تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور21مئی/عراق میں الصادقون سیاسی تحریک کے ایک سرگرم کارکن نے اس بات پر انتباہ کیا ہے کہ ہمارے ملک میں اسلامی جمہوریہ ایران کی مداخلت کا دعوی امریکہ کی ایک سازش ہے۔

نیوزنور21مئی/روس سے تعلق رکھنے والے ایک عیسائی راہب نے کہا ہے کہ  دنیا کے تمام مذہبی رہنماؤں من جملہ ویٹیکن کے پاپ کو چاہئے کہ مقبوضہ فلسطین میں ہونے والے قتل عام پر آواز بلند کریں۔

نیوزنور21مئی/تحریک انصاف پاکستان کے مرکزی رہنما نے کہا ہے کہ فلسطینیوں پر اسرائیلی فوج کی اندھادھند فائرنگ سے ہزاروں افراد کی شہات عالمی برادری کی بے حسی کا منہ بولتا ثبوت اور امن کے علمبردار ممالک، این جی اوز کے منہ پرزوردار تھپڑ ہے۔

نیوزنور21مئی/حزب اللہ لبنان کی مرکزی کونسل کے رکن نے سعودی عرب کی امریکہ اور اسرائیل کے ساتھ ملکر اسلام اور مسلمانوں کے خلاف آشکارا اور پنہاں سازشوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب میں حزب اللہ لبنان کو لبنانی حکومت میں شامل ہونے سے روکنے کی ہمت نہیں ہے۔

نیوزنور21مئی/ملائیشیائی اسلامی تنظیم کی مشاورتی کونسل کے صدر نے کہا ہے کہ فلسطین میں نہتے شہریوں پر صہیونی حکومت کی جانب سے ڈھائے جانے والے مظالم کو روکنا ہو گا۔

  فهرست  
   
     
 
    
امریکی امن پسند سیاستدان :
جوہری معاہدے سے علحیٰدگی ٹرمپ کی شکست ہے

نیوزنور14مئی/ایک امریکی امن پسند سیاستدان نے کہا ہےکہ امریکی صدر نے خطی مسائل اور تنازعات کا خاتمہ کرنے کے بجائے اس خطے میں تنازعات کے شعلوں کو مزید بھڑکایاہے۔

استکباری دنیا صارفین۱۵۰ : // تفصیل

امریکی امن پسند سیاستدان :

جوہری معاہدے سے علحیٰدگی ٹرمپ کی شکست ہے

نیوزنور14مئی/ایک امریکی امن پسند سیاستدان نے کہا ہےکہ امریکی صدر نے خطی مسائل اور تنازعات کا خاتمہ کرنے کے بجائے اس خطے میں تنازعات کے شعلوں کو مزید بھڑکایاہے۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق خاتون امریکی امن پسند سیاستدان’’مدیا بنیامین‘‘ نے کہا  کہ جوہری معاہدے سے امریکہ کی علحیٰدگی سفارتکاری کی شکست نہیں بلکہ ٹرمپ کی شکست ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں مشرقی وسطی طویل اور بہت سے خطرناک تنازعات کا شکار ہے اور امریکہ کو سفارتکاری کے ذریعے ان مسائل کا حل کرنا ناگزیر ہے۔

امریکی خاتون نے کہا کہ امریکہ نے جوہری معاہدے سے یکطرفہ علحیٰدگی کے ساتھ دنیا پر یہ بات ثابت کردی ہے کہ وہ قابل اعتماد شراکت دار نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ ٹرمپ نے ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے صہیونی وزیراعظم نیٹن یاہو کہ جو خود سینکڑوں ایٹمی بموں کا مالک ہے کے بیانات کی پیروی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کے پرامن جوہری پروگرام کے خلاف صہیونی وزیر اعظم کے من گھرٹ بیانات ایسے وقت میں سامنے آ رہے ہیں کہ جب اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے اب تک 11 بار ایران جوہری معاہدے کی دیانتداری کی تصدیق کی ہے۔

خاتون امریکی عہدیدار نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے مذاکرات کے آغاز سے تمام پابندیوں کے خاتمہ چاہتا تھا لیکن امریکی اندرونی پالیسی کی تبدیلی کے ساتھ اس ملک نے جوہری معاہدے پر اپنے تمام وعدوں کی خلاف ورزی کی اور یہ اقدام دنیا میں امریکہ کی پوزیشن کی کمزوری کا باعث بن گیا۔

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے گزشتہ دنوں میں ایک بار پھر ایران اور جوہری معاہدے کے خلاف پرانے الزامات کو دہرا کر اس معاہدے سے امریکہ کی علحیٰد گی کا اعلان کردیا۔

ٹرمپ نے ایسے وقت میں جوہری معاہدے سے الگ ہونے کا فیصلہ کیا جب عالمی جوہری ادارہ 11 مرتبہ ایران کی شفاف کارکردگی کی تصدیق کرچکا ہے اور معاہدے کے دوسرے فریق بالخصوص یورپ اب بھی اسے بچانے کے لئے پُرعزم ہے۔

واضح  رہے کہ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے سے نکلنے کے فیصلے کے بعد ایرانی صدر نے جرمن چانسلر انجیلا مرکل اور ترک صدر رجب طیب اردوان کے ساتھ ٹیلی فونک رابطوں میں الگ الگ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یورپی ممالک کے پاس ایران جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ اور اپنے وعدے نبھانے سے متعلق وقت بہت کم ہے۔


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر