my title page contents
استکباری دنیا
شماره : 45486
: //
عبدالباری اتوان:
عرب حکومتیں امریکہ کی کٹھ پتلیاں ہیں

نیوزنور:عرب دنیا کےمشہور سیاسی تجزیہ نگار وروزنامہ رائے الیوم کے مدیراعلیٰ نے قطر اورامریکہ کے درمیان 20 ارب ڈالر کے حالیہ فوجی معاہدے کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہاہےکہ یہ معاہدہ متوقع طورپر دوحہ کو دہشتگردی کے حامی ممالک کی فہرست سے نکلنے اوراسے ایک بار پھر امریکی اتحادیوں میں شامل کرنے کاموجب بنےگا۔

عبدالباری اتوان:

عرب حکومتیں  امریکہ کی کٹھ پتلیاں ہیں

نیوزنور:عرب دنیا کےمشہور سیاسی تجزیہ نگار وروزنامہ رائے الیوم کے مدیراعلیٰ نے قطر اورامریکہ کے درمیان 20 ارب ڈالر کے حالیہ فوجی معاہدے کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہاہےکہ یہ معاہدہ متوقع طورپر دوحہ کو دہشتگردی کے حامی ممالک کی فہرست سے نکلنے اوراسے ایک بار پھر امریکی اتحادیوں میں شامل کرنے کاموجب بنےگا۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق اپنے ایک حالیہ مضمون میں ’’عبدالباری اتوان ‘‘نے قطر اورامریکہ کے درمیان 20 ارب ڈالر کے حالیہ فوجی معاہدے کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہاہےکہ یہ معاہدہ متوقع طورپر دوحہ کو دہشتگردی کے حامی ممالک کی فہرست سے نکلنے اوراسے ایک بار پھر امریکی اتحادیوں میں شامل کرنے کاموجب بنےگا۔

انہوں نے عرب حکومتوں کو امریکی کٹھ پتلیاں قراردیتے ہوئے کہاکہ امریکہ ان حکومتوں کا استحصال کررہاہے۔

انہوں  نے کہاکہ یقینی طورپر خلیجی ریاستوں کے دوران بحران کواب حل کرنے کیلئے سخت اقدامات کئے جائیں گے کیونکہ  فوجی تصادم کا خطرہ اب دھندلا پڑگیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ قطر کا محاصرہ ختم کرنے اوراسے اپنی ہوائی حدوداستعمال کرنے دینے کے قلیل امکانات ہیں۔

انہوں نے کہاکہ امریکی صدر نے علاقے میں آگ لگاکر خلیجی ممالک کے درمیان بحران کو پیدا کرنے میں کلیدی کردارادا کیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ ٹرمپ نے سعودی عرب ،متحدہ عرب امارات ،بحرین اورمصر کے اتحاد کو قطر کے خلاف کھڑا کیا تاکہ اس پر دباؤ بنا کر اسے امریکی ہتھیار خریدنے پر مجبور کیاجاسکےگا۔

انہوں نے کہاکہ ابھی یہ واضح نہیں کہ مذکورہ اتحاد واشنگٹن کے حقیقی ارادے سےواقف تھایا نہیں ۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اورقطر کے درمیان ہونے والے حالیہ فوجی معاہدے کے تحت واشنگٹن 72 بوئنگ طیارے فراہم کرےگا جس کے نتیجے میں امریکہ کی 42 ریاستوں میں 60 ہزار ملازمین کے موقعے پیدا ہونگے ۔

انہوں نے کہاکہ امریکی حکومت شطرنج کے پیادوں کو بڑی ہنرمندی اورصحیح سمت میں آگے بڑھا رہی ہے۔

اتوان نےکہاکہ  امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس اورقطری وزیر دفاع خالد بن محمد کے درمیان معاہدے پر دستخط کے  چند گھنٹوں بعد ہی امریکہ نے دوحہ کی طرف اپنے   جنگی بیڑا رونہ کیا جسے ظاہر ہوتا ہےکہ واشنگٹن حکومت دوحہ کو ترک کرنے والی نہیں ہے ۔

انہوں  نے کہاکہ یہ امریکہ کا ایسا شیطانی کھیل ہے جس کا خاکہ وائٹ ہاوس  کی حالیہ کانفرنس میں کھینچا گیا اورمختلف کرداروں کی تفویض کی گئی اس کھیل کا اصلی ہیرو امریکہ ہے ۔

©newsnoor.com2012 . all rights reserved
خبریں،مراسلات،مقالات،مکالمے،مسلکی رواداری،اتحاد،تقریب،دینی رواداری،اسلامی بیداری،عالم استکبار،ادھر ادھر