تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور20فروری/اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی برائے فلسطین نے فلسطینی علاقوں میں صہیونی ریاست کے اقدامات کو بین الاقوامی قوانین کی صریح خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے  کہا ہے کہ فلسطینی علاقوں پر اسرائیلی قبضہ غاصبانہ ہے۔

نیوزنور20فروری/اقوام متحدہ تعئنات اٹلی کے مندوب نے ایران جوہری معاہدے کے تحفظ پر زور دیتے ہوئے اسے عالم امن و سلامتی کے لئے مضبوط پلر قرار دیا ہے۔

نیوزنور20فروری/روس کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ شام میں اسلامی جمہوریہ ایران کی موجودگی قانون اور شامی حکومت کی باضابطہ درخواست کے مطابق ہے۔

نیوزنور20فروری/فلسطینی عسکری تنظیم اسلامی جہاد کے مرکزی رہنمانے امریکہ کی مشرق وسطیٰ کے حوالے سے سازشوں کو کڑی تنقید کا نشانہ بنا تے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ فلسطین سمیت پورے خطے کو ٹکڑوں میں تقسیم کرنا چاہتا ہے۔

نیوزنور20فروری/ایک فلسطینی تجزیہ نگار نےکہا ہے کہ حال ہی میں مسجد اقصیٰ پر دھاوا بولنے والے یہودی آباد کاروں نے ایک نہتے فلسطینی نوجوان پرمصطفیٰ المغربی کو قاتلانہ حملہ کرکے اسے شدید زخمی کردیا۔

  فهرست  
   
     
 
    
علاقائی امور کے ایرانی ماہر :
عفرین پر ترکی کی جارحیت ترک فوج اورکردوں کے درمیان بھرپور جنگ کا نقطہ آغاز ہے

نیوزنور08 فروری/علاقائی امور کے ایک ایرانی ماہر نے کہا ہے کہ شام کے عفرین شہر میں  انقرہ کی فوجی تعیناتی  کرد  اورترکش فورسز کے درمیان  بھرپور جنگ کی  شروعات ہے۔

استکباری دنیا صارفین۱۷۲ : // تفصیل

علاقائی امور کے ایرانی ماہر :

عفرین پر  ترکی کی جارحیت ترک فوج اورکردوں کے درمیان بھرپور جنگ  کا نقطہ آغاز ہے

نیوزنور08 فروری/علاقائی امور کے ایک ایرانی ماہر نے کہا ہے کہ شام کے عفرین شہر میں  انقرہ کی فوجی تعیناتی  کرد  اورترکش فورسز کے درمیان  بھرپور جنگ کی  شروعات ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق    مقامی میڈیا کےساتھ انٹرویو میں ’’علی گوام مگامی‘‘نے کہاکہ شام کے عفرین شہر میں  انقرہ کی فوجی تعیناتی  کرد  اورترکش فورسز کے درمیان  بھرپور جنگ کی  شروعات ہے۔

انہوں نے عفرین میں شاخ زیتون کے نام سے جاری  ترک فوجی آپریشن کے بارے میں کہاکہ اردغان نے دہشتگرد گروہ فری سیرین آرمی پر ایک لمبے وقت سے سرمایہ کاری کی ہے تاکہ وقت آنے پر  اسے ایک ہتھیار کے طورپر استعمال کیا جاسکے۔

 انہوں نے کہاکہ امریکہ اورترکی نے مشترکہ طورپر فرین سیرین آرمی کو  تربیت  فراہم کی ہے تاہم دونوں ممالک یہ پروجیکٹ اس گروہ کے   بعض اراکین کی طرف سے القاعدہ اورداعش میں  شمولیت اختیار کرنے کے بعد ناکام رہا تاہم  اب فری سیرین آرمی کی کمان اس وقت  ترکی کے ہاتھوں میں ہy  ۔

انہوں نے کہاکہ عفرین میں ترک فوج  کی جارحیت کے نتیجے میں کم از کم ایک ہزار پی کے کے کے اراکین ہلاک ہوئے ہیں جبکہ  چار سے پانچ لاکھ عام شہریوں کی زندگیاں  خطرے میں پڑ گئی ہیں۔

انہوں نے کہاکہ ممکنہ طورپر  ترک فوج کو  شامی افواج کی مزاحمت کا سامنا ہوگا کیونکہ ترکی کا ارادہ اب عفرین سے  شام کے جنوبی حصوں میں کاروائیاں شروع کرنے کا  ہے ۔

موصوف تجزیہ نگار نےمزیدعفرین کے بعد منبیج میں فوجی آپریشن شروع کرنے کے ترکی کے منصوبے پر  امریکہ کے انتباہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ اس اسٹریٹجک شہر پرکسی بھی طرح کی جارحیت کی اردغان حکومت کو بھاری قیمت چکانی پڑ سکتی ہے۔

واضح رہے کہ شمالی شام کے اسٹریٹجک شہر عفرین  پر ترکی کی افواج نے  20 جنوری کو آغاز کیاتھا جس کی دمشق حکومت نے مذمت کرتے ہوئے  اسے ملک کی ارضی سالمیت کی خلاف ورزی قراردیا   ۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر