تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 19جنوری/ہیومن رائٹس واچ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر نے انسانی حقوق کے حوالے سے امریکی صدر کے کرادار کو تباہ کن قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک ڈکٹیٹر ہیں اور سعودی عرب جیسی غیر جمہوری حکومت کی حمایت کرتے ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/لبنانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہم اسرائیلی حملوں کا جواب دینے کے لیے تیار ہیں۔

نیوز نور 19جنوری/اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے جوہری معاہدے کو خطرے میں ڈالنے سے عالمی امن کے لئے مشکل پیدا ہوگی۔

نیوزنور19جنوری/ایک عرب روز نامے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ کے دلدل میں بری طرح گرفتار ہوگيا ہے اور سعودی عرب کے لئے یمن پر مسلط کردہ جنگ سے نکلنے کا واحد راستہ انصار اللہ سے مذاکرات ہیں۔

نیوزنور19جنوری/اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں نماز جمعہ کے خطیب نے مسئلہ فلسطین اور یمن کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیائے اسلام کو فلسطین اور یمن کے مظلوم عوام کی حمایت کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرنا چاہیے اور حق بات کہنے سے گھبرانا نہیں چاہیے۔

  فهرست  
   
     
 
    
فرانسیسی خبر رساں ادارہ:
خونخوار گروہ داعش میں نوجوانوں کی شمولیت کابل کو خون ریز خطے میں تبدیل کر سکتی ہے

نیوزنور11جنوری/ایک فرانسیسی خبررساں ادارے نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہےکہ کابل میں 20 سے زائد داعش خراسان سیل کام کر رہے ہیں اگر چہ کابل میں داعش کی تعداد کے بارے میں کچھ بھی کہنا قبل ازوقت ہے لیکن سوشل میڈیا سمیت جامعات، اسکولوں اور مساجد سے نوجوان کی بھرتی کا عمل جاری ہے۔

استکباری دنیا صارفین۱۳۳ : // تفصیل

فرانسیسی خبر رساں ادارہ:

خونخوار گروہ داعش میں نوجوانوں کی شمولیت کابل کو  خون ریز خطے میں تبدیل کر سکتی ہے

نیوزنور11جنوری/ایک فرانسیسی خبررساں ادارے نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہےکہ کابل میں 20 سے زائد داعش خراسان سیل کام کر رہے ہیں اگر چہ کابل میں داعش کی تعداد کے بارے میں کچھ بھی کہنا قبل ازوقت ہے لیکن سوشل میڈیا سمیت جامعات، اسکولوں اور مساجد سے نوجوان کی بھرتی کا عمل جاری ہے۔

عالمی اردو خبررساں ادرے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق فرانسیسی خبر رساں ادارے’’ اے ایف پی‘‘نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہےکہ کابل میں 20 سے زائد داعش خراسان سیل کام کر رہے ہیں اگر چہ کابل میں داعش کی تعداد کے بارے میں کچھ بھی کہنا قبل ازوقت ہے لیکن سوشل میڈیا سمیت جامعات، اسکولوں اور مساجد سے نوجوان کی بھرتی کا عمل جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق عسکری ماہرین اور تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ کابل کے مشرقی حصے میں افغان متوسط گھرانوں کے نوجوانوں کی شدت پسند تنظیم داعش میں شمولیت سے تنظیم کو تقویت مل رہی ہے جو مسقتبل میں دارالحکومت کو خون ریز خطے میں بدل سکتی ہے۔

 فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق داعش نے طالبِ علموں، پروفیسروں، دکانداروں کے تعاون سے افغان فوج اور امریکی سکیورٹی فورسز کے خلاف افغانستان میں گزشتہ 18 مہینوں میں 20 خون ریز حملے کیے۔

رپورٹ میں  واشنگٹن میں ولسن سینٹر کے تجزیہ کار مائیکل کیوگلنگ کے اس بیان کہ افغانستان کے مشرقی حصہ میں موجود وہ محض ایک گروہ نہیں بلکہ نرسری ہے جہاں سے افغانستان کے دارالحکومت پر انتہائی پُرخطر حملے ہو سکتے ہیں اور اس بارے میں سنجیدگی سے سوچنا ہو گاکا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ افغانستان اور پاکستان میں مشرق وسطیٰ کا داعش خراسان گروپ (آئی ایس۔ کے) 2014ء میں اُبھر کے سامنے آیا جس میں پاکستان،  افغانستان اور وسطیٰ ایشیا کے ناراض یا متنفر طالبان اور دیگر انتہاپسندوں نے داعش میں شمولیت اختیار کر لی۔

رپورٹ کے مطابق داعش کے لیے نئی بھرتیوں کی کمی نہیں کیونکہ اس نے افغانستان میں انتہاپسندی پر مشتمل لوگوں کو اپنا گرویدہ بنا لیا ہے جو صدویوں سے خطے میں آباد ہیں اور جہاد کی چھتری کے نیچے جو نظریات پنپ رہے ہیں اور جس کی بھاگ دوڑ نوجوان نسل کے ہاتھ میں ہے وہ انتہائی خون ریزی پر مشتمل ہےاورداعش کے حمایتی اور ممبران کابل کی فضا میں اپنے خاندان کے ہمراہ رہائش پذیر ہیں جو ناصرف یونیورسٹی جاتے ہیں بلکہ آزادنہ گھومتے پھرتے ہیں۔

واضح رہے کہ افغان سکیورٹی ذرائع نے انکشاف کیا تھا کہ کابل میں 20 سے زائد داعش خراسان سیل کام کر رہے ہیں۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر