تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 19جنوری/ہیومن رائٹس واچ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر نے انسانی حقوق کے حوالے سے امریکی صدر کے کرادار کو تباہ کن قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک ڈکٹیٹر ہیں اور سعودی عرب جیسی غیر جمہوری حکومت کی حمایت کرتے ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/لبنانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہم اسرائیلی حملوں کا جواب دینے کے لیے تیار ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے جوہری معاہدے کو خطرے میں ڈالنے سے عالمی امن کے لئے مشکل پیدا ہوگی۔

نیوزنور19جنوری/ایک عرب روز نامے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ کے دلدل میں بری طرح گرفتار ہوگيا ہے اور سعودی عرب کے لئے یمن پر مسلط کردہ جنگ سے نکلنے کا واحد راستہ انصار اللہ سے مذاکرات ہیں۔

نیوزنور19جنوری/اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے خطیب نے مسئلہ فلسطین اور یمن کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیائے اسلام کو فلسطین اور یمن کے مظلوم عوام کی حمایت کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرنا چاہیے اور حق بات کہنے سے گھبرانا نہیں چاہیے۔

  فهرست  
   
     
 
    
ڈیلی میل کی رپورٹ ؛
محمد بن سلمان کا ایران کے خلاف خطرناک منصوبہ

نیوزنور:سعودی عرب کے حکام کو پوری امید تھی کہ ایران کو قصور وار ٹھہرا کر علاقے میں بحران پیدا کریں گے اور ایران  کے اثر و نفوذ کو کم کر دیں گے ۔

استکباری دنیا صارفین۳۶۳۵ : // تفصیل

ڈیلی میل کی رپورٹ ؛

محمد بن سلمان کا ایران کے خلاف خطرناک منصوبہ

نیوزنور:سعودی عرب کے حکام کو پوری امید تھی کہ ایران کو قصور وار ٹھہرا کر علاقے میں بحران پیدا کریں گے اور ایران  کے اثر و نفوذ کو کم کر دیں گے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق ایک برطانوی مرکز "ڈیلی میل" نے ایک رپورٹ منتشر کر کے اس  عنوان کے تحت   کہ  ؛ سعودی حکام نے علاقے میں بحران ایجاد کرنے اور ایران کے نفوذ کو کم کرنے  کے لیے لبنان کے وزیر اعظم پر دباو ڈالا کہ وہ اپنے استعفی کا اعلان کرے ، آل سعود کے خطر ناک اقدامات کا جائزہ لیا ہے ۔

اس رپورٹ میں آیا ہے :

بعض جدید رپورٹوں کی بنیاد پر لبنان کے وزیر اعظم سعد الحریری پر اسی سال نومبر کے مہینے میں سعودی حکام کی طرف سے دباو ڈالا گیا کہ وہ اپنے استعفی کا اعلان کرے ۔

آخر کار سعد حریری نے بھی ۴ نومبر کو جس دن اس نے ریاض کا سفر کیا اسی دن اپنے استعفی کا اعلان کر دیا ۔

سعد الحریری کے نزدیکی حکام نے نیو یارک ٹایمز کو انٹرویو دیتے ہوئے بتایا کہ اس پر سعودی حکومت خاص کر سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کی جانب سے سخت دباو ڈالا گیا تھا ۔

محمد بن سلمان نے حریری پر دباو ڈالا  تھا اور اس کی تقریر کے متن کو  بھی کہ جس میں اس نے اپنی پوسٹ چھوڑنے کی وجہ سے ایران کی سرزنش کی تھی اس نے خود لکھا تھا ۔

رپورٹوں کی بنیاد پر سعودی عرب کے حکام نے یہاں تک کہ لبنان کے وزیر اعظم پر بھی نظر رکھی ہوئی ہے تا کہ اس کو اطمئنان ہو جائے کہ سعد الحریری اپنے استعفی پر پابند رہتا ہے یا نہیں ۔

رپورٹوں کی بنیاد پر ، سعودی عرب کے حکام کو پوری امید تھی کہ ایران کو قصور وار ٹھہرا کر علاقے میں بحران پیدا کریں گے اور ایران  کے اثر و نفوذ کو کم کر دیں گے ۔اور لبنان کی حزب اللہ کی طاقت کو کہ جس کو ایران کی حمایت حاصل ہے کم کر دیں گے  ۔

سعودی حکام کو یہ امید بھی تھی کہ اس اقدام سے علاقے میں ایک بحران جنم لے گا۔

لیکن آخر کار سعودی حکام کو لبنان کی اور مغربی حکومتوں کی طرف سے اعتراضات کا سامنا کرنا پڑا اور حریری کو اجازت دی گئی کہ وہ اپنے گھر واپس جائے اس نے بھی لبنان واپسی کے بعد اپنا استعفی واپس لے لیا ۔

یہ داستان اس وقت شروع ہوئی  کہ جب سعد الحریری نے ایک ایرانی عہدیدار کے ساتھ دوستانہ ملاقات کی تو اس کے ایک دن بعد سعودی عرب نے اس کو ریاض کے دورے کی دعوت دی تا کہ ایک دن وہ سعودی بادشاہ کے ساتھ بسر کرے ۔

حریری کو سعودی ولی عہد سے ملاقات  کے لیے دن کے اوایل میں ہی بلایا جاتا ہے اور وہیں پر سعودی حکام اس کے ساتھ برا سلوک کرتے ہیں اور اس کے تمام بارڈی گارڈز کو ایک کو چھوڑ کر اس سے الگ کر دیتے ہیں ، اس کا موبایل فون بھی چھین لیا جاتا ہے اور سعد الحریری اسی روز عصر کے وقت پہلے سے تیار شدہ استعفی کی عبارت کو ٹی وی پر پڑھ کر سنا دیتا ہے ۔

محمد بن سلمان اس سے پہلے بھی یمن میں سعودی عرب کی وحشیانہ جنگ میں سعودی عرب کا بھر پور کردار ادا کر چکا ہے اس سے بھی پہلے کہ جب اس کو ولی عہد بنایا گیا ۔ وہ جنگ کہ جو یمن میں ایک انسانی بحران کا باعث بنی ہے ۔

امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرامپ کے سعودی عرب کی حکومت کے ساتھ اور خاص کر اس ملک کے ولی عہد محمد بن سلمان  کے  ساتھ گہرے دوستانہ تعلقات رہے ہیں ۔

 

 

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر