نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor
موضوعات
تازہ ترین تبصرے
  • ۱۷ آگوست ۱۸، ۱۱:۳۵ - موزیلاگ ..
    (:


مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ :

 نیوزنور04جون/مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ نے کہا ہے کہ امام خمینی ؒ نے مسئلہ فلسطین کو دفن ہونے سے بچا لیا ہے ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ ’’حجت الاسلام ناصر عباس جعفری‘‘ نے کہا کہ قرآنی حکم ہے کہ یہود و نصاریٰ ہمارے دوست نہیں ہو سکتےکیونکہ ظلم ان کا شیوہ ہےاور ان کا ساتھ دینے والا بھی ظالم ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں یہود و نصاریٰ پر اعتماد نہیں کرناچاہیےاگر چہ چند مسلمان ریاستوں نے غاصب ریاست کے ساتھ تعلقات قایم کئے ہوئے ہیں جو انتہائی افسوسناک امر ہے بعض ممالک میں اسرائیلی سفارتخانے موجود ہیں۔

موصوف سربراہ نے کہا کہ شام ، یمن ، عراق اور افغانستان کی جنگیں گریٹر مڈل ایسٹ بنانے کی جنگ ہے جس کے درپردہ امریکہ اور اسرائیل کی سازش کارفرما ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیل و فرات کی باتیں کرنے والا اسرائیل آج دیواریں کھڑی کرکے دفاع پر مجبور ہےکیونکہ حزب اللہ کی اسرائیل مخالف جنگوں کے بعد غاصب صہیونی ریاست کی ہیبت قصہ پارینہ بن چکی ہےاور یہ ہمت اور حوصلہ امام خمینیؒ نے اُمت مسلمہ کو فراہم کیاکیونکہ اُمت مسلمہ سے ماہ رمضان کے آخری جمعہ کو یوم القدس کے نام پر منانے کا فرمان امام خمینیؒ کا ہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر عوام اور رائے عامہ نہ ہوتی تو بہت سے مسلمان ممالک اسرائیل سے تعلقات قائم کرچکے ہوتے یہی رائے عامہ مسئلہ فلسطین کو دفن ہونے سے بچا رہی ہےاورآج یہ مسئلہ انسانیت کا اہم مسئلہ بن چکا ہے۔

انہوں نے کہا  کہ فلسطین میں ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں عورتوں ، بچوں اور بوڑھوں تک کو معاف نہیں کیا جارہا ہے اور بکھرے ہوئے مسلمان صرف اپنے گھروں میں بیٹھ کر نوحہ کناں ہیں اور دوقومی نظریہ کی بات کرنے والے فلسطین کے ساتھ مخلص نہیں ہیں۔

حجت الاسلام ناصر عباس جعفری نے مزید کہا کہ  آج مسلم حکمران اپنے چند مفادات کی خاطر صہیونیوں کے مقابل گھٹنے ٹیکے ہوئے ہیں جبکہ  آج ضرورت اس امر کی ہے کہ مسلمان ایک ہو جائیں اور ایک طاقت بن کو ظالم صہیونیوں کا مقابلہ کریں۔

نظرات  (۰)

ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں لکھا گیا ہے
ارسال نظر آزاد است، اما اگر قبلا در بیان ثبت نام کرده اید می توانید ابتدا وارد شوید.
شما میتوانید از این تگهای html استفاده کنید:
<b> یا <strong>، <em> یا <i>، <u>، <strike> یا <s>، <sup>، <sub>، <blockquote>، <code>، <pre>، <hr>، <br>، <p>، <a href="" title="">، <span style="">، <div align="">
تجدید کد امنیتی