نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor
موضوعات
تازہ ترین تبصرے
  • ۱۱ ژانویه ۱۹، ۱۴:۱۱ - گروه مالی آموزشی برادران فرازی
    خیلی جالب بود

بے پردگی سماج کی نابودی کا سبب ہے

پنجشنبه, ۳ ژانویه ۲۰۱۹، ۱۲:۵۸ ب.ظ


آیت الله مکارم شیرازی:

 نیوزنور03جنوری/ بزرگ ایرانی مرجع تقلید نے فرمایا ہے کہ  دینی منابع اور ملکی آئین میں امر بالمعروف اور نهی عن المنکر کا خاص مقام ہونے کے باوجود افسوس یہ دو الہٰی فریضے فراموشی کی نذر ہورہے ہیں۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق ایرانی بزرگ مرجع تقلید ’’آیت الله ناصر مکارم شیرازی ‘‘نے اپنے درس خارج فقہ کے آغاز پر جو مسجد آعظم میں سیکڑوں طلاب و افاضل حوزہ علمیہ قم کی شرکت میں منعقد ہواحضرت رسول(ص) سے منقول حدیث شریف  لَیْسَ مِنّا مَنْ لَمْ یُوَقِّرِ الْکَبیرَ وَلَمْ یَرْحَم الصَّغیرَ وَلَمْ یَأمُرْ بِالْمَعْرُوفِ وَلَمْ یَنْهَ عَنِ الْمُنْکَرِکی تشریح کرتے ہوئے فرمایا کہ حضرت نے اس حدیث میں فرمایا کہ چار قسم کے لوگ مجھ میں سے نہیں ہیں  ایک جو اپنے سے بڑے کا احترام نہ کرے ، دوسرے وہ جو اپنے چھوٹے پر مہربان نہ ہو ، تیسرے وہ جو امر بالمعروف نہ کریں اور چوتھے وہ جو نهی عن المنکر انجام نہ دے ۔

آپ نے فرمایا کہ  بزرگوں کا احترام فقط ظاہری احترام نہیں ہے بلکہ ان کی فکروں ، ان کے تجربات اور ان کی باتوں کا احترام ہے  بعض ضدی مزاج جوان ہرگز بزرگوں کا احترام نہیں کرتے مگر جب مشکلات سے روبرو ہوتے ہیں تو منتیں اور نالہ و فریاد کرتے ہیں ۔

موصوف مرجع تقلید نے فرمایا کہ اگر کوئی بزرگوں کا احترام نہ کرے تو جب وہ خود بزرگ ہوگا تو اس کے چھوٹے اس کا احترام نہیں کریں گے ۔

حضرت آیت الله مکارم شیرازی نے امر بالمعروف اور نهی عن المنکر کی اہمیت کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ  دیگر ادیان و مذاہب کے مقابل دین اسلام کا ایک اہم ترین امتیاز اور خصوصیت اس دین میں امر بالمعروف اور نهی عن المنکر کا ہونا ہے ۔

آپ نے فرمایا کہ دینی منابع یعنی قران و حدیث اور ملکی آئین کی تاکید کے باوجود امر بالمعروف اور نهی عن المنکر بے حیثیت ہے اورافسوس یہ دو الھی فریضہ فراموشی کی نذر ہو رہا ہے ۔

آپ نے فرمایا کہ مولائے کائنات علی(ع) نے تاکید کی کہ اگر یہ دو فریضے ترک کردیئے گئے تو اشرار تم پر مسلط ہوجائیں گے ۔

حضرت آیت الله مکارم شیرازی نے اس بات کی تاکید کرتے ہوئے کہ ہرگز اس بات کا موقع نہ دیں کہ معاشرے میں یہ دو الہٰی فریضے کم رنگ ہونے پائے فرمایاکہ بعض افراد بد تعبیر کرتے ہیں  امر بالمعروف اور نهی عن المنکر کو خشونت کا مصداق بتاتے ہیں جبکہ امر بالمعروف اور نهی عن المنکر کے خاص شرائط ہیں اور احترام و محبت کے ہمراہ ہے ۔

آپ نے فرمایا  کہ بد حجابی اور بے پردگی فقط شرعی وظیفہ ہی نہیں ہے بلکہ اس کا برا نتیجہ ہے  جیسے جوانوں کی گمراہی ، خانوادے اور گھرانے کا بکھرنا ، غیر شرعی تعلقات کا قائم ہونا اور جنایتوں کا انجام دینا وغیرہ وغیرہ ۔

آپ نے فرمایا کہ اگاہ منابع اس بات کو تحریر کرتے ہیں کہ یورپ کے ایک ملک کی دس فیصد آبادی حرامی بچے ہیں کہ جو ان کی تشویش کا سبب بن گئی ہے اور وہ اخلاقی مسائل کی وجہ سے نہیں ہے بلکہ ان حرامی بچوں کے ذریعہ سماج کو لاحق خطرات کی وجہ سے ہے ۔

حضرت آیت الله مکارم شیرازی نے تاکید کرتے ہوئے فرمایا کہ ملک کے حکمراں حجاب اور پردے کو ایک امنیتی، سماجی اور حقائق پر استوار مسئلہ کے عنوان سے دیکھیں  فقط شرعی حوالہ سے نہ دیکھیں ۔

نظرات  (۰)

ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں لکھا گیا ہے
ارسال نظر آزاد است، اما اگر قبلا در بیان ثبت نام کرده اید می توانید ابتدا وارد شوید.
شما میتوانید از این تگهای html استفاده کنید:
<b> یا <strong>، <em> یا <i>، <u>، <strike> یا <s>، <sup>، <sub>، <blockquote>، <code>، <pre>، <hr>، <br>، <p>، <a href="" title="">، <span style="">، <div align="">
تجدید کد امنیتی