my title page contents
دینی و مذھبی رواداری
شماره : 45500
: //
سابق امریکی جنرل :
داعش کے خلاف جنگ میں پاسداران انقلاب کے ساتھ تعاون کیا جائے

نیوز نور : امریکی وزیر دفاع کے سابق معاون خصوصی جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے میزائل پروگرام عالمی امن و سلامتی کے لئے خطرہ نہیں  اور داعش اور انتہاپسندوں کے خلاف جنگ میں سپاہ پاسداران اسلامی انقلاب کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے۔

سابق امریکی جنرل :

داعش کے خلاف جنگ میں پاسداران انقلاب کے ساتھ تعاون کیا جائے

نیوز نور : امریکی وزیر دفاع کے سابق معاون خصوصی جنرل نے کہا ہے کہ ایران کے میزائل پروگرام عالمی امن و سلامتی کے لئے خطرہ نہیں  اور داعش اور انتہاپسندوں کے خلاف جنگ میں سپاہ پاسداران اسلامی انقلاب کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے۔

عالمی اردو خبر رساں ادارے ’’نیوز نور‘‘ کی رپورٹ کے مطابق امریکی وزیر دفاع کے سابق معاون خصوصی جنرل جو واشنگٹن میں قائم آرمز کنٹرول اور غیرافزودگی کے ریسرچ سینٹر کے سربراہ’’رابرٹ جے گارڈ‘‘نے ارنا کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بدنام زمانہ تکفیری دہشتگرد گروہ داعش کے خلاف جنگ میں پاسداران انقلاب کے ساتھ تعاون کیا جائے۔

انہوں نے ایران کے میزائل پروگرام کے خلاف امریکی سینیٹ کے حالیہ پابندی کے بل پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ میری نظر میں ایران کے میزائل پروگرام سے کسی کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ داعش جو امریکہ کا بھی دشمن ہے  اور اس ملک کی سلامتی کیلئے بہت بڑا خطرہ ہے کے خلاف ایرانی سپاہ پاسداران لڑ رہی ہے باوجود اس کے کہ ایران اور امریکہ کے درمیان اختلافات ہیں مگر ہمارے درمیان مشترکہ مفادات ہیں جن پر وقت کے مطابق عمل کیا جانا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی سیاسی حلقوں کی جانب سے سپاہ پاسداران اسلامی انقلاب کو دہشتگرد قرار دینا نہایت غیرتعمیری اقدام ثابت ہوگا۔

امریکی جنرل نے علاقائی مسائل بالخصوص قطری بحران، شام اور افغانستان کی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکی حکومت قطری بحران کے فوری حل کی خواہاں ہے۔

انہوں نے شام اور افغانستان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ان ممالک میں موجود بحرانوں کو پُرامن اور سیاسی مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہئے۔

سابق امریکی جنرل نے امریکی پالیسیوں میں اسرائیلی لابی کے کردار کی طرف  اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایپک ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں سب سے زیادہ بااثر لابی گروپوں میں سے ایک ہے اور اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف پابندیوں کی تجدید کے لئے بھر پور کوشش کررہے ہیں۔

رابرٹ جے گارڈ نے مزید  کہا کہ ہمیں  سفارتکاری تعلقات کو جاری رکھ کر  مشترکہ مفادات کے تحت باہمی تعاون اور مسائل کے حل کے لئے واحد طریقے پر اتفاق کرنا چاہئے۔

©newsnoor.com2012 . all rights reserved
خبریں،مراسلات،مقالات،مکالمے،مسلکی رواداری،اتحاد،تقریب،دینی رواداری،اسلامی بیداری،عالم استکبار،ادھر ادھر