تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور21اپریل/لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر اور مشہور تجزیہ کار نے اس بات پر زور دیا ہے کہ عربی ممالک کی اپنے پڑوسیوں کے ساتھ بات چیت بالخصوص اسلامی جمہوریہ ایران اور سعودی عرب کے درمیان مذاکرات وقت کی اہم ضرورت ہیں۔

نیوزنور21اپریل/شیخ الازهر مصر نے تاریخ اسلام کا جائزہ لیتے ہوئے کہا ہےکہ قدس اسلامی ـ عربی سرزمین ہے اور ہمیشہ اسلامی سرزمین  کے طور پرباقی رہے گی۔

نیوزنور21اپریل/سرزمین عراق کےایک معروف عالم دین نے کہا ہےکہ عرب لیگ میں فلسطین کے دفاع اور وہاں کے موجودہ حالات کو بدلنے کی توانائی موجود نہیں ہے ۔

نیوزنور21اپریل/حزب الله لبنان کی ایگزیٹو کونسل کے نائب صدر نے عرب ممالک کی فوج کو شام میں داخل ہونے کے حوالہ سے کئے جانے والے ہرقسم کے فیصلہ کے سلسلے میں منتبہ کرتے ہوئے اسے ایک قسم کا تجاوز قرار دیا ہے ۔

نیوزنور21اپریل/بحرین کی سکیورٹی فورسز نے اپنے تازہ ترین اقدام میں بحرین کے روحانی رہنماء کے گھر کے اطراف میں خاردار تاروں کی باڑ لگا دی ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
رائے الیوم کے مدیر اعلیٰ:
ہزاروں دنوں کی جارحیت کے باوجود یمن میں آل سعود کی فتح کا کوئی امکان نہیں ہے

نیوزنور10فروری/روز نامہ رائے الیوم کے مدیر اعلیٰ اور مشہور عرب تجزیہ نگار نے اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کہ یمن میں سعودی جنگی اتحادیوں کے حملوں میں اب تک 11 ہزار سے زائد عام شہری جانبحق ہوئے ہیں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انسانی حقوق گروہوں کی مذمت اور سعودی اتحاد کے جنگی جرائم کے تحقیق کے مطالبے کے باوجود یمن تنازعہ عالمی برادری کی عدم توجہ کا شکار ہے ۔

استکباری دنیا صارفین۲۳۰ : // تفصیل

رائے الیوم کے مدیر اعلیٰ:

ہزاروں دنوں کی جارحیت کے باوجود یمن میں آل سعود کی فتح  کا کوئی امکان نہیں ہے

نیوزنور10فروری/روز نامہ رائے الیوم کے مدیر اعلیٰ اور مشہور عرب تجزیہ نگار نے اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کہ یمن میں سعودی جنگی اتحادیوں کے حملوں میں اب تک 11 ہزار سے زائد عام شہری جانبحق ہوئے ہیں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انسانی حقوق گروہوں کی مذمت اور سعودی اتحاد کے جنگی جرائم کے تحقیق کے مطالبے کے باوجود یمن تنازعہ عالمی برادری کی عدم توجہ کا شکار ہے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق روسی الیوم کے ساتھ انٹریو میں ’’عبد الباری اطوان‘‘ نے اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کہ یمن میں سعودی جنگی اتحادیوں کے حملوں میں اب تک 11 ہزار سے زائد عام شہری جانبحق ہوئے ہیں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انسانی حقوق گروہوں کی مذمت اور سعودی اتحاد کے جنگی جرائم کے تحقیق کے مطالبے کے باوجود یمن تنازعہ عالمی برادری کی عدم توجہ کا شکار ہے ۔

انہوں نے کہا کہ یمن میں سعودی جنگی اتحاد کے جرائم پر اسلئے پردہ ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہے کیونکہ یمن دیگر خلیجی یا عرب ممالک کی طرح تیل ایکس پورٹر نہیں ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مغرب تبھی کسی مسٗلے یا تنازعے پر واویلا مچاتا ہے جب انکے مفادات متاثر ہوتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ  عالمی برادری کی طرف سے یمنی  بچوں اور خواتین کے قتل عام پر خاموشی شرمناک ہے ۔

موصوف تجزیہ نگار نے کہا کہ مارچ2015 ء سے سعودی جنگی اتحاد مفرور یمنی صدر منصور ہادی  کو اقتدار میں دوبارہ لانے کیلئے چوبیسوں گھنٹے انصاراللہ اور اسکے اتحادیوں پر بمباری جاری رکھے ہوئے ہیں تاہم ہزاروں دنوں کی جارحیت کے باوجود جنگ میں سعودی عرب کے کامیاب ہونے کے کسی بھی طرح کے امکانات نہیں ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب یمن کے دلدل میں بری طرح پھنس گیا ہے ۔

عبد الباری اطوان نے مزید کہا کہ یمن میں سعودی عرب کی مہم اپنے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام ہوئی اور اسے علاقائی و عالمی سطح پر ریاض حکومت کی تصویر بُری طرح متاثر ہوئی ہے ۔

واضح رہے کہ پچّیس مارچ دو ہزار پندرہ کو امریکہ کی حمایت اور سعودی عرب کی سرکردگی میں علاقے کے ملکوں کے اتحاد کے حملوں سے یمن میں فوجی مداخلت شروع ہوئی ہے جو بدستور جاری ہے یمن پر حملوں کے نتیجے میں اب تک دسیوں ہزار یمنی شہری منجملہ عورتیں اور بچے خاک و خون میں غلطاں ہو چکے ہیں۔

یہ ایسی حالت میں ہے کہ وہ ممالک، جو انسانی حقوق کا دم بھرتے ہیں، یمن میں غیر انسانی جرائم کے بارے میں انھوں نے مکمل خاموشی اختیار کر رکھی ہے اور ان ممالک کی جانب سے وحشیانہ جرائم پر کسی بھی قسم کے ردعمل کا اظہار نہیں کیا جا رہا ہے۔ 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر