نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor

نیوزنور بین الاقوامی تحلیلی اردو خبررساں ادارہ

نیوزنور newsnoor
موضوعات
آرشیو
تازہ ترین تبصرے
  • ۱۷ آگوست ۱۸، ۱۱:۳۵ - موزیلاگ ..
    (:
  • ۸ جولای ۱۸، ۱۴:۲۰ - Siamak Bagheri
    :)


اقوام متحدہ کے ہائی کمیشنر برائے انسانی حقوق:

 نیوزنور25جولائی/اقوام متحدہ کے ہائی کمیشنر برائے انسانی حقوق نے فلسطین کے علاقے غزہ پٹی کی موجودہ صورت حال کو انتہائی تشویش ناک قرار دیتے ہوئے اسرائیل سے غزہ پر عاید کردہ معاشی محاصرہ ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

عالمی اردو خبررساں ادارے’’نیوزنور‘‘کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے ہائی کمیشنر برائے انسانی حقوق’’ زیدبن رعد الحسین‘‘ نے اقوام متحدہ کے اجلاس سے خطاب میں کہا کہ غزہ پٹی پراسرائیل کی طرف سے عاید کردہ پابندیوں کے باعث امن وامان کی صورت حال کافی تشویش ناک ہےاور فلسطینی اراضی اور غزہ پٹی کی سرحد پر کشیدگی پورے خطے کےامن کو تباہ کرسکتی ہے۔

اقوام متحدہ کی فلسطینی امور کی نگران کمیٹی کے اجلاس سے خطاب میں شہزادہ رعد الحسین نے کہا کہ فلسطینی قوم کے حقوق ناقابل تصرف ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ حالیہ دو ہفتے غزہ میں سنہ 2014ء کی جنگ سے زیادہ پرتشدد گذرے جن میں دونوں طرف سے فریقین نے ایک دوسرے پر فائرنگ کی۔

انہوں نے غزہ پٹی میں فلسطینی مقاومت کاروں اور اسرائیل دونوں پر زور دیا کہ وہ کشیدگی سے بچنے کے لیے تشدد سے گریز کریں۔

اقوام متحدہ کے مندوب برائے انسانی حقوق نے کہا کہ غزہ پٹی کی سرحد پر جاری احتجاج کا مؤثر حل غزہ کے عوام کو درپیش معاشی مشکلات  کا خاتمہ اور گیارہ سال سے غزہ پر عاید اسرائیلی پابندیوں کے اُٹھانے میں مضمر ہے۔

 انہوں نے کہا کہ مصر کی طرف سے غزہ پٹی پر پابندیوں نے حالات کو مزید خراب کیا ہے۔

یو این مندوب نے کہا کہ فلسطینی پناہ گزینوں کی ریلیف ایجنسی اونروا کی مالی امداد کم ہونے کے نتیجے میں غزہ میں معاشی بحران مزید شدت اختیار کرے گا۔

انہوں نے اسرائیلی کنیسٹ سے یہودی قومیت کے متنازع قانون کی منظوری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے متنازع قوانین کے نتیجے میں تشدد میں کمی کے بجائے مزید اضافہ ہوگیا۔

واضح رہے کہ سنہ 2018ء کے اوائل سے القدس اور غرب اردن میں یہودی آبادکاروں کے پرتشدد واقعات میں گذشتہ تین سال میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے یہودی قومیت کے قانون کے نتیجے میں فلسطینیوں کے خلاف انتقامی کارروائیوں میں مزید شدت آنے کا اندیشہ ہے۔

نظرات  (۰)

ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں لکھا گیا ہے
ارسال نظر آزاد است، اما اگر قبلا در بیان ثبت نام کرده اید می توانید ابتدا وارد شوید.
شما میتوانید از این تگهای html استفاده کنید:
<b> یا <strong>، <em> یا <i>، <u>، <strike> یا <s>، <sup>، <sub>، <blockquote>، <code>، <pre>، <hr>، <br>، <p>، <a href="" title="">، <span style="">، <div align="">
تجدید کد امنیتی