my title page contents
استکباری دنیا
شماره : 50151
: //
ایرانی تجزیہ کار:
شام مغرب کی طرف سے مسلط کردہ تکفیری دہشتگردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر کھڑا ہے

نیوز نور16 اپریل/ اسلامی جمہوریہ ایران کے ایک سیاسی تجزیہ کار نے عرب جمہوریہ شام پر امریکہ ،برطانیہ اورفرانس کے حالیہ میزائل حملوں کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیتےہوئےکہا ہے کہ اسطرح کی جارحیت علاقے میں دہشتگرد گروہوں کو مغرب کی طرف سے براہ راست حمایت کی واضح دلیل ہے۔

ایرانی تجزیہ کار:

شام  مغرب کی طرف سے مسلط کردہ  تکفیری دہشتگردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر کھڑا ہے 

نیوز نور16 اپریل/ اسلامی جمہوریہ ایران کے ایک سیاسی تجزیہ کار نے عرب جمہوریہ شام پر امریکہ ،برطانیہ اورفرانس کے حالیہ میزائل حملوں کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیتےہوئےکہا ہے کہ اسطرح کی جارحیت علاقے میں دہشتگرد گروہوں کو مغرب کی طرف سے براہ راست حمایت کی واضح دلیل ہے۔

عالمی اردوخبررساں ادارے’’نیوز نور‘‘ کی رپورٹ کے مطابق مقامی میڈیا کےساتھ انٹرویو میں ’’صباح زنگانہ‘‘نے عرب جمہوریہ شام پر امریکہ ،برطانیہ اورفرانس کے حالیہ میزائل حملوں کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیتےہوئےکہا کہ اسطرح کی جارحیت علاقے میں دہشتگرد گروہوں کو مغرب کی طرف سے براہ راست حمایت کی واضح دلیل ہے۔

انہوں نے ان حملوں کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ مغرب نے امریکہ کی قیادت میں ان حملوں کے ذریعے شام کے داخلی معاملات میں براہ راست مداخلت کرنے کی کوشش کی ہے۔

انہوں نے کہاکہ عرب جمہوریہ شام  جو مغرب کی طرف سے مسلط کردہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر کھڑا ہے  ایک آزاد وخودمختار ریاست  کے خلاف جارحیت کرنے پر بین الاقوامی  اداروں میں امریکہ پر مقدمہ عائد کرسکتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ امریکہ ،برطانیہ اورفرانس  شامی عوام پر اپنی رائے مسلط کرنا چاہتے ہیں جبکہ  اپنے مستقبل کافیصلہ کرنےکا حق صرف اورصرف شامی عوام کو ہی ہے۔

انہوں نےاس سوال کے جواب میں کہ کیا امریکی قیادت میں حالیہ حملے سے شام کی زمینی صورتحال تبدیل ہوگی کہاکہ  شامی حکومت  نے ایک اورتجربہ حاصل کیا ہےا وریقینی طورپر  اپنی عوام کو تحفظ فراہم  کرنے کیلئے دمشق حکومت مزید طاقت کےساتھ اُبھرےگی۔

موصوف تجزیہ نگار نے شام پر امریکی جارحیت سے متعلق روس کےموقف کے بارے میں انہوں نے کہاکہ  روس دمشق حکومت کا اہم اتحادی ہے اورروسی حکام کو امریکہ کے خلاف سخت موقف لینے کی ضرورت ہے کیونکہ ان حملوں کو دراصل روس کے مفادات پر حملہ قراردیا جاسکتا ہے۔

©newsnoor.com2012 . all rights reserved
خبریں،مراسلات،مقالات،مکالمے،مسلکی رواداری،اتحاد،تقریب،دینی رواداری،اسلامی بیداری،عالم استکبار،ادھر ادھر