کہ اس حکومت کے ڈھانچے میں نیتن یاہو کے حد سے زیادہ نفوذ کو دیکھتے ہوئے وہ تھوڑی ہی مدت کے لیے جیل میں رہے گا ۔

قابل ذکر ہے : کہ اس حکومت میں نیتن یاہو کی لابیوں کو دیکھتے ہوئے لگتا نہیں ہے کہ اس سے استیضاح کیا جائے گا لیکن دوسری جانب اگر اس کے کیس سے لا پرواہی برتی جاتی ہے تو تل ابیب میں اعتراضات کا ایک طوفان اٹھ کھڑا ہو گا ، اس بنا پر دونوں صورتوں میں ممکن ہے اب جب کہ یہ غاصب حکومت مشکلات کا سامنا کر رہی ہے تو ڈونالڈ ٹرامپ اپنی لفاظی کے ذریعے نہ صرف صہیونیوں کے درد کی کوئی دوا نہیں کر رہا ہے بلکہ وہ ان فتنوں کی آگ کو اور زیادہ ہوا دے رہا ہے ۔

نیتن یاہو کے استعفی کے بارے میں افواہیں اپنے اوج کو پہنچ چکی ہیں اور اگر ایسا ہوجاتا ہے تو اس حکومت کے پیکر پر کاری ضرب لگے گی اور یہ احتمال پایا جاتا ہے کہ داخلی مشکلات میں اضافے کے بعد غاصب صہیونی حکومت کے کمزور ہونے ، اور کمرنگ ہونے اور صفحہء تاریخ سے اس حکومت کے نابود ہونے کے حالات پیدا ہو جائیں گے ۔          

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر