my title page contents
استکباری دنیا
شماره : 47288
: //
اسٹیفن لینڈمین:
امریکی انتظامیہ افغانستان پر مستقل قبضے کی خواہاں ہے

نیوزنور: ایک امریکی مصنف نے کہاہےکہ ٹرمپ انتظامیہ نے افغانستان پر اپنی  بمباری مہم کو مزیدتیز کردیا ہے اورایسی منصوبہ بندی تشکیل دی ہے جس کے تحت امریکہ اس غریب ملک کو مستقل طورپر کنٹرول میں لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔

اسٹیفن لینڈمین:

امریکی انتظامیہ افغانستان پر مستقل قبضے کی خواہاں ہے

نیوزنور: ایک امریکی مصنف نے کہاہےکہ ٹرمپ انتظامیہ نے افغانستان پر اپنی  بمباری مہم کو مزیدتیز کردیا ہے اورایسی منصوبہ بندی تشکیل دی ہے جس کے تحت امریکہ اس غریب ملک کو مستقل طورپر کنٹرول میں لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی ذرائع ابلاغ کےساتھ انٹرویو میں ’’اسٹیفن لینڈمین‘‘نےاس رپورٹ کہ ستمبر کے ماہ میں امریکہ نے  افغانستان پر مجموعی طورپر 751 بم گرائے جو گذشتہ  سات سال میں سب سے زیادہ ہے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ ٹرمپ انتظامیہ نے افغانستان پر اپنی  بمباری مہم کو مزیدتیز کردیا ہے اورایسی منصوبہ بندی تشکیل دی ہے جس کے تحت امریکہ اس غریب ملک کو مستقل طورپر کنٹرول میں لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ  ٹرمپ انتظامیہ افغانستان کے حوالے سے امریکی پالیسیاں تبدیل کررہے ہیں اورامریکی  فوجیوں کو افغانستان کی صورتحال کو کنٹرول کرنے کیلئے  زیادہ سے زیاد ہ اختیارات دیے جارہے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ گذشتہ سالوں کے مقابلے اس وقت افغانستان میں ہوائی بمباری میں تیزی آئی ہے ۔

انہوں نے کہاکہ امریکہ ڈیڑھ دہائی سے افغانستان پر بم گرارہا ہے تاہم اس ملک میں جاری تنازعے کا کوئی حل دکھائی نہیں دےرہا۔

لینڈ مین نے کہاکہ  افغانستان میں امریکی فوجیوں کی موجودگی کا انسداد دہشتگردی مہم سے کوئی لینا دینا نہیں ہے بلکہ اس کا مقصد افغانستان پر قبضہ جمانا ہے تاکہ  اس ملک میں اپنی فوجی بیس قائم کرکے روس اورچین کو گھیرا جاسکے۔

انہوں نے کہاکہ امریکہ کی تمام  جنگوں کی وجہ طاقت ،تسلط اور کنٹرول  اورروس ،چین ،ایران جیسے آزاد ممالک کے اثرورسوخ کو محدود کرنا ہے۔

©newsnoor.com2012 . all rights reserved
خبریں،مراسلات،مقالات،مکالمے،مسلکی رواداری،اتحاد،تقریب،دینی رواداری،اسلامی بیداری،عالم استکبار،ادھر ادھر