تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 23 اپریل/ بحرین کے ایک ممتاز شیعہ عالم دین نے اس بات کےساتھ کہ آل خلیفہ  رژیم کےسامنے فلسطینی کاز کی کوئی اہمیت نہیں ہے کہا ہے کہ بحرینی عوام  اپنے تمام جائز مطالبات پورے ہونے تک اپنی تحریک جاری رکھیں گے۔

نیوزنور23اپریل/روسی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا ہے کہ مغربی ممالک شام کے شہر دوما میں کیمیائی حملے سے متعلق حقائق میں تحریف کر رہے ہیں۔

نیوزنور23اپریل/ٹوئٹر پرسعودی عرب کے  سرگرم  اور شاہی خاندان کے قریبی کارکن نےسعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں شاہی محل میں کل رات ہونے والی فائرنگ کی اصل حقیقت سامنے لاتے ہوئے کہا ہے کہ فائرنگ کے واقعہ میں آل سعود کے بعض اعلٰی شہزادے ملوث ہیں ڈرون کو گرانے کا واقعہ سعودی حکومت کا ڈرامہ ہے فائرنگ کے واقعہ کے بعد سعودی بادشاہ اور ولیعہد شاہی محل سے فرار ہوگئے تھے۔

نیوزنور23اپریل/اسلامی مقاومتی محورحزب اللہ لبنان کے سربراہ نے کہا ہےکہ اسرائيل کو لبنانیوں کے خلاف جارحیت سے روکنا ہمارا سب سے بڑا ہدف ہے ۔

نیوزنور23اپریل/مجلس وحدت مسلمین پاکستان سندھ کے سیکرٹری جنرل نے کہا  ہے کہ امام حسینؑ نے ۱۴ سو سال قبل ان دہشتگردوں کو شکست دی جو دین اسلام کا لبادہ اوڑھ کر دین کو اپنی پسند نا پسند میں ڈھال رہے تھے۔

  فهرست  
   
     
 
    
لبنانی صدر:
صدر بشار الاسد شام کے قانونی صدرہیں/ ناگفتہ بہہ صورتحال کی بنا پراس ملک میں حزب اللہ کی مداخلت ناگزیر بن گئی

 نیوزنور09اپریل/لبنان کے صدر نے کہا ہے کہ ہم شام کے صدر بشارالا سد کو شام کا قانونی صدر تسلیم کرتے ہیں شام کی جنگ  کہ جس میں 84 ممالک کے دہشتگرداس ملک کی ارضی سالمیت اور خود مختاری کو تار تار کر نے کیلئے سر گرم تھے سےحزب اللہ نے شام کی قانونی حکومت اور شامی عوام کا بھر پور دفاع کیا۔

مسلکی رواداری صارفین۱۴۵ : // تفصیل

لبنانی صدر:

صدر بشار الاسد شام کے قانونی صدرہیں/ ناگفتہ بہہ صورتحال کی بنا پراس ملک میں حزب اللہ کی مداخلت ناگزیر بن گئی

 نیوزنور09اپریل/لبنان کے صدر نے کہا ہے کہ ہم شام کے صدر بشارالا سد کو شام کا قانونی صدر تسلیم کرتے ہیں شام کی جنگ  کہ جس میں 84 ممالک کے دہشتگرداس ملک کی ارضی سالمیت اور خود مختاری کو تار تار کر نے کیلئے سر گرم تھے سےحزب اللہ نے شام کی قانونی حکومت اور شامی عوام کا بھر پور دفاع کیا۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق لبنان کے صدر’’ میشل عون ‘‘نے کہا  کہ ہم شام کے صدر بشار اسد کو شام کا قانونی صدر تسلیم کرتے ہیں اور جب تک وہ اقتدار میں ہیں وہی شام کے صدر ہیں۔

لبنانی صدر نے کہا کہ شام کا مسئلہ خود شام سےمتعلق ہے اور شامی حکومت اور شامی باغی اس مسئلہ کو مذاکرات کے ذریعہ  حل کرسکتے ہیں۔

شام کی جنگ میں حزب اللہ کی مداخلت کے بارے میں لبنانی صدر نے کہا کہ حزب اللہ نے شام کی درخواست پر اس وقت اس جنگ میں مداخلت کی جب یہ جنگ علاقائي جنگ میں تبدیل ہوگئی اور اس میں 84 ممالک کے دہشتگرد  شریک ہوگئے اور یورپ اور عرب ممالک سے ہزاروں دہشتگرد شام پہنچ گئے اور انہیں باقاعدہ تربیت دینا شروع کردی گئی اور شام کا تیل بعض ممالک نے دہشتگردوں سے خریدنا شروع کردیا ۔

انہوں نے کہا کہ اس صورتحال کے پیش نظر حزب اللہ کی شام کی جنگ میں مداخلت ناگزیر ہوگئی۔

انہوں نے کہا کہ شامی جنگ کے ختم ہونے اور اس ملک سے دہشتگردوں کی نابودی کےبعد حزب اللہ لبنان میں واپس آجائے گي۔

 میشل عون نے کہا کہ حزب اللہ کا میں دفاع نہیں کررہا بلکہ میں شام کی جنگ کی نوعیت بتا رہا ہوں کہ شامی حکومت کو اقتدار سے ہٹانے کے لئے 84 ملک میدان میں موجود تھے جبکہ حزب اللہ نے شام کی قانونی حکومت اور شامی عوام کا بھر پور دفاع کیا ہے اور اسلئے دہشتگردی کے خلاف حزب اللہ کے مثبت کردار کو ہم نظر انداز نہیں کرسکتے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر