تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوز نور 23 اپریل/ بحرین کے ایک ممتاز شیعہ عالم دین نے اس بات کےساتھ کہ آل خلیفہ  رژیم کےسامنے فلسطینی کاز کی کوئی اہمیت نہیں ہے کہا ہے کہ بحرینی عوام  اپنے تمام جائز مطالبات پورے ہونے تک اپنی تحریک جاری رکھیں گے۔

نیوزنور23اپریل/روسی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا ہے کہ مغربی ممالک شام کے شہر دوما میں کیمیائی حملے سے متعلق حقائق میں تحریف کر رہے ہیں۔

نیوزنور23اپریل/ٹوئٹر پرسعودی عرب کے  سرگرم  اور شاہی خاندان کے قریبی کارکن نےسعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں شاہی محل میں کل رات ہونے والی فائرنگ کی اصل حقیقت سامنے لاتے ہوئے کہا ہے کہ فائرنگ کے واقعہ میں آل سعود کے بعض اعلٰی شہزادے ملوث ہیں ڈرون کو گرانے کا واقعہ سعودی حکومت کا ڈرامہ ہے فائرنگ کے واقعہ کے بعد سعودی بادشاہ اور ولیعہد شاہی محل سے فرار ہوگئے تھے۔

نیوزنور23اپریل/اسلامی مقاومتی محورحزب اللہ لبنان کے سربراہ نے کہا ہےکہ اسرائيل کو لبنانیوں کے خلاف جارحیت سے روکنا ہمارا سب سے بڑا ہدف ہے ۔

نیوزنور23اپریل/مجلس وحدت مسلمین پاکستان سندھ کے سیکرٹری جنرل نے کہا  ہے کہ امام حسینؑ نے ۱۴ سو سال قبل ان دہشتگردوں کو شکست دی جو دین اسلام کا لبادہ اوڑھ کر دین کو اپنی پسند نا پسند میں ڈھال رہے تھے۔

  فهرست  
   
     
 
    
برطانوی صحافی وسیاسی تجزیہ کار:
شام کے خلاف امریکی منفی پروپیگنڈوں کا مقصد مشرق وسطیٰ کے پورے خطے پر اپنی سامراجیت کا سکہ بٹھانا ہے

نیوز نور12 اپریل /برطانیہ کے ایک صحافی وسیاسی تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ  امریکہ  مشرق وسطیٰ کے  پورے خطے پر  اپنی سامراجیت مسلط کرنے کیلئے  شامی حکومت پر کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا جھوٹا الزام لگا رہا ہے۔

استکباری دنیا صارفین۲۰۱ : // تفصیل

برطانوی صحافی وسیاسی تجزیہ کار:

شام کے خلاف امریکی منفی پروپیگنڈوں کا مقصد مشرق وسطیٰ کے پورے خطے پر  اپنی سامراجیت کا سکہ بٹھانا ہے

نیوز نور12 اپریل /برطانیہ کے ایک صحافی وسیاسی تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ  امریکہ  مشرق وسطیٰ کے  پورے خطے پر  اپنی سامراجیت مسلط کرنے کیلئے  شامی حکومت پر کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا جھوٹا الزام لگا رہا ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘کی رپورٹ کے مطابق برطانوی صحافی وتجزیہ کار’’مارکس پپاڈوپولس ‘‘نے  شام کی موجودہ کشیدہ صورتحال  اورشام کے خلاف  امریکہ اوراسکے اتحادیوں کی طرف سے  شام پر حملہ کرنے کی دھمکی   اور اس حملے کے جواب میں شامی حکومت روس ،ایران اوراس کے اتحادیوں کی طرف سے حملے کا بھرپور جواب دینے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ امریکہ  شام سمیت پورے مشرق وسطیٰ کے خطے پر اپنی سامراجیت مسلط کرنے کیلئے  ایسے بہانے تلاش رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ  اس بات کا کوئی ثبوت موجود نہیں ہے  کہ مشرقی غوطہ میں دمشق حکومت نے  کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا ہے اورامریکی حکام واسکے اتحادی اسطر ح کے افسانوں اورغیر حقیقی  پروپیگنڈوں کے ذریعے مشرق وسطیٰ پر  اپنا تسلط قائم کرنے کے فراق میں ہیں۔

انہوں نے کہاکہ امریکہ اوراسکے اتحادی  شامی حکومت پر  مشرقی غوطہ میں  کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا جھوٹا اورمن گھڑت الزام لگارہے ہیں جبکہ شامی حکومت اورروس نے   اوپی سی ڈبلیو کے انسپکٹروں کو اس کیمیائی حملے کی  تحقیقات کرنے کیلئے  مدعو کیا ہے جو کہ بین الاقوامی قانون کے عین مطابق ہے۔

موصوف صحافی نے کہاکہ  بدقسمتی کی بات یہ ہے کہ برطانیہ اورامریکہ  اپنے آپ کو دنیا کا جج تصور کرتے ہیں اوروہ اس وہم میں مبتلا ہیں کہ وہ کسی بھی خودمختار اور  جائز حکومت کے خلاف جارحیت کرسکتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ  اگرچہ امریکہ اوراسکے اتحادیوں نے  شام میں کیمیائی حملوں پر اسد حکومت کے خلاف  ایک بھی ثبوت فراہم نہیں کیا ہے  تاہم وہ  اس کے باوجود بھی شام پر حملہ کرنے کی دھمکی دے رہے ہیں لہذا اقوام عالم کو امریکی وبرطانوی سامراجی چالوں سے محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ  شامی حکومت کے خلاف امریکہ کے الزامات سے امریکہ وروس کے درمیان ایک جوہری جنگ چھڑنے کا اندیشہ ہےجسے نہ صرف مشرق وسطیٰ بلکہ پورے کرہ ارض  سے بنی نوع انسان کی نابودی یقینی ہے۔

برطانوی تجزیہ نگار نے اس حقیقت  کہ شام نے  اپنے کیمیائی ہتھیار 2014ء میں ہی  اقوام متحدہ کی کیمیکل ہتھیاروں کی روک تھام کیلئے تشکیل دی گئی تنظیم اوپی سی ڈبلیو کی قیادت میں  تباہ کردئے تھے۔

انہوں نے کہاکہ شام پر امریکی اورمغربی حمایت یافتہ جن دہشتگردوں نے 2011ء میں حملہ کیاتھا انہوں نے ہی امریکہ کو شامی حکومت کے خلاف اُکسانے کیلئے  کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا ہے لیکن مغربی حکومتیں  امریکہ  اوراسکے علاقائی اتحادیوں نے  ہمیشہ  دمشق حکومت پر ہی الزام عائد کئے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ  شام میں امریکی فوجی موجودگی کا مقصد مشرق وسطیٰ سے روس اورایران کے اثرورسوخ اورطاقت کو ختم کرنا ہے ۔

مارکس پپاڈوپولس نے مزیدکہاکہ شام کے خلاف امریکہ کی کسی بھی جارحیت کا روس کو بھرپور جواب دینا چاہئے  کیونکہ اگر ایسا نہیں ہوا تو دنیا بھر میں روس کی ساکھ کمزور ہوگی اورامریکہ کو مشرق وسطیٰ خاص کر جنگ زدہ ملک  شام میں  اپنی غیر قانونی موجودگی کو بڑھانے کا موقعہ فراہم ہوگا۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر